شوپیان کے10 دیہات,6گھنٹوں تک آپریشن کیا گیا

شوپیان// فورسز نے جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان کے قریب آدھ درجن دیہات اور ان سے ملحقہ وسیع وعریض باغات و جنگلاتی علاقوں میں بڑے پیمانے پر تلاشی کارروائی کی۔ یہ تلاشی آپریشن جنگجوؤں کو ڈھونڈ نکالنے کے لئے شروع کیا گیا ۔پیر کی علی الصبح شروع کردہ سرچ آپریشن جاری ہے۔فورسز کوشوپیان کے بعض دیہات بشمول چکورہ،دانگام،وانگام،رانی پورہ، زئی پورہ،شاہ پورہ،خاسی پورہ،ہانگل چک، منگا چک،ٹکی پورہ اورماتری بگ، جنگجوؤں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملی ۔ اس اطلاع کی بناء پر فوج کی 62 راشٹریہ رائفلز، جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ اور سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف)نے پیر کی علی الصبح ان دیہات اور ان سے ملحقہ باغات میں تلاشی آپریشن شروع کیا‘۔ ضلع شوپیان کے دس دیہات میں یہ سرچ آپریشن شوپیان روڑ پر واقع ڈسٹرکٹ پولیس لائنز پلوامہ پر فدائین حملے کے دو روز بعد شروع کیا گیا۔تاہم 6گھنٹے کے بعد آپریشن ختم کیا گیا۔البتہ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو فون پر بتایا کہ تلاشی کارروائی کے دوران لوگوں کیساتھ زیادتیاں کیں گئیں۔کارروائی کے دوران دیواروں پر لکھے گئے آزادی کے نعرے مٹائے گئے اور جگہ جگہ مطلوب جنگجوئوں کی تصاویر کیساتھ پوسٹر چسپاں کئے گئے۔ برہان مظفر وانی کی ہلاکت کے بعد شوپیان میں انجام دیا جانے والا تیسرا بڑا آپریشن ہے۔ اس سے قبل رواں برس کے 4 مئی اور رواں ماہ کی 19 تاریخ کو فورسز نے اس ضلع میں آپریشن انجام دیا تھا۔