سرینگر اورجموں کی فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹریاں

 سرینگر//جموں اور سری نگر کی فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹریز نے ملک کی معتبر اور نامور اداروں کے ایلیٹ کلب کی فہرست میں شمولیت اِختیار کرلی ہے۔ این اے بی ایل کی منظوری حاصل کرنے کے بعد کھانے کی اشیاء اور مصنوعات کی تجزیات کے کام میں مصروف ہے۔ فوڈ سیفٹی اینڈ سٹینڈرڈس ایکٹ 2006 کی دفعہ 43 کے تحت وزارتِ صنعت و حرفت کے تحت کوالٹی کونسل آف انڈیا (کیو سی آئی) کے ایک حلقہ بورڈ ٹیسٹنگ اینڈ کیلی بریشن لیبارٹریز (این اے بی ایل) کے لئے قومی ایکریڈیٹیشن بورڈ نے جموں اور سری نگر میں فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹریز کو آئی ایس او / آئی سی نے معیار کی یقین دہانی کے لئے کیمیائی جانچ کے سلسلے میں 17025: 2017 کے مطابق تسلیم کیا ہے۔فوڈ سیفٹی اینڈ سٹینڈرڈ اَتھارٹی آف اِنڈیا ( ایف ایس ایس اے آئی )نے 2016ء میں تمام ریاستوں اور یوٹیوں کو مشورہ دیا تھا کہ وہ این اے بی ایل ایکریڈیٹیشن کا عمل شروع کریں۔اِس سلسلے میں فوڈ سیفٹی اور ایپکس اتھارٹی نے 18.12.2020 کو ریاستوں اور یوٹیوں کی پیش رفت کا جائزہ لینے کے بعد مختلف ریاستوں اور یوٹیوں کی فوڈ لیبارٹریوں کو ڈی ۔ نوٹیفائیڈکیا تھا جن میں فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹری سری نگر بھی شامل ہے ، اگرچہ دونوں لیبارٹریوں کی بنیادی دستاویزات مکمل ہوچکی ہیں۔ اس کے نتیجے میں یکم جنوری 2021ء کے بعد سے وادی کشمیر میں فوڈ سیفٹی اَفسران نے اُٹھائے گئے کھانے کے نمونے تجزیہ کے لئے فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹری جموں کے پاس بھیجے۔محکمہ نے کسی بھی کنسلٹنٹ کی مدد کے بغیر جو جموں و کشمیر میں 2019ء کے بعد سے پیدا ہونے والی صورتحال کی وجہ سے مشغول نہیں ہوسکتا ہے ، فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹریوں جموں اور سری نگر کی این اے بی ایل کو تسلیم کرنے کے لئے تمام وسائل اور افرادی قوت کو متحرک کیا۔ کمشنر فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے محکمہ صحت و طبی تعلیم کے مشورے سے کمشنر فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن کے ذریعہ محکمہ کے فوڈ اینڈ ڈرگ ونگس سے تعلق رکھنے والے ملک کے ماہرین کی ایک ٹیم تشکیل دی گئی۔ اِس اکائونٹ میں ہونے والی پیش رفت کاکمشنر ایف ڈی اے نے ہفتہ وار اور فائنانشل کمشنر صحت و طبی تعلیم نے ماہانہ بنیادوں پر جائزہ لیا۔فوڈ لیبارٹری جموں کو مارچ 2021 کے مہینے میں این اے بل ایل ایکریڈیٹیشن دیا گیا تھا جبکہ فوڈ لیبارٹری سری نگر کو 22 مئی 2021 کو این اے بی ایل ایکریڈ یٹیشن دیا گیا تھا۔کمشنر فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے اس مشق سے وابستہ ماہر کمیٹی اور محکمہ کے دیگر اَفسران کی کاوشوں کو سراہا ہے۔اُنہوں نے فائنانشل کمشنر صحت و طبی تعلیم اتل ڈولو کا بھی شکریہ ادا کیا کہ بنیادی ڈھانچے ، سازوسامان اور افرادی قوت کے ضمن میں ان فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹریوں کی درجہ بندی کے لئے خاطر خواہ مالی اور لاجسٹک مدد فراہم کی۔