ریاست میں 2518کنبے بے گھر

سرینگر //ریاستی سرکار نے ازخود اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ جموں وکشمیر میں  2518کنبے ایسے ہیں جن کے پاس اپنی رہائش نہیں ہے ۔ان کنبوں میں 2318کنبے دیہات میں ہیں ۔معلوم رہے کہ ملک بھر میں غریبی کی سطح سے نیچے زندگی گزر بسر کرنے والے افراد کیلئے سرکار کی جانب سے کئی ایک سکیمیں چل رہیں ،اُن سکیموں میں سے ایک سکیم اندراآواس یوجنا بھی ہے جس کے تحت ایسے لوگوں کو گھر بنانے کیلئے سرکار کی جانب سے پیسے واگزار کئے جاتے ہیں لیکن ریاست میں آج بھی سینکڑوں افراد ایسے ہیں جن کے پاس اپنے گھر ہی نہیں ہیں اور کھلے آسمان تلے اپنی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ ریاست میں 2518کنبے ایسے ہیں جن کے پاس اپنے مکان نہیں ہیں۔حکام کے مطابق سال2011میں محکمہ دہی ترقی وپنچایتی راج نے مرکزی وزارت برائے دیہی ترقی حکومت ہند کی ٹیکینکی ومالی تعاون سے ڈائریکٹررورل سنٹی ٹیشن کے ذریعے جو سوشو اکنامک کاسٹ سروے کرایا ہے اس کے تحت سب سے زیاہ کنبے اننت ناگ میں بے گھر ہیں جبکہ کرگل ضلع میں کوئی بھی کنبہ ایسا نہیں ہے جو بے گھر ہے ۔سرکار نے مزید بتایا ہے کہ مستحق کنبوں کو فہرستوں میں شامل کرنے کیلئے ضلع سطحی اپلیٹ اتھارٹی تشکیل دی گئی ہے ۔اس دوران گذشتہ ماہ دیہی ترقی کے وزیر عبدالحق خان نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ حکومت بے گھر ہوئے کنبوں کی فہرست از سرنو ترتیب دے رہی ہے تاکہ ان کو پرائم منسٹرس اواس یوجنا کے تحت مرکزی حکومت کو منظوری کیلئے بھیجا جائے۔ اس سلسلے میں وزیر نے افسران کو بھی ہدایت دی تھی کہ وہ گرام سبھا کا اہتمام کر کے مستحق کنبوں کی فہرست ترتیب دیں تاکہ ایم اے وائی کے تحت ایسے کنبوں کورہائشی مکان تعمیر کرنے میں مدد دی جا سکے ۔