ریاستی درجہ کی بحالی کا مطالبہ

 جموں//پینتھرس پارٹی کی سینئر قیادت کی ایک ہنگامی میٹنگ کشمیر، جموں اور لداخ میں منعقد کی گئی تاکہ جموں و کشمیر میں یوم جمہوریہ کے ٹھپ ہوجانے کے اثرات کا پتہ لگایا جا سکے، جوگزشتہ تین برس سے گورنر راج کے تحت ہے۔پینتھرس پارٹی کے صدر پروفیسربھیم سنگھ کی صدارت میں پینتھرس پارٹی کے سینئر لیڈروں نے کشمیر صوبے، جموں خطہ اور لداخ کے کچھ مشہور لیڈروں کے ساتھ ایک آن لائن میٹنگ کی۔ پروفیسر بھیم سنگھ نے بتایا کہ جموں و کشمیر میں قیادت نے یوم جمہوریہ کو سیاہ دن کے طور پر منایا۔ سڑکیں بند، گلیاں بند، اخبارات کے تمام پبلشروں کو پرنٹنگ کے کام کے بغیر رہنا پڑا۔ یوم جمہوریہ کا کوئی جشن نہیں تھا، گلیوں، گاؤں یا عوام میں کوئی خاموشی تھی۔ کیا یہ عوام کا بائیکاٹ تھا یا یوم جمہوریہ، خاص طور پر مرکز کے زیر انتظام علاقوں جموں و کشمیر اور لداخ میں؟ انہوں نے پورے میڈیا اور جموں و کشمیر کے حکمرانوں سے سوال کیا کہ کیا یہ جموں و کشمیر میں یوم جمہوریہ جیسا لگ رہاتھا ۔پروفیسر بھیم سنگھ نے صدر رام ناتھ کووند سے گورنر راج واپس لینے اور جموں و کشمیر کی ریاستی حیثیت کو فوری طور پر بحال کرنے کی اپیل کی، تاکہ جموں و کشمیر اور لداخ کے بچے اور ہر باشندے ایک بار پھر یوم جمہوریہ منا سکیں اور خود کو جموں وکشمیر ریاست کے معزز اور آزاد شہری محسوس کرسکیں۔