رام بن ضلع میں ٹھوس فضلہ ٹھکانے لگانے کی سہولت نہیں

رام بن//صوبہ جموں کے ضلع رام بن کی تین میونسپل کمیٹیوں بٹوت، رام بن اوربانہال میں ٹھوس فضلہ کو ٹھکانے لگانے کی سہولت کی عدم دستیابی کی وجہ سے جابجا کوڑاکرکٹ خاص کرپالی تھین اور پلاسٹک کے ڈھیر نظر آتے ہیں اور خاص طور پر چناب اور بشلڑی نالہ کے کناروں کو کوڑا دان بنایاگیاہے۔رہائشیوں کے ایک گروپ نے بتایا کہ میونسپل کمیٹی رام بن اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے کچھ نہیں کر رہی ہے سوائے اس کے کہ تمام کوڑے کو دریائے چناب کے پشتے میں پھینک دیا جا رہا ہے جو ماحول کو تباہ کرنے کے لئے تشویش کا باعث بن رہا ہے۔لوگوں نے شکایت کی ہے کہ صوبہ جموں کے اربن لوکل باڈی (یو ایل بی) کے حکام ان شہروں میں کچرے کے ڈھیر پھینکنے کے لئے زمین کی نشاندہی کرنے میں بری طرح ناکام رہے ہیں۔میونسپل کمیٹی کے ملازمین نے ہمیں بتایا کہ ہم بے بس ہیں کیونکہ ہمارے پاس شہروں سے جمع شدہ کوڑا کرکٹ سڑک کے کنارے پھینکنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے۔قصبوں کے رہائشیوں کو کچرے کے ڈھیر کی طرح کھڑا کردیا گیا ہے جس کی وجہ سے کتوں کی آبادی میں اضافہ ہونے لگا ہے جس سے لوگوں خاص طور پر بچوں اور بوڑھوں کو صبح اور شام کے اوقات میں مساجد اور مندروں میںعبادت کے لئے جانے والے لوگوں کے لئے خطرہ لاحق ہے۔ان قصبوں کے رہائشیوں نے الزام عائد کیا کہ انتظامیہ کی جانب سے میونسپل کمیٹیوں کے لئے کوڑا کرکٹ پھینکنے کی سہولیات کا بندوبست کرنے میں ناکامی نے لوگوں میں سخت ناراضگی پیدا کردی ہے کیونکہ گھروں اور بازاروں میں کچرے کے ڈھیر دریاؤں اور اس کے نیچے سڑکوں کے پشتے پر بکھرے ہوئے ہیں اور ہر سو عفونت پھیل چکی ہے جس کے باعث جینا دوبھر ہوچکا ہے۔