دورافتادہ علاقوں میں راشن کاذخیرہ نہ کرناافسوسناک:ساگر

 سرینگر// نیشنل کانفرنس جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے صوبائی انتظامیہ سے تاکید کی ہے کہ وہ موسم سرما کے پیش نظر لوگوں کو ضروریات زندگی جن میں بغیر خلل بجلی ، پینے کاپانی ، غذائی اجناس خصوصا چاول اور آٹے کے علاوہ مٹی کا تیل ، رسوئی گیس اور بالن کا وافر سٹاک لوگوں کیلئے دستیاب رکھیں، تاکہ عوام کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ انہوں نے کہا کہ امسال موسم سرما سے قبل ہی پہاڑی اور دور دراز علاقوں میں برفباری ہوئی ہے اور سردی کی لہر نے میدانی علاقوں کو بھی کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ موسم سرما میں چونکہ وادی اور لداخ وکرگل کے ساتھ ساتھ شمالی کشمیر کے بہت سارے علاقے جن میں مژھل ، ٹنگڈار ، کیرن، گریز اور صوبہ جموں مروا، مڈون اور دچھن جیسے علاقے وغیرہ شامل ہیں، جموں کشمیر کے دیگر علاقوں سے بھاری برف بھاری کی وجہ سے کٹ جاتے ہیں اور وہاں کے لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔اِس کے پیش نظر سرکار کو موثر اور کارگر اقدامات کرنا چاہیے۔ انہوں نے کرگل ، لداخ اور مروا، مڈون اور دچھن میں سٹاک پوزیشن کے بارے میں تفصیلات حاصل کرنے کیلئے پارٹی کے متعلقہ لیڈران سے فون پر بات کی اور اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ ابھی تک ان دوردراز اور پسماندہ علاقوں میں ضروری سپلائی مکمل نہیں کی گئی ہے۔