جموں وکشمیر میں احتیاطی اقدامات | لیفٹیننٹ گورنر نے وزیر اعظم کو مکمل جانکاری دی

جموں//لیفٹیننٹ گورنر گریش چندر مرمو نے وزیر اعظم نریند ر مودی کو جموںوکشمیر میں کووِڈ۔19 وباکو روکنے کے سلسلے میں یوٹی اِنتظامیہ کی طرف سے کی جارہی کوششوں اور اقدامات کے بارے میں جانکاری دی۔وزیر اعظم تمام ریاستوں / یوٹیز کے وزراء اعلیٰ اور سربراہان کے ساتھ کووِڈ۔19کے پھیلائو کو روکنے کے سلسلے میں اٹھائے جارہے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے بات چیت کر رہے تھے۔لیفٹیننٹ گورنر نے وزیر اعظم کو جے اینڈ کے میں مثبت معاملات اور سماجی دوریاں بنائے رکھنے ، طبی نگہداشت کے بنیادی ڈھانچے کو وسعت دینے ، مائیگرنٹ مزدوروں کے مشکلات دُور کرنے اور اُنہیں اشیائے ضروریہ فراہم کرنے کے سلسلے میں فیڈ بیک دِیا۔لیفٹیننٹ گورنر نے وزیر اعظم کو یوٹی میں چار اموات اور 224 مثبت معاملات جن میں 98فیصد معاملات کو سفری پس منظر یا مثبت مریضوں کے ساتھ رابطے میں آئے کی تفصیلات پیش کیں۔اُنہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر میں پانچ اضلاع کورونا وائرس سے متاثرہوئے ہیں اور 77 علاقوں کو ریڈ زون قرار دیا گیا ہے۔اُنہوں نے مزید کہا کہ 16کووِڈ ہسپتالوں کے قیام کے علاوہ وہاں 208وینٹلیٹر کو نصب کرنے کے علاوہ 2500آئیسولیشن بسترے ، 25000 دیگر بستروں کی دستیابی یقینی بنائی گئی ہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ نئے 400 وینٹلیٹر حاصل کئے جارہے ہیں۔اُنہوں نے کہاکہ 5500اَفراد اِس وقت ہوم کورنٹین میں رکھے گئے ہیں اور 30,000مزدوروں کیمپوں میں رہتے ہیں ۔لگ بھگ 18,000طبی نگہداشت کے ماہرین ، 30,000 پولیس عملہ اور دیگر اَفراد کو کووِڈ ۔19 کا مقابلہ کرنے کے لئے تربیت فراہم کی جارہی ہے اور وہ رات دِن اپنے فرائض بخوبی انجام دے رہے ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے وزیر اعظم کو جانکاری دی کہ انتظامیہ نے مؤثر نظام تشکیل دیا ہے اور مختلف بہبودی سکیمو ں کے تحت کئی مستحقین کو راحت پہنچانے کے لئے ضروری اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں۔اُن میں پی ایم کسان کے تحت 7لاکھ کسان ، پی ایم جے ڈی وائی کے تحت 8لاکھ اکائونٹ ہولڈر ، 12.5لاکھ کنبوں کو ایل پی جی کی فراہمی ، 7لاکھ کنبوں کو راشن و دیگر سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ پھنسے ہوئے مزدوروں اور یوٹی کے باہر طلباء کی سہولیت کے لئے کال سینٹر قائم کئے گئے ہیں۔ بات چیت کے دوران وزیر اعظم نے اگلے تین سے چار ہفتے کورنا وائرس کا مقابلہ کرنے کے لئے بہت اہم قرار دئیے گئے ہیں ۔