بنگلہ دیش کے سابق صدر جنرل ارشاد کا انتقال

 ڈھاکہ//بنگلہ دیش کے سابق صدر اور جاتیہ پارٹی کے صدر حسین محمد ارشاد کا اتوار کی صبح یہاں کے مشترکہ فوجی اسپتال میں انتقال ہوگیا۔وہ 89برس کے تھے ۔انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر)کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر رضا الشمیم نے بتایا کہ ارشاد نے آج صبح سات بج کر 45منٹ پر آخری سانس لی۔انہوں نے بتایا کہ سابق فوجی افسر مسٹر ارشاد کو گزشتہ کچھ مہینوں سے ان کی خراب صحت کے وجہ سے کئی بار اسپتال میں داخل کرانا پڑا تھا۔ ارشاد نے فوج کے سربراہ رہتے ہوئے 1982میں اقتدار پر قبضہ کرلیاتھا اور اگلے سال یعنی 1983میں اپنے صدر ہونے کا اعلان کردیاتھا۔انہوں نے 24اپریل 1982کو اس وقت کے صدر عبدالستار کیخلاف بغیر خون بہائے تختہ پلٹ کو انجام دیا تھا۔انہوں نے بعد میں جاتیہ پارٹی کی تشکیل کی اور سال 1986میں متنازعہ طریقے سے انتخابات میں جیت حاصل کی تھی۔ ارشاد1990تک بنگلہ دیش کے صدر رہے تھے اور سابق وزیراعظم خالدہ ضیاء اور حالیہ وزیراعظم شیخ حسینہ کی قیادت میں جمہوریت کے حامی عوامی انقلابات کی وجہ سے انہیں استعفی دینا پڑاتھا۔وہ1991میں رنگ پور -3پارلیمانی حلقے سے لوک سبھا کیلئے منتخب ہوئے تھے اور اس کے بعد انہوں نے سبھی عام انتخابات میں جیت حاصل کی تھی۔یواین آئی