باغ مہتاب میںمختلف النوع سہولیات کا حامل کتب خانہ | جہاں 40ہزار کتابوںکے علاوہ بزرگوںکیلئے دواخانہ، مشاورتی سہولیات اور قانونی معاونت کی سہولیات میسر ہونگی

سرینگر// جموں کشمیر ہائی کورٹ کے جج اور لیگل سروس اتھارٹی کے ایگزیکٹو چیئرمین جسٹس علی محمد ماگرے نے منگل کو باغ مہتاب سرینگر میں نئے قائم کئے گئے کُتب خانہ کا دورہ کیا۔ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر ڈاکٹر شاہد اقبال چودھری،ڈسڑک لیگل سروس کے چیئرمین،پرنسپل ڈسڑک اینڈ سیشن جج عبدارشید ملک،سیکریٹری ڈسڑک لیگل سروس اتھارٹی سرینگر عدنان سعید، ڈسڑک لیگل سروس اتھارٹی کا عملہ، محکمہ لائبرئز اینڈ ریسرچ کے عملہ،محکمہ صحت،ڈسڑکٹ لیگل سروس اتھارٹی کے اندراج شدہ وکلاء اور نیم قانونی رضاکاروں کے علاوہ مقامی و نواحی علاقوں کے کافی لوگ بھی اس موقعہ پر موجود تھے۔ پبلک لائبریری باغ مہتاب سرینگر جنوبی شہر میں پہلا ایسا کُتب خانہ ہے جس کو مشترکہ طور پر سمارٹ سٹی لمیٹیڈ اور محکمہ لائبرئز و تحقیق نے قائم کیا ہے۔اس کتب خانہ میں قریب40ہزار کتابیں موجود ہیں جن میں سیول سروس، این ای ای ٹی،جے ای ای اور دیگر تقابلی امتحانات کیلئے درکار مواد اور حوالہ جات کتابیں شامل ہیں۔ جموں کشمیر میں اس کُتب خانہ کا قیام اپنی نوعیت میں پہلا ہے،جہاں کتب خانہ،مشاورت اور سہولیاتی خدمات کے علاوہ مفت قانونی امداد اور معاونت،بزرگوں کے امراض سے متعلق دوا خانہ،سماجی بہبود اور طبی مشاورتی جانچ، فزیوتھرپی جیسی سہولیات ایک ہی چھت کے نیچے دستیاب ہیں۔ مقامی و نواحی علاقوں کے لوگوں کو اس کے قیام سے سہولیات میسر ہوں گی۔اس موقعہ پر جسٹس علی محمد ماگرے نے پبلک لائبریری کے عملہ سے تبادلہ خیال بھی کیا اور اس تنصیب میں موجود دیگر سہولیاتی مراکز کا معاینہ بھی کیا۔انہوں نے کتب خانہ کو معقول طور پر منتظم کرنے اور طلاب کی رجسٹریشن پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ ان سہولیات سے استفادہ حاصل کریں۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک اثاثہ ہے جس سے طلاب اور دیگر خواہشمند افراد کو فائدہ ہوگا۔جسٹس ماگرے نے بالخصوص نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ سہولیاتی مرکز کا بہتر و ممکنہ فائدہ حاصل کریں،کیونکہ یہاں کتابوں کا خزانہ ہے۔ لائبریری محکمہ کے عملہ نے جسٹس ماگر کو مطلع کیا،اس پہل کے حصے کے طور پر سرینگر سمارٹ سٹی لمیٹیڈ اور محکمہ لائبریریز و تحقیق نے اس مشن کی نشاندہی کی ہے کہ سرینگر میں کتب خانوں و مطالہ گاہوں کا نیٹ ورک قائم کیا جائے گا،تاکہ طلاب،بزرگوںاور خواتین و بچوں سمیت بڑی تعداد میں آبادی کو اس دائرے میں لایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ یہ کتب خانے مفت انفارمیشن ٹیکنالوجی و’’ وائی فائی‘‘ مراکز،پرنٹنگ،سکینگ اور فوٹو کاپیوں سمیت کیفیٹریا کی سہولیات بھی فراہم کرتے ہیں۔ انہیں اس بات سے بھی آگاہ کیا گیا کہ اسی طرز کا کتب خانہ و مطالعہ گاہ سرینگر انٹرنیشنل ائر پورٹ  میں بھی قائم کیا جائے گا،کیونکہ یہ ہوائی اڈہ بھارت بھر میں واحد ایسا ہوئی اڈہ ہے ،جہاں پر اس طرح کی سہولیات میسر نہیں ہے۔