بارشوں سے بھلیسہ، ٹھاٹھری ،بھدرواہ و بونجواہ میں مچی تباہی

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بالائی علاقوں میں گذشتہ روز ہوئی تباہ کن بارشوں، تیز آندھی و شدید ژالہ باری سے فصلوں و پھلوں و دیگر زرعی شعبے کو بھاری نقصان پہنچا ہے جبکہ پکڈنڈی راستے تباہ ہوئے ہیں اور متعدد نالوں پر تعمیر لکڑی کے عارضی پل سیلاب میں بہہ گئے ہیں وہیں بیشتر رابطہ سڑکوں پر سیلابی صورتحال پیدا ہوئی ہے۔اطلاعات کے مطابق جمعہ کے روز بھلیسہ، گندوہ، کاہرہ ،بونجواہ ،چلی پنگل و دیگر مضافات میں موسلا دھار بارشوں و شدید ژالہ باری سے بڑے پیمانے پر مکی کی فصل تباہ ہوئی ہے اور سبزیوں، باغات و زرعی اراضی کوشش بھی نقصان پہنچا ہے۔اس دوران ٹھاٹھری کلہوتران ،بھٹیاس جکیاس،اخیارپور گونڈو ،بگلی امرئی ،ملکپورہ منو ہڈل، گندوہ جائی، چنگا، کالجگاسر ،ڈھڈکائی و دیگر مضافات کو جوڑنے والی رابطہ سڑکوں کی حالت انتہائی ناگفتہ بہہ بن گئی ہے جبکہ درجنوں دیہات میں پانی کی اسکیمیں سیلاب کی نذر ہو گئیں ہیں۔سماجی کارکن نعمت اللہ وانی نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ حالیہ بارشوں سے زمینداروں و غریب عوام کو بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے جبکہ سڑکوں پر حفاظتی دیواریں و نکاسی نظام نہ ہونے کی وجہ سے سیلاب کا پانی رہائشی علاقوں میں داخل ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ باغات و دیگر زرعی شعبے بھی بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔اس دوران ڈی ڈی سی کونسلر کاہرہ معراج الدین ملک، ڈی ڈی سی بھلیسہ چوہدری محمد اقبال کوہلی، ڈی ڈی سی کونسلر چنگا ندیم شریف نیاز نے ضلع و مقامی انتظامیہ سے متاثرہ علاقوں میں خصوصی ٹیمیں روانہ کر کے نقصانات کا تخمینہ لگا کر متاثرین کو معقول معاوضہ ادا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے ہنگامی بنیادوں پر پانی، بجلی و سڑک رابطوں کی مرمت کرنے پر بھی زور دیا ہے۔