آنگن واڑی ورکروں اور ہیلپروں کا احتجاج

 سرینگر//آنگن واڑی ورکروں اور ہیلپروں نے بد ھ کواپنے مطالبات لیکر شیر کشمیر پارک سے پریس کالونی تک احتجاجی مارچ کیا۔ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڈس لئے احتجاج میں شامل آنگن واڑی ورکر اور ہیلپر اپنی مانگوں خاص کر باقی ریاستوں کے ساتھ اجرتوں میں تفاوت دور کرنے، 65 سال ریٹائرمنٹ کے بعد معقول پنشن مقرر کرنے، مستقلی و ترقیاں واگزار کرنے کے علاوہ آئی سی ڈی ایس کو نجی کرنے کے خلاف اپنی آواز بلند کررہی تھیں۔اس سے قبل آنگن واڑی ورکروں اور ہیلپروں نے ’آل جموں وکشمیر آنگن واڑی ورکرس و ہیلپرس یونین ‘ کے بینر تلے شیر کشمیر پارک میں احتجاجی دھرنا دیااور اپنے مطالبات منوانے کے حق میں نعرہ بازی کی۔ یونین کی سنیئر لیڈر میمونہ نازکی نے آنگن واڈی ورکروں اور ہلپروں کے ماہانہ مشاہروں میں اضافہ کرنے کیلئے ایک نظام قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔اس موقعہ پر سی آئی ٹی یو کے جنرل سیکریٹری اوم پرکاش نے ریاست کے محنت کش طبقے کو ایک ہی جھنڈے  کے تلے آنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اتحاد مین طاقت ہوتا ہے۔