آج43حلقوں میں ووٹنگ

  پرامن اورمنصفانہ انتخاب یقینی بنانے کیلئے سخت ترین حفاظتی بندوبست 

 
سرینگر//ضلع ترقیاتی کونسل اور خالی پنچایتی نشستوں کے ضمنی انتخابات کے پہلے مرحلے میں سنیچر کو وادی کے25حلقوں سمیت مجموعی طور پر43حلقوں میں ووٹ ڈالے جائیں گے،جس میں352امیدواروں کی سیاسی تقدیر کا فیصلہ ہوگا۔سخت ترین سیکورٹی بندو بست کے بیچجموں وکشمیر میں اپنی نوعیت کے پہلے ضلع ترقیاتی کونسل انتخابات کے تحت  آج یعنی28نومبر سنیچروار کوپہلے مرحلے میں کل43ڈی ڈی سی حلقوں جن میں کشمیر کے25اورجموں صوبہ کے18حلقوں اورپنچایت وبلدیہ کی خالی نشستوں کیلئے ووٹنگ ہورہی ہے ،جس کیلئے الیکشن کمیشن اورانتظامیہ نے تمام ضروری انتظامات مکمل کرلئے ہیں ۔3 بلدیاتی اداروں جن میںسرینگر میونسپل کارپوریشن (ایس ایم سی ) ،میونسپل کونسل پہلگام اور عشمقام میونسپل کونسل شامل ہیں ،میں بھی سنیچر کو ہی خالی نشستوں کیلئے ضمنی انتخاب ہوگا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ضلع ترقیاتی کونسل انتخابات کے پہلے مرحلے میں296امیدوار میدان میں ہیں،جن میں172وادی جبکہ124امیدوار جموں سے انتخاب لڑ رہے ہیں۔مجموعی طور پر1475امیدوار پنچوں و سرپنچوں کی خالی نشستوں کے ضمنی انتخابات میں اس مرحلے میں شرکت کر رہے ہیں۔ پہلے مرحلے کے انتخابات میں2ہزار644 انتخابی مراکز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے،جن میں7لاکھ کے قریب رائے دہندگان شرکت کریں گے۔انتخابات صبح7بجے سے2بجے تک ہوںگے۔سرکاری ذرائع نے بتایاکہ ڈی ڈی سی انتخابات کے پہلے مرحلے اورپنچایتوں وبلدیاتی اداروں کی خالی نشستوں کیلئے ہونے والے ضمنی چنائو کیلئے تمام ضروری تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں ۔ ووٹروں کی آسانی کیلئے پولنگ مراکز کی نشاندہی کاکام مکمل کیاگیا ہے جبکہ پولنگ عملہ کوضروری تربیت فراہم کی گئی ہے۔ اس دوران جمعہ کو ہی انتخابی مراکز کو کرونا وائرس سے بچائو کیلئے ادویات کا چھڑ کائو کیاگیا۔حکام کا کہنا ہے کہ انتخابی مراکز میں عملے کو کرونا وائرس کے حوالے سے ضروری ساز و سامان جن میں سینی ٹائزر،ماسک،حفاظتی پوشاک جیسے چیزوں سے لیس کیا گیا ہے۔ضلع ترقیاتی کونسل انتخابات پارٹی بنیادوں پر ہورہے ہیں ،اوراس میں7 سیاسی جماعتوں بشمول نیشنل کانفرنس،پی ڈی پی و پیپلز کانفرنس کا مشترکہ فورم عوامی اتحاد برائے گپکاراعلامیہ ،بھاجپا اوراپنی پارٹی سمیت کئی سیاسی جماعتیں حصہ لے رہی ہیں جبکہ آزاداُمیدواربھی میدان میں ہیں ۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ڈی ڈی سی انتخابات کے پہلے مرحلے اورپنچایت وبلدیہ کے ضمنی چنائو کیلئے سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں۔ 27نومبر کی شام تک پولیس وفورسزکے دستوں نے تمام پولنگ مراکز کواپنی تحویل میں لے لیا جبکہ پولنگ کاسامان اورمتعلقہ عملہ بھی ممکنہ طورپراسی روز متعلقہ پولنگ مراکز پرپہنچایاگیا۔پولنگ مراکز کے گر دنواح میں بھی فورسز اور پولیس دستوں کو تعینات کیا گیا ہے۔پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے پہلے ہی کہا ہے کہ انتخابی مراکز کے گر دونواح میں جدید ٹیکنالوجی اور ساز و سامان کو بروائے کار لاکر نگرانی کی جائے گی،تاکہ احسن طریقے سے انتخابی عمل مکمل ہو۔ ان انتخابات کیلئے پہلے ہی بیرون ریاستوں سے قریب25ہزار  اضافی نیم فوجی دستوں کو کیلئے طلب کرکے حساس علاقوں میں تعینات کیا گیا ہے۔سرکاری ذرائع نے بتایاکہ ضلع ترقیاتی کونسل انتخابات کوآزادانہ ،شفاف اورغیر جانبدارانہ بنیادوں پریقینی بنانے کیلئے جموں وکشمیر الیکشن کمیشن کی نگرانی میں تمام ضروری اقدامات مکمل کئے گئے ہیں ۔