اوڑی سیکٹر میں10روز بعد تلاشی کارروائی ختم،ایک پاکستانی جنگجو جاں بحق، ایک گرفتار

اوڑی// اوڑی سیکٹر میں 2 دراندازی کی کامیاب کوششوںکے بعد 10روزہ تلاشی آپریشن ختم ہوگیا ہے۔فوج کا کہنا ہے کہ تازہ کوشش کے دوران ایک جنگجو مارا گیا جبکہ ایک پاکستانی جنگجو کو گرفتار کیا گیا اور 4فوجی اہلکار زخمی ہوئے۔فوج نے کہا ہے کہ گزشتہ ایک ہفتے میں 7 جنگجو مارے گئے ، ان میں سے پانچ کی ہلاکت لائن آف کنٹرول پر ہوئی۔یہاں ایک پریس سے خطاب کرتے ہوئے ، 19 انفنٹری ڈویژن کے جی او سی ، میجر جنرل وریندر وٹس نے کہا کہ ایک 19 سالہ جنگجو کو بھارتی فوج نے پکڑا لیا ہے کیونکہ ہم کسی غیر مسلح شخص کے خلاف طاقت کا استعمال نہیں کرتے۔ فوجی افسر نے کہا کہ ایل او سی کے نزدیک عسکریت پسندوں کے لانچ پیڈز پر بہت زیادہ نقل و حرکت ہے اور اسلام آبادکو مایوسی ہے کہ وہ عسکریت پسندوں کو کشمیر میں شورش پیدا کرنے اور کسی قسم کی "سنسنی خیز ی" کرنے کے لیے بھیجیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دوسراآپریشن 18 ستمبر کی رات کو شروع ہوا تھا جب لائن آف کنٹرول کے ساتھ گشت پر مامور فورسز کو دراندازی کا پتہ چلا۔ جب تمام حقائق کی جانچ پڑتال کی گئی تومحسوس ہواکہ یہ دراندازی  کاگروپ چھ افراد پر مشتمل ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ جب انکاونٹر شروع ہوا تو2 دراندازخار دار تار کے پار آ چکے تھے جبکہ چار دوسری طرف تھے۔یہ چارعسکریت پسند) جو پاکستانی طرف تھے) ، انہوں نے گھنے درختوں اور اندھیرے کا فائدہ اٹھاکر پاکستان کی طرف پیچھے ہٹ گئے۔انہوں نے کہا کہ دو عسکریت پسند اس طرف گھس گئے،ایک بار جب ہم نے یہ سب کچھ سمجھ لیا ، اضافی فورسز کو ان جنگجوئوںکو گھیرنے کے لیے متحرک کیا گیا۔ چونکہ اس علاقے میں بہت زیادہ شہری آبادی ہے ،  لہٰذاہمیں کسی بھی قسم کے نقصان سے بچنے کے لیے مناسب صوابدید کا استعمال کرنا پڑا اور یہ سب 18 ستمبر کی رات کو ہوا۔ انہوں نے کہا ، ایک بار جب محاصرہ بڑھا یا گیا ، ان جنگجوئوں نے متعدد مواقع پر چھپنے کی کوشش کی اور اس دوران وقفے وقفے سے فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔جنرل نے کہا’’آخر کار فوجیوں نے ا ن جنگجوئوں کیخلاف آپریشن کیا جو 25 ستمبر کی شام سے سلام آباد نالے میں موجود تھے۔ اس کے بعد ایک انکانٹر ہوا اور عسکریت پسندوں میں سے ایک 26 ستمبر کی صبح  مارا گیا، اس کے ساتھی نے اس کی جان بچانے کی درخواست کی، بہت شور مچایا گیا‘‘۔ "انہوں نے مزید کہا ،" جیسا کہ ہندوستانی فوج کا اخلاق اور قدر کا نظام ہے ، ہم کسی بھی غیر مسلح شخص کے خلاف طاقت کا استعمال نہیں کرتے لہٰذا مناسب احتیاط کی گئی اور اسے حراست میں لے لیا گیا۔فوجی افسر نے کہا کہ پکڑے گئے شخص نے کچھ "انکشافات" کئے ہیں۔اس نے اپنی شناخت علی بابا عمر19) )ولد محمد لطیف ساکن پنجاب پاکستان کے طور پر کی۔ اس نے اعتراف کیا ہے کہ وہ لشکر طیبہ کا رکن ہے اور اسے تنظیم نے تربیت دی تھی۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ وہ 2019 میں خیبر کیمپ مظفر آباد میں 3 ہفتوں کے کورس کے لیے گئے تھے۔ اس نے اپنی والدہ کا رابطہ نمبر دیا ہے جو 03013668927 ہے۔فوجی افسر نے مزید کہا کہ جب گرفتار شخص دعوی کرتا ہے کہ اسے ہینڈلرز نے پٹن کے علاقے میں  ہتھیاروں کی سپلائی چھوڑنے کا ٹاسک دیا تھا۔"دراندازی کی یہ کوشش سلام آباد نالہ کے علاقے میں کی گئی، یہ وہی علاقہ ہے جس کے ذریعے  2016 میں دراندازی کی تاریخ حاصل کی تھی جب کہ اوڑی فوجی ہیڈ کوارٹر پر خودکش حملہ ہوا تھا۔ اس علاقے میں پاکستان کی جبری پوسٹ ہے اور لوگوں کے اس بڑے گروہ کی نقل و حرکت پاک فوج کی فعال شمولیت کے ساتھ نہیں ہو سکتی۔فوجی افسر نے مزید کہا: "ہم نے یہ بھی دیکھا ہے کہ ایل او سی پر لانچ پیڈ میں بہت زیادہ نقل و حرکت ہوئی ہے۔ آپ کو یہ بھی یاد ہو گا کہ 18 ستمبر کو دراندازی کی کوشش کی گئی تھی جب نزدیکی علاقے میں تین جنگجوئوں کو ہلاک کیا گیاتھا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 7 دنوں میں 7 عسکریت پسندوں کو "ہلاک اور ایک کو ایل او سی پر گرفتار کیا گیا ہے۔ ایل او سی پر دو آپریشنوں میں بڑی وصولی 7 اے کے سیریز رائفلیں ، 9 پستول اور ریوالور اور 80 گرینیڈ مختلف اقسام کے ساتھ ہندوستانی اور پاکستانی کرنسیاں شامل ہیں۔
 
 

پلوامہ میں2معاونین گرفتار

راجوری کدل میں کمین گاہ تباہ،اُس پار کاعمر رسیدہ شخص گرفتار

پلوامہ+راجوری/سید اعجاز+سمت بھارگو/ پولیس نے پلوامہ میں گرفتار2بالائی زمین ورکروں کی نشاندہی کے بعد راجوری کدل سرینگر میں ایک کمین گاہ کو تباہ کرکے مالک مکان کو حراست میں لیا۔ پلوامہ پولیس اور50آر آر نے سرینگر پولیس کے ساتھ مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے پلوامہ میں 2بالائی زمین ورکروں کو گرفتار کیا۔ گرفتار کئے گئے دونوں بالائی زمین ورکروں (OGW)سے تفتیش کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ لشکر کمانڈر ریاض ستھرگنڈ نے دونوں کو سرینگرمیں ایک کمین گاہ بنانے کیلئے کہا۔ پولیس کے مطابق منگل کو پولیس اور سی آر پی ایف نے راجوری کدل کا محاصرہ کیااور کمین گاہ خالی پائی گئی۔ اس دوران پولیس نے مکان کے مالک کو پوچھ تاچھ کیلئے پولیس تھانے لایا۔ادھرراجوری سیکٹر میں لائن آف کنٹرول پر تعینات بھارتی فوج  نے ایک درانداز کو پکڑ لیا، جو کنٹرول لائن سے گھسنے کی کوشش کر رہا تھا۔مبینہ طور پر ایک عمر رسیدہ شخص ، راجوری سیکٹر کے کیری میں آگے کے علاقے سے کنٹرول لائن میں داخل ہونے کی کوشش کر رہا تھا۔لائن آف کنٹرول کے آگے کے علاقے میں تعینات فوجی دستوں نے اس درانداز کی نقل و حرکت کو دیکھا اور اسے پکڑنے میں کامیاب ہو گئے۔ اسے قریبی فوجی کیمپ میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ حکام نے بتایا کہ یہ شخص پاکستانی کشمیر کے سوہانہ گائوں کا رہائشی ہے۔