اننت ناگ انکاؤنٹر کے مہلوک جنگجوؤں میں سے ایک جیش کمانڈر سمیر ڈار ہوسکتا ہے: پولیس

سری نگر//جموں و کشمیر پولیس کا کہنا ہے کہ 30 دسمبر کے اننت ناگ انکاؤنٹر میں مارے جانے والے جنگجوؤں میں سے ایک جنگجو غالباً جیش محمد سے وابستہ اعلیٰ کماندڑ سمیر ڈار ہے جو لیتہ پورہ پلوامہ حملے میں ملوث زندہ بچ جانے والا آخری جنگجو تھا۔
بتادیں کہ اننت ناگ کے ڈورو شاہ آباد علاقے میں 30 دسمبر کو سیکورٹی فورسز اور جنگجوؤں کے درمیان ہونے والے تصادم میں تین جنگجو مارے گئے تھے۔
پولیس کے مطابق مہلوکین میں سے ایک جنگجو پاکستانی جبکہ دو دیگر مقامی جنگجو تھے۔
کشمیر زون پولیس نے انسپکٹر جنرل وجے کمار کے حوالے سے ہفتے کے روز ایک ٹویٹ میں کہا: ’اننت ناگ میں 30 دسمبر کو ہوئے انکاؤنٹر میں مارے جانے والے جنگجوؤں میں سے ایک کی تصویر جیش محمد کے اعلیٰ کمانڈر سمیر ڈار سے ملتی ہے جو لیتہ پورہ پلوامہ حملے کا زندہ بچ جانے والا آخری جنگجو تھا‘۔
ٹویٹ میں کہا گیا: ’تاہم اس کی ڈی این اے سیمپل میچنگ کی جائے گی‘۔
قابل ذکر ہے کہ جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے لیتہ پورہ علاقے میں سی آر پی ایف کی ایک کانوائے پر 14 فروری 2019 کو خود کش حملہ ہوا تھا جس میں زائد از چالیس سی آر پی ایف اہلکار از جان ہوئے تھے۔