افغانستان اور آئرلینڈ کو ٹیسٹ اسٹیٹس مل گیا

دبئی/ انٹرنیشنل کرکٹ میں تسلسل سے شاندار کارکردگی دکھانے پر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل(آئی سی سی) نے افغانستان اور آئرلینڈ کو کل وقتی رکن تسلیم کرتے ہوئے انہیں ٹیسٹ درجہ دے دیا ہے ۔جمعرات کو لندن میں ہونے والے آئی سی سی کے سالانہ جنرل اجلاس میں آئی سی سی بورڈ نے ٹیسٹ ممبر شپ دینے پر دستخط کیے جس کے ساتھ ہی یہ ٹیسٹ کھیلنے والی ٹیموں کی تعداد 12 ہو گئی ہے ۔افغانستان اور آئرلینڈ کے بورڈ نے آئی سی سی سے درخواست کی تھی کہ ان کے درجے کو ایسوسی ایٹ سے ترقی دی جائے جس کی جمعرات کو اجلاس میں تمام اراکین نے منظوری دے دی۔ان دونوں ملکوں کے پاس پہلے سے ہی ٹی20 اور ون ڈے انٹرنیشنل میچ کھیلنے کا درجہ موجود تھا۔یہ 2000 کے بعد پہلا موقع ہے کہ کسی ٹیم کو ٹیسٹ درجہ دیا گیا ہو اور آخری مرتبہ بنگلہ دیش کی ٹیم کو ٹیسٹ ٹیم کا درجہ دیا گیا تھا۔افغانستان میں کرکٹ کی تاریخ بہت پرانی ہے اور فٹبال کے ساتھ ساتھ اس کھیل میں بھی افغان نوجوان انتہائی دلچسپی لیتے ہیں لیکن افغانستان کو اصل کامیابی اس وقت ملی جب 2011 میں انہیں ون ڈے انٹرنیشنل ٹیم کا درجہ ملا۔جنگ زدہ ملک ہونے کے باوجود افغان ٹیم نے عمدہ کھیل کا مظاہرہ کیا جس کے سبب انہیں دو سال بعد ایسوسی ایٹ ملک کا درجہ دے دیا گیا۔ افغانستان نے ورلڈ کپ 2015 اور ورلڈ ٹی20 میں بھی شرکت کی اور اپنے کھیل سے سب سے متاثر کر کے ٹیسٹ کا درجہ حاصل کرنے کیلئے خود کو اہم امیدوار ثابت کردیا۔2007 ورلڈ کپ میں پاکستان کو شکست دے کر دنیا کو حیران کرنے والی آئرلینڈ کی ٹیم نے تسلسل کے ساتھ اچھے کھیل کا سلسلہ جاری رکھا اور انگلینڈ سمیت کئی بڑی ٹیموں کو شکست دی جس کی بدولت وہ بھی ٹیسٹ درجہ حاصل کرنے میں کامیاب رہے ۔