ایک ملک میں 2 وزیراعظم، 2 آئین اور 2 جھنڈے کیسے ہوسکتے ہیں؟ امیت شاہ

عظمیٰ ویب ڈیسک

نئی دہلی// لوک سبھا میں جموں و کشمیر سے متعلق 2 بلوں کی بحث پر ٹی ایم سی کے رکن پارلیمنٹ کو جواب دیتے ہوئے، مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے پوچھا کہ ایک ملک میں 2 وزیرِ اعظم، دو آئین اور دو جھنڈے کیسے ہو سکتے ہیں؟
لوک سبھا میں جموں و کشمیر ریزرویشن (ترمیمی) بل 2023 اور جموں و کشمیر تنظیم نو (ترمیمی) بل 2023 پر بحث ہو رہی تھی۔
وزیرِ داخلہ نے کہا، “ایک ملک میں 2 وزیر اعظم، دو آئین اور دو جھنڈے کیسے ہو سکتے ہیں؟ جنہوں نے یہ کیا انہوں نے غلط کیا۔ پی ایم مودی نے اسے درست کیا۔ ہم 1950 سے کہہ رہے ہیں کہ ملک میں ‘ایک پردھان، ایک نشان، ایک ودھان’ (ایک وزیر اعظم، ایک جھنڈا اور ایک آئین) ہونا چاہیے، اور ہم نے ایسا کیا”۔
لوک سبھا کے رکن سوگتا رے نے لوک سبھا میں جموں و کشمیر ریزرویشن (ترمیمی) بل، 2023 اور جموں و کشمیر تنظیم نو (ترمیمی) بل، 2023 پر بحث کے دوران تبصرہ کیا۔ سوگتارے نے کہا کہ امیت شاہ نے وزیر داخلہ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد سے جموں و کشمیر کی صورتحال سے بات شروع کی۔ ان کے ذریعہ اٹھائے گئے اہم اقدامات میں سے ایک آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنا اور پھر جموں و کشمیر کی ریاستوں کو مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں تبدیل کرنا تھا۔ پہلا جموں و کشمیر اور دوسرا لداخ۔ پہلے مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو ریاستوں میں تبدیل کیا گیا تھا اور یہاں امیت شاہ نے ریاستوں کو مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں تبدیل کر دیا تھا۔ تم نے کیا حاصل کیا ہے؟” ۔
اُنہوں نے کہا کہ اگر قانون ساز اسمبلی نہیں ہے تو پھر آپ تبدیلیاں کیوں کر رہے ہیں؟ ایک قانون ساز اسمبلی بنائیں اور پھر بنائیں۔ مجھے نہیں معلوم کہ جلدی کیا ہے؛ جموں و کشمیر میں انتخابات کرانے کی جلدی ہونی چاہیے۔
سوگتارے نے کہا ،” انہوں نے صرف بی جے پی کے انتخابی وعدوں کو پورا کرنے کے لئے دفعہ 370 کو منسوخ کیا: ‘ایک پردھان، ایک نشان، ایک ودھان’ (ایک وزیر اعظم، ایک جھنڈا اور ایک آئین)۔ شیاما پرساد کے وقت یہ نعرہ تھا، یہ جموں و کشمیر کے لوگوں کے لیے نہیں ہے، کیونکہ یہ ایک سیاسی بیان تھا اور ان کا نعرہ تھا”۔
سیاما پرساد مکھرجی جو جواہر لعل نہرو کی کابینہ میں صنعت اور سپلائی کے ہندوستان کے پہلے وزیر تھے۔
اس دوران مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر نے کہا کہ جموں و کشمیر میں پہلے پتھراو¿ کے واقعات ہوتے تھے لیکن آج ایسے واقعات نہیں ہیں۔
ٹھاکر نے کہا،”اس سے پہلے کشمیر میں پتھراو¿ کے واقعات ہوتے تھے۔ آج ایسے واقعات نہیں ہوتے۔ آج نہ صرف لال چوک بلکہ کشمیر کی ہر گلی میں ہندوستانی جھنڈا لہرا رہا ہے“۔
جموں و کشمیر ریزرویشن (ترمیمی) بل، 2023، 26 جولائی 2023 کو لوک سبھا میں پیش کیا گیا تھا۔ یہ جموں اور کشمیر ریزرویشن ایکٹ 2004 میں ترمیم کرتا ہے۔
یہ ایکٹ درج فہرست ذاتوں، درج فہرست قبائل اور دیگر سماجی اور تعلیمی لحاظ سے پسماندہ طبقات کے افراد کو ملازمتوں میں ریزرویشن اور پیشہ ورانہ اداروں میں داخلہ فراہم کرتا ہے۔