ڈوڈہ کی گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول ٹانٹا کا حال بے حال ،بنیادی سہولیات کا فقدان

 ڈوڈہ // دو برس قبل ڈوڈہ ضلع کی تحصیل کاہرہ میں قائم گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول ٹانٹا میں جہاں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے وہیں میڈیکل و آرٹس شعبہ میں 11 لیکچرار،1 ماسٹر گریڈ و غیر تدریسی عملہ کی 17 پوسٹوں سمیت 29 اسامیاں خالی پڑی ہیں جبکہ کھیل کود کے لئے بھی کوئی معقول انتظام نہیں ہے جس کے نتیجے میں ادارہ میں زیر تعلیم 350 سے زائد بچوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔کشمیر عظمیٰ کو ملی تفصیلات کے مطابق تحصیل ہیڈ کوارٹر کاہرہ سے تقریباً 7 کلومیٹر کی دوری پر واقع گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول ٹانٹا میں تدریسی و غیر تدریسی عملہ کی کمی کے باعث تعلیمی نظام بری طرح متاثر ہو رہا ہے۔ ہائر سیکنڈری میں میڈیکل و آرٹس شعبہ میں 11 لیکچروں کی اسامیوں کو منظوری دی گئی ہے لیکن ابھی تک خالی پڑی ہوئیں ہیں وہیں ایک ماسٹر گریڈ، غیر تدریسی عملہ کی 7 و درجہ چہارم کی 10 اسامیاں بھی خالی ہیں۔اسوقت ادارہ میں ایک پرنسپل، 2 ماسٹر گریڈ و دو ٹیچر و ایک لیبارٹری اسسٹنٹ تعینات ہے۔کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے علاقہ کے ایک وفد نے کہا کہ زیادہ تر لوگوں محنت و مزدوری کرکے اپنا روزگار حاصل کرتے ہیں جس کے نتیجے میں وہ اپنے بچوں کو شہروں میں تعلیم حاصل کرنے سے قاصر رہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر چہ پچھلے ڈیڑھ برسوں سے کووڈ 19 کا بحران چل رہا ہے لیکن اس کے باوجود علاقہ میں تدریسی عملہ کی کمی کے باعث تعلیمی نظام بری طرح متاثر ہو رہا ہے۔ وفد میں شامل نوجوان سماجی کارکن بابر نفیس نے کہا کہ غریب عوام کے طلباءو طالبات نزدیکی ادارہ میں جاکر تعلیم حاصل کرنے جاتے ہیں لیکن وہاں پر بنیادی سہولیات کی کمی کے باعث انہیں پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ساڑھے تین سو سے زائد بچوں کے لئے کھیل کا میدان بھی دستیاب نہیں ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہائر سیکنڈری میں بیت الخلا بھی نہیں ہیں۔ادھر بی ڈی سی چیئرپرسن کاہرہ فاطمہ چوہدری و ڈی ڈی سی کونسلر معراج الدین ملک نے ایل جی انتظامیہ سے گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول ٹانٹا میں تدریسی و غیر تدریسی عملہ کی خالی پڑی اسامیوں کو پورا کرنے و بنیادی ڈھانچے کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اعلی حکام کی عدم توجہی پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی اداروں کی بھرمار ہے لیکن عملہ و بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی سے سینکڑوں طلباءکا مستقبل داو¿ پر لگا دیا ہے۔