چین کی عالمی برادری سے صومالیہ کی حمایت کی اپیل

یواین آئی

اقوام متحدہ// چین نے سیاسی استحکام، سلامتی اور اقتصادی اور سماجی تعمیر نو کے لیے صومالیہ کی کوششوں کے لیے بین الاقوامی حمایت جاری رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔اقوام متحدہ میں چین کے مستقل نمائندے ڑانگ جون نے کہا کہ صومالیہ کے لیے اقوام متحدہ اور عالمی برادری کی توجہ اور حمایت کو کم نہیں کیا جانا چاہیے کیونکہ 2024 ملک کے سیاسی عمل اور سلامتی کی تبدیلی کی کلید ثابت ہوگا۔ پیر کو صومالیہ اور قومی تعمیر نو کے لیے اہم ہے۔انہوں نے کہا کہ “چین صومالیہ میں تمام جماعتوں کی حمایت کرتا ہے تاکہ اختلافات کو حل کرنے اور بات چیت اور مشاورت کے ذریعے سیاسی صورتحال کو بہتر بنانے کی کوششوں کو بڑھایا جا سکے۔”انہوں نے یہ بھی کہاکہ “یہ ذہن میں رکھنا چاہیے کہ سیاسی نظام اور ترقی کے راستے کا انتخاب صومالیہ کا اندرونی معاملہ ہے۔ “عالمی برادری کو اس معاملے میں صومالی عوام کی قیادت اور ملکیت کے اصولوں پر کاربند رہنا چاہیے اور ان پر باہر سے کوئی نظام مسلط کرنے سے گریز کرنا چاہیے۔” ڑانگ نے کہا کہ بین الاقوامی برادری کو صومالیہ کی صورتحال کو سنبھالنے میں وفاقی حکومت کی مدد کرنی چاہیے، تاکہ انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں کی کامیابی اور سیاسی استحکام کی جانب پیش رفت کو مستحکم کیا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ یہ ضروری ہے کہ صومالیہ کے سیکورٹی سیکٹر کی سیکورٹی کی زیادہ ذمہ داری قبول کرنے کی صلاحیت کو بڑھانے میں مدد کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ صومالیہ کی اقتصادی اور سماجی تعمیر نو میں بھی مدد کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین صومالیہ کی وفاقی حکومت کی جانب سے حال ہی میں شروع کیے گئے سینٹنیل وڑن 2060 کا خیرمقدم کرتا ہے تاکہ قومی ترقی کے لیے بڑے کاموں کو ترتیب دیا جا سکے۔