وزیر اعظم کی جموں کے سرحدی علاقے کے سرپنچ کی لگن کی تعریف تمام فوائد آخری شخص تک پہنچنے کو یقینی بنائیں گے :مودی

عظمیٰ نیوز سروس

جموں//وزیر اعظم نریندر مودی نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے وِکست بھارت سنکلپ یاترا کے استفادہ کنندگان سے بات چیت کی۔انہوں نے پردھان منتری مہیلا کسان ڈرون کیندر بھی شروع کیا۔ پروگرام کے دوران، وزیر اعظم نے ایمز، دیوگھر میں تاریخی 10,000 ویں جن اوشدھی کیندر کو وقف کیا۔ مزید برآں مودی نے ملک میں جن اوشدھی کیندروں کی تعداد 10,000 سے بڑھا کر 25,000 کرنے کا پروگرام بھی شروع کیا۔ وزیر اعظم نے اس سال کے شروع میں یوم آزادی کی تقریر کے دوران خواتین کے خود امدادی گروپوں (ایس ایچ جیز) کو ڈرون فراہم کرنے اور جن اوشدھی کیندروں کی تعداد کو 10,000 سے بڑھا کر 25,000 کرنے کے لیے ان دونوں اقدامات کا اعلان کیا۔ یہ پروگرام ان وعدوں کی تکمیل کی نشان دہی کرتا ہے۔

 

رنگ پور گاؤں کی سرپنچ اور جموں ضلع کے ارنیا کی ایک کسان بلویر کور نے وزیر اعظم کو بتایا کہ انہوں نے متعدد سرکاری اسکیموں جیسے کسان کریڈٹ کارڈ اسکیم، فارم مشینری بینک اسکیم اور کسان سمان ندھی یوجنا کے فوائد حاصل کیے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس کا گاؤں سرحد کے قریب واقع ہے۔ مودی نے انہیں ایک ٹریکٹر کا مالک بننے پر مبارکباد دی جسے کسان کریڈٹ کارڈ کے ذریعے خریدا گیا تھا۔ وزیر اعظم نے اپنے علاقے کا ڈیٹا ہر وقت مہیا رکھنے پر ان کی تعریف کی۔انہوں نے اس کے جواب میں کہا کہ ‘‘عوامی سطح پر کام کرنا آپ ہی سے سیکھا ہے۔ کام کرتی ہوں اور بھولتی نہیں ہوں’’۔ (میں نے آپ سے زمینی سطح پر کام کرنا اور کام کی تفصیلات کو نہیں بھولنا سیکھا ہے)۔ انہوں نے سرکاری اسکیموں میں100 فیصد عمل درآمد کے ہدف کو حاصل کرنے کے بارے میں بیداری پیدا کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور کورکو دس پڑوسی دیہاتوں تک پہنچنے اور وہاں اس بات کی تشہیر کرنے کا مشورہ دیا۔ وزیر اعظم نے اس یقین پر زور دیا کہ تمام فوائد قطار میں کھڑے آخری شخص تک پہنچتے ہیں۔ وِکست بھارت سنکلپ یاترا کے مقصد پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ اس کا مقصد موجودہ فائدہ اٹھانے والوں کے تجربات سے سیکھنا ہے اور ان لوگوں کو بھی شامل کرنا ہے جنہوں نے ابھی تک فائدہ نہیں اٹھایا ہے۔