موسمیاتی تبدیلی بہت بڑا چیلنج:مودی | آفات سے نمٹنے کیلئے بنیادی ڈھانچے پر توجہ دینے پر زور

 کھڑگ پور //حال ہی میں اتراکھنڈ میں موسمیاتی تبدیلیوں اور قدرتی آفات کے خطرات کے خلاف انتباہ کرتے ہوئے  وزیر اعظم نریندر مودی نے منگل کو آئی آئی ٹی سے کہا کہ وہ تباہی سے نمٹنے والے انفراسٹرکچر کو تیار کریں جو ان کے اثرات کو روک سکتی ہے۔انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی کے سب سے قدیم ترین آئی آئی ٹی (کھڑگ پور) کے 66 ویں جلسہ تقسیم اسناد سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے امتحان پاس کرکے زندگی کا نیا سفر شروع کرنے والے طالب علموں پر زور دیا کہ وہ  اسٹارٹ اپ شروع کرنے اور ایسے اختراعی قدم اٹھانے  کی سمت میں سرگرم ہوں جو اس ملک کے کروڑوں لوگوں کی زندگی میں انقلاب برپا کردے۔ مودی نے کہا کہ حالات کے ایک ایسے موڑ پر جب دنیا آب وہوا میں تبدیلی سے پیدا ہونے والی آزمائشوں کا سامنا کررہی ہے ۔وزیراعظم نے کہا کہ تباہیوں سے نمٹنا ایک ایسا موضوع ہے جس کے تعلق سے دنیا کی نگاہیں ہندوستان پر ٹکی ہوئی ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ کورونا کے بعد ہندوستان سائنس ، تکنالوجی ، تحقیق اور جدت طرازی کے شعبوں میں عالمی سطح پر ایک بڑا ملک بن کر ابھراہے۔ انہوں نے کہا کہ اسی سے تحریک پاکر سائنس اور تحقیق کے بجٹ میں ایک بڑا اضافہ کیا گیا۔
 
 

صحت مند ہندوستان کیلئے حکومت ہمہ جہت حکمت عملی پر گامزن

نئی دہلی//وزیر اعظم نریندر مودی نے کل کہا ہے کہ حکومت صحت مند ہندوستان بنانے کے لئے ہمہ جہت حکمت عملی پر کام کر رہی ہے ۔مودی نے منگل کو صحت کے شعبے میں بجٹ کے التزامات کو موثر انداز میں نافذ کرنے کے لئے منعقدہ ایک ویبنار سے خطاب کرتے ہوئے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے کہا کہ اس سال کے بجٹ میں صحت کے شعبے میں الاٹمنٹ غیر متوقع ہے اور اس سے ہر شہری کو بہتر صحت خدمات فراہم کرنے کے حکومت کے عزم کا اظہار ہوتا ہے ۔مودی نے یاد دلایا کہ چند ہی مہینوں میں ملک نے 2500 لیبارٹریوں کا نیٹ ورک قائم کیا ہے اور اس طرح چند درجن ٹیسٹوں کے مقابلے میں ٹیسٹ کا کام 21 کروڑ تک جا پہنچا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ "کورونا وبا نے ہمیں سبق دیا ہے کہ ہمیں نہ صرف اس وبا سے لڑنا ہے بلکہ مستقبل میں ایسی صورتحال سے نمٹنے کے لئے بھی تیار رہنا ہے ۔