مزید خبریں

دیگر پسماندہ طبقات کی سماجی و سیاسی بااختیاری وقت کی ضرورت :این سی

جموں //نیشنل کانفرنس نے پیر کو کہا کہ پارٹی او بی سی کی سماجی وسیاسی بااختیار بنانے کے لیے کام جاری رکھے گی۔این سی او بی سی سیل کے پی پی عبدالغنی تیلی نے یہ بات وجئے پور حلقہ ضلع سانبہ میں وشکرما سبھا میں سیل کے ایک روزہ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس میٹنگ کا اہتمام بلاک صدر وجئے پور او بی سی سیل یشپال ورما نے کیا تھا۔تیلی نے کیڈر پر زور دیا کہ وہ بھائی چارے کو مضبوط کرنے کے لیے کام کریں جو پارٹی کا پسندیدہ فلسفہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام مذاہب محبت، ہمدردی اور بھائی چارے کی تلقین کرتے ہیں اور اس پیغام پر عمل پیرا ہونا ضروری ہے۔تیلی نے غریب مخالف پالیسیوں پر عمل پیرا ہونے پر انتظامیہ پر تنقید کی، یہ کہتے ہوئے کہ اس نے دیگر پسماندہ طبقے کی آبادی کے مفادات کو بے دریغ نظر انداز کیا ہے۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’’نیشنل کانفرنس کی قیادت والی حکومتوں کے دوران کمزور طبقات کو بااختیار بنانے کے سلسلے میں جو پیش رفت ہوئی ہے وہ ختم کردی گئی ہے۔انہوں نے نیشنل کانفرنس کی پے درپے حکومتوں کی طرف سے کمزور طبقوں، خاص طور پر سماج کے دیگر پسماندہ طبقے کی بہتری کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کا ذکر کیا۔ انہوں نے دوسرے پسماندہ طبقے کے طبقے کی ترقی اور بہبود کے لیے شیخ محمد عبداللہ کے تعاون کو بھی یاد کیا اور کہا کہ ان کے دور میں خواندگی اور سماجی و اقتصادی آزادی کو تقویت ملی اور اس کے بعد نیشنل کانفرنس آگے بڑھی۔

 

جموں بار ایسو سی ایشن کی عبادت گاہ میں توڑ پھوڑ کی مذمت

جموں// جے اینڈ کے ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن جموں نے شرپسندوں کے ذریعہ 9 اپریل 2022 کو جموں ضلع کے سدھرا بائی پاس پر ایک عبادت گاہ میں توڑ پھوڑ کی مذمت کی۔اس واقعے پر اپنے غم و غصے کا اظہار کرنے کے لیے، جموں و کشمیر ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن، جموں کے اراکین نے صدر جے کے ایچ سی بی اے جے، ایم کے بھاردواج کی صدارت میں ایک میٹنگ منعقد کی جس میں تمام عہدیداران بھی موجود تھے۔بھردواج نے میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے یونین ٹیریٹری انتظامیہ اور پولیس حکام پر زور دیا کہ وہ بغیر کسی تاخیر کے مجرموں کی شناخت اور گرفتاری کے لیے فوری اقدامات کریں۔انہوں نے انتظامیہ پر مزید زور دیا کہ وہ اس قسم کے واقعات کو روکنے کے لئے پورے جموں صوبے کے ارد گرد سیکورٹی کو مضبوط بنائے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ مستقبل میں ایسے واقعات کا اعادہ نہ ہو۔اجلاس میں موجود اراکین سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کچھ شرپسند عناصراور غیر سماجی عناصر نے جموں کے پرامن ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کی ہے تاکہ جموں کے امن پسند لوگوں میں فرقہ وارانہ فساد اور تناؤ پیدا کیا جا سکے۔ میٹنگ میں موجود اراکین نے سدھرا میں مذہبی مقام کی بے حرمتی کے مذموم فعل کی بھی شدید مذمت کی اور قصورواروں کو مثالی سزا دینے کا مطالبہ کیا، کیونکہ اس طرح کے واقعات سے جموں کے پرامن ماحول میں فرقہ وارانہ کشیدگی کو بھڑکنے کا خدشہ ہے۔انہوں نے جموں کے لوگوں سے کہا کہ وہ آگے آئیں اور ایسے شرپسندوں کو بے نقاب کریں جو پرامن ماحول کو خراب کرنا اور فرقہ وارانہ تقسیم پیدا کرنا چاہتے ہیں۔