شیوسینا کا مہنگائی کیخلاف احتجاج،عوام کو راحت دینے کا مطالبہ

جموں//شیوسینا جموں و کشمیر یونٹ کے قائدین نے غیر معمولی مہنگائی اور پٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے خلاف زبردست احتجاج کیا۔شیوسینک مہنگائی کی ریڑھ کی ہڈی کے درمیان عام لوگوں کو فوری ریلیف دینے کے لیے زوردار نعرے لگا رہے تھے۔ انہوں نے پیٹرول اور ڈیزل پر ایکسائز ڈیوٹی کو فوری طور پر کم کرنے کے علاوہ ان اشیاء کو گڈز اینڈ سروسز ٹیکس (جی ایس ٹی) کے دائرے میں لانے کا مطالبہ کیا۔پارٹی کے ریاستی یونٹ کے صدر منیش ساہنی کی قیادت میں شیوسینک پارٹی کے انٹرمیڈیٹ آفس کے باہر، ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھائے ہوئے تھے، جس میں نعرے درج تھے، “مہنگی ہوئی سبزی، مہنگی ہوئی دال— کب جائے گی مودی سرکار”درج تھے۔شیوسینا کے صدر منیش ساہنی نے اس موقع پر اپنے خطاب میں وزیر اعظم نریندر مودی سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر پیٹرول اور ڈیزل کو گڈز اینڈ سرویس ٹیکس (جی ایس ٹی) کے دائرے میں لائے۔ انہوں نے کہا کہ پیٹرول، ڈیزل اور گیس پر ایک کے بعد ایک ڈیوٹی لگا کر عوام کو ڈھٹائی سے لوٹا جا رہا ہے اور عوام کو 50 روپے کا مفت اناج فراہم کر کے بے وقوف بنایا جا رہا ہے۔منیش ساہنی نے کہا کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں آسمان کو چھونے سے تقریباً تمام اشیائے ضروریہ کی قیمتیں بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مذکورہ تمام عوامل کی وجہ سے عام آدمی کا بجٹ کھنڈرات میں تبدیل ہو گیا ہے۔شیوسینا لیڈر نے افسوس کا اظہار کیا کہ تمام بچت اسکیموں پر شرح سود اپنی کم ترین سطح پر پہنچ گئی ہے اور ٹول ٹیکس میں بھی 10 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی سے اپیل کی کہ وہ قیمتوں میں بے مثال اضافے اور مہنگائی کے دور حکومت میں فوری طور پر سخت اقدامات شروع کریں تاکہ اس ملک کے عام لوگ راحت کی سانس لے سکیں۔