تازہ ترین

قرّۃ العین حیدر

 طلوعِ اسلام سے اب تک چودہ صدیوں کے مختلف ادوار میں مسلم خواتین نے انسانی زندگی کے ہر شعبہ میں اپنی عظمتوں کی تاریخ مرتب کی ہے۔ برصغیر ہندوستان کی گزشتہ آٹھ سو سالہ مشترکہ ہند آریائی تہذیب کی تاریخ بھی مسلم خواتین کے دورساز کارناموں سے مزین ہے جنھوں نے جہانبانی، ملک گیری، سیاست، علوم و فنون، صنعت و حرفت اور انسانی معاشرہ کی اصلاح و تعمیر میں اپنی بصیرتوں اور لیاقتوں کے دائمی نقوش لوحِ زمانہ پر مرتسم کیے۔ یہ شرف بھی اس عظیم خطہ ارض کی مشترکہ تہذیب کی زندہ علامت اردو زبان کو حاصل ہوا کہ یہاں ایک نابغۂ روزگار مسلم خاتون نے جنم لیا جس نے اپنی غیرمعمولی ذہانت، علمیت، تخلیقیت اور وسیع تاریخی، سماجی، سیاسی اور انسانی شعور و بصیرت کو فن افسانہ نویسی اور ناول نگاری کے وسیلے سے اس طرح ظاہر کیا کہ بیسویں صدی میں برصغیر کی کوئی اور قوم یا زبان اس کا ثانی پیدا نہیں کرسکی۔ نہ صرف برصغیر بلکہ ت

عورت اور ہمارا رویہ

کیا ہم نے کبھی سوچا ہے کہ ہمارے معاشرہ میں عورت مرد سے پہلے کیوں بوڑھی ہو جاتی ہے؟کیوں شادی ہوتے چند سال میں بیٹی اپنی ماں کی بہن دکھنے لگتی ہے؟خوبصورت سے خوبصورت عورت کا جسم وقت سے پہلے بے ڈھنگا اور بدنما ہوتا چلا جاتا ہے۔مرد شادی کے چند سال بعد اپنی ہی بیوی کا چھوٹا بھائی دکھائی دیتا ہے۔اس صورتحال کا ذمہ دار کون ہے ہمارا معاشرہ، مرد یا عورت کی جسمانی ساخت؟ عورت جسمانی طور پر شاید مرد کے مقابلہ میں کمزور ہو لیکن فطرت نے اسکے جسم میں وہ تمام صلاحیتیں رکھی ہیں جن کی بدولت وہ نہ صرف افزائش نسل کا فریضہ سر انجام دے سکے بلکہ اپنی ساخت کو ایسے برقرار رکھ سکے جو مرد کے لیے کشش اور مسرت کی وجہ ہولیکن ایسا کیوں ہے کہ ہمارے معاشرہ میں معاملہ اس کے برعکس ہے۔ہمارے معاشرہ میں اکثر لڑکیوں کی شادی ان کی پسند کی نہیں ہوتی مرضی سے ہوتی ہے۔لڑکی کی مرضی کسی نہ کسی صورت میں سمجھوتے کی ایک شکل ہوتی ہے

ملازمت پیشہ خواتین کو درپیش مسائل

دنیا بھر کی خواتین معاشی طور پر مستحکم ہونے کے ساتھ ساتھ مختلف طریقوں کے ذریعیاپنے ملک و قوم کا نام روشن کررہی ہیں۔مختلف اعداد وشمار افرادی قوت میں عورتوں کی بڑھتی شرح کا تذکرہ کرتے ہیں لیکن یہ تصویر کا آدھا رخ بیان کرتے ہیں۔ تصویر کا دوسرا ر خ ملازمت پیشہ خواتین کو کام کی جگہوں پرموجود درپیش مسائل ہیں، جن کاذکر قدرے کم کیا جاتا ہے۔ نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا بھر میں ملازمت پیشہ خواتین کو مسائل کاسامنا ہے۔ برطانوی ادارے تھامسن رائٹرز فائونڈیشن اور روک فیلر فائونڈیشن کی جانب سے کیے گئے ایک سروے میںدنیاکی 9500ورکنگ ویمن سے ملازمت کی جگہوں پر موجود درپیش مسائل سے متعلق بات چیت کی گئی۔اس سروے نتائج کے مطابق دنیابھر کی ورکنگ ویمن کو مندرجہ ذیل مسائل کا سامنا زیادہ کرنا پڑتا ہے۔ ورک لائف بیلنس سروینتائج کے مطابق دنیا بھر کی ورکنگ ویمن کو درپیش مسائل میں سے ایک مسئلہ ورک لائف بیلنس کا