تازہ ترین

لاک ڈائون میں نرمی کا دوسرا دن

سرینگر//لاک ڈائون کی بندشوں میں انتظامیہ کی جانب سے نرمی کے بعد سرینگرکے بازاروں اور تجارتی مراکز میں عیدالاضحی کے پیش نظردوسرے روز بھی لوگوں کی چہل پہل دیکھنے کو ملی تاہم عید سے قبل بازاروں میںجس طرح خریدو فروخت ہوتی تھی ،وہ دیکھنے کو نہیں ملی اور زیادہ تر لوگ اشیائے خوردنی کی خریداری کرتے ہی نظر آئے۔انتظامیہ نے عید سے قبل دو روز تک اشیائے ضروریہ کی دکانوں کو کھلنے کی اجازت دی تھی،تاہم بدھ بعد از دوپہر دیگر دکانیں بھی کھلنے شروع ہوئے اور لوگوں نے بھی خرداری کی۔ شہر کے گونی کھن میں خواتین کی کافی تعداد جمع ہوئی اور دکانوں پر بھی گہما گہمی دیکھنے کو ملی،تاہم دکاندروں کی بار بار کی تاکید کے باوجود خریداروںکی خاصی تعداد دکانوں میں بغیر ماسک پہنے داخل ہو رہی تھی۔ مہاراج بازار،سرائے بالا،مائسمہ،کوکر بازار،ریگل چوک،مددینہ بازار،مکہ مارکیٹ،لالچوک اور دیگر نواحی علاقوں میں صبح سے ہی عید خریدا

بمنہ کے لاپتہ اسکالر کے اہلِ خانہ کاپریس کالونی میں احتجاج

سرینگر // بمنہ علاقے سے تعلق رکھنے والے لاپتہ نوجوان پی ایچ ڈی اسکالر کے اہل خانہ اور دیگر رشتہ داروں نے سوموار کے کوپریس کالونی احتجاج کیا اور اس کی بازیابی کا مطالبہ کرتے ہوئے پولیس اور فوج سے مدد کی اپیل کی۔احتجاجیوں میں بیشتر خواتین شامل تھیں ،جنہوں نے ہاتھوں میں پلے کارڈس اٹھا رکھے تھے جن پر ’پولیس سے مدد‘ کے نعرے لکھے ہوئے تھے۔بمنہ سے تعلق رکھنے والا کشمیر یونیورسٹی کا پی ایچ ڈی اسکالر ہلال احمد ڈار ولد مرحوم غلام محی الدین ڈار وسطی ضلع گاندربل کے نارہ ناگ علاقے میں 13 جون کو ٹریکنگ کے دوران لاپتہ ہوا تب سے لیکر آج تک اس کا کہیں کوئی اتہ پتہ نہیں۔احتجاجی خواتین نے بتایا کہ بمنہ کے 6نوجوانوں پر مشتمل ایک گروپ سیروتفریح کے لئے ناراناگ وانگت کنگن گئے جہاں سے وہ صحت افزا مقام گنگہ بل کی جانب روانہ ہوئے اور شام کو جب وہ وہاں سے واپس چل پڑے تو ہلال احمد ڈار پیچھے رہ گیا او

دارالخیرکی ٹرانسپورٹروں کی مالی معاونت

سرینگر//دارالخیر میرواعظ منزل  نے جموںوکشمیر کی موجودہ ابتر اور سنگین صورتحال کووڈ۔ 19 کے سبب جملہ معاشی و اقتصادی سرگرمیاں معطل رہنے اور شدید لاک ڈائون کی وجہ سے سماج کے مختلف طبقے جن گوناگوں مسائل اور مشکلات سے دوچار ہیں اُن پر گہری فکر و تشویش کا اظہار کیا ہے ۔بیان میں کہا گیا کہ یوں تو سماج کے سبھی طبقے موجودہ حالات سے شدید طور پر متاثر ہیں تاہم ٹرانسپورٹرس اور اس صنعت سے جڑے وابستہ افراد کچھ زیادہ ہی  مالی مشکلات سے دوچار ہیں ۔ چنانچہ دارالخیرکے سرپرست اعلیٰ کی ہدایت پر ادارہ نے شہر سرینگر سے وابستہ پانچ منی بس یونینوں (Tata 407) کے ذمہ داروں کو بطور ْٹوکن مبلغ5,00,000 روپے  بصورت چیک سپرد کیں تاکہ وہ اس صنعت سے وابستہ حد درجہ ضرورتمندوںکو ممکنہ مالی تعاون فراہم کرسکیں۔ میرواعظ منزل  نے  کشمیر کی این جی اوز اور دیگر فلاحی تنظیموں سے اپیل کی ہے کہ وہ ٹرانسپ

ڈلگیٹ میں قصابوں کی13دکانیں سیل

سرینگر//سینٹرل کارڈی نیشن کمیٹی ڈلگیٹ نے تحصیلدار ساوتھ اوردیگرحکام کاشکریہ اداکرتے ہوئے کہاہے کہ حکام کوروناوائرس کے چلتے گراں بازاری اورناجائز منافع خوری کرنے والے دکاندار وں اورقصابوں کیخلاف مہم جاری رکھے ہوئے ہیں ۔کمیٹی کے بیان میں کہاگیاکہ ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ فوڈمحمداکبر ،ایگزیکٹومجسٹریٹ فیاض احمداور تحصیلدار ساوتھ سری نگررابیہ یوسف پرمشتمل ایک چیکنگ اسکارڈ نے ڈلگیٹ علاقہ میںسرکاری نرخنامے کوبالائے طاق رکھنے اوردیگرخلاف ورزیوں کی پاداش میں قصابوں کے13دکانات سربمہرکردئیے ۔بیان کے مطابق زبانی تاکید وتلقین کے باجود یہاں مین بازار میں قصاب لوگوں سے گوشت کی منہ مانگی قیمت وصول کرنے کے مرتکب ہورہے تھے ،اورجب وہ اپنی اس حرکت سے بازنہیں آئے توحکام نے فوری کارروائی عمل میں لاکر قصابوں کے دکانات سیل کردئیے ۔بیان کے مطابق قصابوں نے اپنے دکانات بندکررکھے ہیں اوروہ گھروں کے اندرسے ہی گوشت فرو

منٹو سرکل کالوآلوچی باغ میں پانی کی قلت

سرینگر//منٹو سرکل کالونی آلوچی باغ میں پینے کے پانی کی عدم دستیابی کے باعث آبادی کو شدید پریشانیوں کا سامنا ہے ۔لوگوں کا الزام ہے کہ محکمہ جل شکتی علاقے میں پانی کی سپلائی بحال کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ علاقے میں گرمیوںکے ان ایام میں پینے کے صاف پانی کی قلت ہے جس کے نتیجے میںلوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ علاقے میں کئی ماہ سے پینے کے صاف پانی کی سپلائی متاثر ہے۔انہوںنے کہا کہ اگرچہ کالونی میں محکمہ جل شکتی نے پانی کی پائیپیں بچھائی ہیں تاہم ان میں پانی نہیں آتا ہے ۔لوگوں نے کہا کہ اگرچہ انہوں نے کئی مرتبہ محکمہ کو آگاہ کیا کہ علاقے میںپینے کے صاف پانی کی سپلائی کو یقینی بنایاجائے تاہم آج تک ایسا نہیںکیا گیا ۔ مقامی لوگوں نے مطالبہ کیا کہ علاقے میں جلد از جلد پینے کے صاف پانی کی سپلائی کو بحال کیا جائے ۔  

بجلی کی آنکھ مچولی| آبی گذر میں آبادی پریشان

 سرینگر //جھلسادینے والی گرمی میں آبی گذر میں بجلی کی آنکھ مچولی کی وجہ سے لوگوں کو شدید دشواریوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ مقامی باشندگان نے بتایا کہ گزشتہ کئی روز سے علاقہ میںبجلی کی آنکھ مچولی کا نیا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے اوربجلی کی بے وقت کٹوتی سے لوگ پریشان ہوگئے ہیں ۔سجاد احمد نامی مقامی شہری نے بتایا کہ بجلی کی اس آنکھ مچولی سے لوگوں کا گرمی سے بُراحال ہوجاتا ہے ۔مقامی آبادی نے محکمہ پی ڈی ڈی سے مطالبہ کیا ہے کہ علاقہ میں بجلی کی بلا خلل سپلائی کو یقینی بنایا جائے۔  

تازہ ترین