تازہ ترین

میوہ کاشتکاروں نے حکومت ہند سے ایرانی سیب کی درآمدات پر روک لگانے کا مطالبہ کیا

  سری نگر//کشمیری میوہ منڈی کے بڑھتے نقصان پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے میوہ کاشتکاروں نے بدھ کو حکومت ہند سے اپیل کی ہے کہ وہ ہندوستانی بازار میں ایرانی سیب کی درآمد پر پابندی عائد کرے۔   کشمیر ویلی فروٹ گروورز ڈیلرز ایسوسی ایشن اور نیو کشمیر فروٹ ایسوسی ایشن کے صدر بشیر احمد بشیر نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت میں ایرانی سیب کی سپلائی نے مارکیٹ میں کشمیری سیب کے ریٹ کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔   انہوں نے کہا، "ایرانی سیبوں کی دستیابی کی وجہ سے منڈیوں میں کشمیری سیبوں کی مانگ کم ہے"۔   بشیر نے بتایا کہ منڈیوں میں گزشتہ چند دنوں میں سیب کے نرخ 1200 روپے فی ڈبہ کم ہو کر 600روپے تک پہنچ گئے ہیں۔   انہوں نے کہا کہ سیب کے ایک ڈبے کی پیداواری لاگت 600روپے ہے، اس کے علاوہ ٹرانسپورٹ چارجز فی ڈبہ 300 روپے

نیشنل سروس سکیم | کشمیر یونیورسٹی میں اسکول اور کالج اساتذہ کیلئے پروگرام شروع

سرینگر// کشمیر یونیورسٹی میں این ایس ایس پروگرام کے افسران کیلئے ایک ہفتہ طویل تربیت کا آغاز ہوا۔رجسٹرار ڈاکٹر نثار اے میر نے پروگرام کے افتتاحی سیشن کی صدارت کی، جو اپنی نوعیت کا تیسرا تھا، جس کا اہتمام یونیورسٹی کے دفتر نیشنل سروس اسکیم (NSS) نے کالج اور اسکول کے اساتذہ کے لیے کیا تھا۔یہ پروگرام ایمپینلڈ ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ (ای ٹی آئی) کے زیراہتمام منعقد کیا جا رہا ہے جو کہ یونیورسٹی کے پروگرام کوآرڈی نیٹر این ایس ایس کے دفتر کو دی گئی تھی، جو وزارت برائے امور نوجوانان اور کھیل، حکومت ہند نے 2019 میں دی تھی۔کشمیر کے ہائیر سیکنڈری اسکولوں کے 19 پروگرام افسران کو ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن کشمیر نے تعینات کیا ہے جبکہ کشمیر کے مختلف کالجوں کے 16 پروگرام افسران کو موجودہ پروگرام میں شرکت کے لیے ڈائریکٹر کالجز نے تعینات کیا ہے۔افتتاحی سیشن میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے، رجسٹرار ڈاکٹر نثار اے

دورافتادہ اورسرحدی علاقے ہنوذ منقطع | عوام کو راحت پہنچانے کیلئے بروقت اقدامات کی ضرورت :ساگر

سرینگر//نیشنل کانفرنس جنرل سکریٹری حاجی علی محمد ساگر نے کہاکہ برفباری کے بعد اب بھی بہت سارے علاقے کٹے ہوئے ہیں اور بجلی و پینے کے پانی کی سپلائی کے علاوہ دیگر لازمی خدمات بحال نہیں ہوپائے ہیں۔ انہوںدونوں صوبوں کی ڈویژنل انتظامیہ سے اپیل کی کہ وہ برفباری کے نتیجے میں منقطع ہوئے علاقوں اور دیہات کے ساتھ سڑک روابط بحال کرنے کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کریں کیونکہ ایسے علاقوں میں لوگوںکو زبردست اور گوناگوں مسائل اور مشکلات کا سامنا ہے۔ ٹنگڈار، کیرن، کرناہ، گریز، ٹیٹوال، والٹینگو، جنوبی کشمیر، خطہ چناب اور پیرنچال کے دور دراز اور پہاڑی علاقوں میںلوگ گھروں میںمحصور ہوکر رہ گئے ہیں اور لازمی خدمات کیلئے ترس رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان علاقوں میں مریضوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے اور مقامی ہسپتالوں میں ڈاکٹر بھی دستیاب بھی نہیں۔ انہوں نے صوبائی کمشنروں اور ضلع ترقیاتی کمشنروں سے ا

پریس کالونی میں طلاب کا احتجاج | حکومت پر مستقبل سے کھلواڑ کرنے کا الزام

سرینگر// حکومت کی جانب سے کوچنگ مراکز کو بند کرنے کے فیصلے کے خلاف درجنوں طلاب نے منگل کو سرینگر میںاحتجاج کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ انکے مستقبل کے ساتھ کھیل رہی ہے۔سرینگر کی پریس کالونی میں منگل کو درجنوں طلاب نمودار ہوئے اور سرکار کی جانب سے کوچنگ مراکز کو بند کرنے کے فیصلے کے خلاف نعرہ بازی کی۔مظاہرین جن میں زیادہ تر تعداد طالبات کی تھی،نے کہا کہ گزشتہ2برسوں سے تعلیمی شعبے کو ہی سب سے زیاد نقصان پہنچا۔ان کا کہنا تھا کہ وہ مسابقتی امتحانات کی تیاریوں میں مشغول ہیں،اور آن لائن طریقہ کار سے انہیں نقصان ہوگا۔ احتجاجی طلاب نے سوالیہ انداز میں کہا کہ جب سیاحوں کے آنے سے کویڈ میں اضافہ نہیں ہوگا،مسافربردار گاڑیوں میں بھیڑ سے کویڈ نہیں پھلے کا تو ،کوچنگ مراکز کے کھلے رکھنے سے کیونکر اس وبائی بیماری میں اضافہ ہوگا۔احتجاجیوں نے کہا کہ وہ چھوٹے بچے نہیں ہیں بلکہ کویڈ عملیاتی طریقہ کار،رہنما

کوچنگ مراکز کی انجمن کا وفدڈپٹی کمشنر سرینگر سے ملاقی | نیٹ اور جے ای ای سمیت سول سروسزامتحانات کی کوچنگ کی اجازت

سرینگر//وادی کے کوچنگ مراکز کی انجمن نے کہا ہے کہ انتظامیہ نے انہیں NEET اور JEE اور سول سروسز امتحانات کیلئے کوچنگ کلاسز جاری رکھنے کی اجازت دی ہے،تاہم اس دوران طلاب کی کم سے کم تعداد ہونی چاہیے اورکووِڈمناسب رویہ پر زیادہ سے زیادہ عمل درآمد ہونا چاہیے۔وادی میں کورونا معاملوں میں اُچھال کے بعد انتظامیہ کی طرف سے کوچنگ مراکزکوبندکرنے کے اعلان کے ایک روز بعد کوچنگ مراکزکی انجمن کا وفدصدرحامدمفتی کی قیادت میں ڈپٹی کمشنر سرینگر سے ملاقی ہوا۔ضلع کمشنر نے وفد کوبغور سنااوریقین دلایا کہ کوچنگ مراکزکومرحلہ وارکام کرنے کی اجازت دینے کایقین دلایا۔وفد سے کہاگیا کہ وہNEET اور JEEسمیت سول سروسزامتحانات کی کوچنگ کے کلاس دوروزبعد کم سے کم طلاب اور زیادہ سے زیادہ کووِڈ مناسب رویہ پرعملدرآمد کے ساتھ شروع کرسکتے ہیں۔وفد کوبتایاگیا کہ تمام مراکزپرٹیکہ کاری جاری رہنی چاہئے جب تک کہ صدفیصد ہدف حاصل نہیں

تازہ ترین