ڈل جھیل کی بحالی… دلّی ہنوز دور است

ڈل جھیل ،نگین،آنچار اور خوشحال سر آبی ذخائرکی تازہ پیمائش کی گئی ہے جس کے مطابق ڈل اور نگین کا رقبہ 50432کنال اراضی ہے جس میں 39226آبی ذخائر اور 10206کنال اراضی خشکی ہے جبکہ تازہ ترین پیمائش کے مطابق خوشحال سر کارقبہ 1791کنال اراضی ہے جس میں 1701آبی ذخائراور 90کنال خشکی ہے۔جبکہ مزیدایک ہزار کنال اراضی بھی ڈل کی وسعتوںمیں شامل کی جائے گی۔جہاں تک آنچار جھیل کا تعلق ہے تواس  کا رقبہ40728کنال اراضی ظاہر کیا گیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ یہ پیمائش جدید آلات اور ریموٹ سنسنگ سٹیلائٹ کے ذریعے کرائی گئی ہے۔مزید بتایا جارہا ہے کہ نہ صرف ڈل کے مکینوں کو رکھ آرتھ منتقل کر نے کے بعد ان کی املاک کو مہند م کرکے انکو بھی آبی ذخائر میں منتقل کیا جائے گا۔ اگر واقعی زمینی سطح پر ڈل جھیل کی بحالی کیلئے اتنا کام ہوا ہے تو یہ حوصلہ افزا ہے اور اس سے امید پیدا ہوگئی ہے کہ ڈل کی شان رفتہ بحال ہوسکے گی ل

تازہ ترین