تازہ ترین

خصوصی بھرتی قواعد

بالآخر بلی تھیلے سے باہر آ ہی گئی ۔دو روز قبل یعنی4جون کو جموںوکشمیر انتظامیہ کے عمومی انتظامی محکمہ کی جانب سے حالیہ اعلان شدہ 10ہزار درجہ چہارم اسامیوں کی خصوصی بھرتی مہم کیلئے جو قواعد و ضوابط جاری کئے گئے ہیں،اُن کے سرسری مشاہدہ سے پتہ چلتا ہے کہ اس عمل میں سنجیدگی اور خلوص کافقدان ہے۔پڑھنے میں تو شاید یہ نوٹیفکیشن کوئی عام سا اعلامیہ لگتا ہو لیکن قانونی معاملات کی سوجھ بوجھ رکھنے والے لوگ سمجھ جاتے ہیں کہ کہاں کونسی خامی رکھی گئی ہے ۔زیاد ہ بحث میں جائے بغیر مذکورہ ضوابط میں موجود چند خامیوں کو اجاگر کرنا لازمی ہے تاکہ اصلاح احوال سے کام لیاجاسکے۔اول تو آج تک درجہ چہارم اسامیاں سروسز سلیکشن بورڈ کے ذریعے پُر نہیں ہوتی تھیں بلکہ یہ محکمانہ سطحوں پر ہی پُر کی جاتی تھیں اور یوں خوامخواہ سب سے کم درجہ کی سرکاری اسامیوںکو نان گزیٹیڈ اسامیوں کی بھرتی کے ذمہ دار بھرتی بورڈ کے سپرد کرک

تازہ ترین