غزلیات

ذرا سی عمر نے کیا کیا دکھا دیا ہے مجھے بھری جوانی میں بوڑھا بنا دیا ہے مجھے   میں جانتا ہی نہ تھا زندگی کے معنی کو غموں کی دھوپ نے سب کچھ سِکھا دیا ہے مجھے   جب اِس بڑھاپے میں آیا تو یہ خیال آیا مری حیات نے آخر کو کیا دیا ہے مجھے   سمٹ گئے ہیں سبھی علم انگلیوں میں مری اس آگہی نے تو جاہل بنا دیا ہے مجھے   نڈھال رہتا ہوں میں جس کی یاد میں اے شمسؔ ستم تو یہ ہے اُسی نے بھلا دیا ہے مجھے   ڈاکٹر شمس کمال انجم صدر شعبۂ عربی / اردو / اسلامک اسٹڈیز بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوری موبائل نمبر؛9086180380     کبھی تو پوری مرے دل کی آرزو ہوگی کبھی وہ شام بھی آئے گی پاس تُو ہوگی کھِلے گی گلشنِ اُمید کی کلی تو کبھی فضا میں خوشبو تمہاری ہی چار سُو ہوگی وہ دن ب

تازہ ترین