تازہ ترین

غزلیات

کھل گئے ہیں تمام میخانے مست ہیں پی کے سارے دیوانے ساری دنیا کھڑی ہے لائن میں بعد مدت کھلے جو میخانے شیخ جی خود بھی مست تھے پی کر اور وہ سب کو لگے تھے بہکانے جان والے ہی جانتے ہیں کیسے دیتے ہیں جان پروانے اتنا ناراض ہے خدا ہم سے ہوگئے بند سب خدا خانے اس ’’کرونا‘‘ کے بعد کیا ہوگا؟ لوگ کہتے ہیں، بس خدا جانے پوچھئے جاکے آپ ’’کووِڈ‘‘ سے کتنی جانوں کے لیں گے نذرانے کوئی حیرت نہیں ہوئی مجھ کو سن کے اپنوں سے زیر لب طعنے ’’ہے خبر گرم ان کے آنے کی‘‘ سج گئے شہر دل کے ویرانے عقل سے کہتے تو سمجھتا بھی کون جائے ہے دل کو سمجھانے یہ صدی شمسؔ مختلف ہوگی مختلف ہوں گے سارے پیمانے   ڈاکٹر شمسؔ کمال انجم صدر شعبۂ عربی بابا غلام شاہ باد

تازہ ترین