بجبہاڑہ میں خندق سے زہریلی گیس کا اخراج

اننت ناگ//بجہباڑہ اننت ناگ میں پیر کی شام اس وقت صف ماتم بچھ گئی جب ایک پر اسرار حادثہ میں باپ بیٹا اور دو بھائی سمیت 4افراد لقمہ اجل بن گئے۔ یہ واقعہ ٹائون سے دو کلو میٹر دور تلہ کھن میں پیش آیا۔ اس دلدوز حادثہ کے بارے میں بتایا گیا کہ کنویں کی کھدائی کے دوران زہریلی گیس کا اخراج ہوا جس سے یہ ہلاکتیں ہوئیں۔ لیکن مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ لوگ مزدور نہیں تھے بلکہ ان میں سے دو بھائی کروڑ پتی تھے۔سوشل میڈیا اور بجبہاڑہ ایس ڈی ایم کی جانب سے بیان میں کہا گیا کہ تلہ کھن بجہباڑہ میں پیش آئے واقعہ کے 4متاثرین کو سب ڈسڑکٹ اسپتال بجہباڑہ لایا گیا تاہم وہ دم توڑ چکے تھے۔انہوں نے کہا کہ غالباً دم گھٹنے یا زہریلی گیس کے اخراج سے انکی موت ہوئی ہے۔مہلوکین کی شناخت عبدالرشید ڈار عرف رشید ژوٹ اور اسکا بھائی نذیر احمد ڈار پسران غلام حسن ڈار ساکنان تلہ کھن اور 45 سالہ ارشد حسین وانی ولد عبدالرشید و

شوپیان فرضی جھڑپ معاملہ

سرینگر//جولائی کے مہینے میں جنوبی کشمیر کے شوپیان ضلع کے امشی پورہ گائوںمیں مبینہ فرضی انکاؤنٹر میںمارے جانے والے راجوری کے 3عام نوجوانوں کے معاملے پراپنے ہی اہلکاروں پر فرد جرم عائد کرنے کے بعدفوج نے ممکنہ کورٹ مارشل سے پہلے شواہد جمع کرنے کاآغاز کیا ہے۔کورٹ آف انکوائری ،جس نے اس مہینے کے شروع میں اپنی تحقیقات مکمل کی، کو’ابتدائی حقائق‘ کے شواہد ملے تھے کہ 18 جولائی کو ہونے والے انکاؤنٹر کے دوران فوجیوں نے آرمڈ فورسز اسپیشل پاور ایکٹ (اے ایف ایس پی اے) کے تحت اختیارات کو ’عبور کیا‘ جس میں راجوری کے تین مزدور پیشہ نوجوان ہلاک ہوگئے تھے ۔ اس کے بعدفوج نے تادیبی کارروائی کا آغاز کیا تھا۔عہدیداروں نے بتایا کہ کچھ شہری گواہوں کو بھی طلب کیا جائے گا جس میں وہ لوگ شامل ہیں جو مقامی فوج کیلئے ’مخبر‘ کے طور پر کام کرتے ہیں جنہوں نے ممکنہ طور پر فوج کو غل

پانپور اور ڈورو میں 2جنگجو گرفتار

پلوامہ +اننت ناگ // پانپور میں 15روز قبل جنگجوئوں کی صف میں شامل ہونے والا جنگجو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ ڈورو میں بھی ایک جنگجو کو حراست میں لیا گیا اور چاڑورہ میں اسلحہ بر آمد کیا گیا۔ اونتی پورہ پولیس نے کونہ بل پانپور سے حالیہ دنوں لشکر طیبہ میں شامل ہونے والے جنگجو کو گرفتار کرلیاہے ۔ پولیس کے مطابق  50آر آر ، سی آر پی ایف او ر اونتی پورہ پولیس نے فیصل احمد ڈار ساکن خانقاہ باغ پانپور کو حراست میں لیا ۔ پولیس کے مطابق فیصل 11ستمبرکو گھر سے نکلنے کے بعد لاپتہ ہو گیا تھا اور 13ستمبر کو اس نے سوشل میڈیا پر ایک آڈیو پیغام میں عسکری صفوں میں شامل ہونے کا اعلان کر دیا تھا ۔ اسکے خلاف پہلے ہی پانپور پولیس تھانے میں کیس زیر نمبر 79/2020 درج کیا گیا ہے۔ادھراننت ناگ میں  فورسزنے پولیس کیساتھ مشترکہ کارروائی کے دوان ایک جنگجو کو گرفتار کرکے اس کے قبضے سے اسلحہ اور گولہ بارود بر

مژھل اور نوشہرہ سیکٹروں میں گولہ باری

 کپوارہ +نوشہرہ// حد متارکہ پرمژھل سیکٹر میں ہند پاک افواج کی جانب سے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورز ی کے دوران ایک فوجی اہلکار زخمی ہوا۔ پیر کے روز کپوارہ کے مژھل سیکٹر میںگولہ باری کا واقعہ پیش آیا جس کے دوران ایک فوجی اہلکار زخمی ہو گیا ۔ دفاعی ترجمان کے مطابق پیربعد دوپہر پاکستانی فوج نے بلا کسی اشتعال کے بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنا کر چھوٹے اور بڑے ہتھیاروں سے گولہ باری شروع کی۔ادھرنوشہرہ کے کلسیاں سیکٹر میں ہندوپاک افواج کے درمیان شدید گولہ باری اور فائرنگ کا تبادلہ ہوا ۔ پیر کے روز پاکستانی فوج نے راجوری کے نوشہرہ سیکٹر میں کلسیاں اور بھوانی علاقوں کو نشانہ بنایااور شدید گولہ باری کی ۔دفاعی ترجمان لیفٹنٹ کرنل دیوندر آنند نے بتایا کہ پیر کے روز سہ پہر 03بج کر 45 منٹ پرپاکستانی فوج نے نوشہرہ سیکٹر میں ایل او سی پر گولہ باری کی جس کا بھارتی فوج نے بھی بھرپور جواب دیا۔دریں اثنا،

دیہی ترقیاتی سکیموں کو مقررہ مدت کے اندر مکمل کیاجائے

سری نگر//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے دیہی ترقی او رپنچایتی راج محکموںکے حکام کو دیہی ترقی سکیموں کی مؤثر عمل آوری یقینی بنانے کے لئے کہا اور مکانات ، روزگار کے مواقع پید ا کرنے ، ترقیاتی اور دیگر کاموں سے متعلق سکیموں پر خصوصی توجہ مرکوز کرنے  کی تلقین کی۔ مشیر موصوف نے یہ ہدایات دیہی ترقی پنچایتی راج محکموں کی جائزہ میٹنگ کے دوران دیں۔ میٹنگ میں صوبہ کشمیر میں مختلف سکیموں ، پروگراموں اور پالیسوں کی عمل آوری کا مفصل جائزہ لیا گیا اور جن ابھیان ، ایم جی نریگا ، 14ویںمالی کمیشن ، 15ویں مالی کمیشن کے ڈرافٹ پلان، پردھان منتری آواس یوجنا گرامین، آدھار سیڈنگ ، گرہ پرویش تحفہ جات اور جیو ٹیگنگ کے تحت ہاتھ میں لئے گئے کاموں اور واجبات کی ادائیگی پر بھی دوران میٹنگ غور و خوض ہوا ۔ مشیر بصیر خان نے اَفسران کو بلاکوں کا دورہ کر کے ترقیاتی سرگرمیوں کے بارے میں جانکاری رکھنے

کوکر ناگ اور بجبہاڑہ سڑک حادثات میں زخمی نوجوان اور بچی زندگی کی جنگ ہارگئے

اننت ناگ+گول+رام بن//کوکر ناگ اور بجبہاڑ ہ میں سڑک حادثوں میں زخمی ہوئے نوجوان اور کمسن لڑکی نے اسپتال میں دم توڑ بیٹھے۔ادھر سنگلدان اور رام بن میں الگ الگ سڑک حادثات میں ایک ڈرائیور ہلاک ہوگیا جبکہ 4افراد زخمی ہوئے۔گنائی پورہ بجبہاڑہ کی سولہ برس کی فضا جان دختر بشیراحمدالٰہی گزشتہ روزسڑک حادثے میں شدیدزخمی ہوئی تھی،جس کے بعد بچی کو نازک حالت میں صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ منتقل کیاگیاتھاجہاں سوموار کو بچی زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھی۔اس کی لاش جب آبائی گائوں پہنچائی گئی تووہاں کہرام مچ گیا۔ادھر گوہن کوکر ناگ میں سنیچر کو تین گاڑیوں کی آپسی ٹکر سے جو تین افراد زخمی ہوئے تھے ،اُن میں ایک اورزخمی نوجوان جاوید احمد ولد نذیر احمدساکن بدہارڈ ایس ایم ایچ ایس اسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔نوجوان کی موت کی خبر پھیلتے ہی اُس کے آبائی گائوں میں صف ماتم بچھ گیا۔قابل ذکر ہے کہ ا

سرینگرجموں شاہراہ پر بلا وجہ چیکنگ سے تاجر پریشان

سرینگر //اخروٹ صنعت سے وابستہ کشمیری کاشتکاروں نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ان کے مال کو بیرون ممالک کی منڈیوں تک پہنچانے میں اُن کی مدد کی جائے کیونکہ شاہراہ پر گاڑیوں کی چیکنگ کے نتیجے میں انہیں سخت دقتوں کا سامنا رہتا ہے ۔ جموں وکشمیر والنٹ ایسوسی ایشن کے صدر حاجی بہادر خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کشمیر وادی میں اِن دنوں اخروٹ کی گری کی خرید وفروخت کا سیزن جوبن پر ہے لیکن مال کو بیرون منڈیوں تک پہنچانے میں ان کو کافی دقتیں پیش آرہی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ شاہراہ پر بنا کسی جواز کے گاڑیوں کو روک دیا جاتا ہے پھر ٹیکس کے نام پر تاجروں سے بھاری جرمانہ وصول کیا جاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حال ہی میں تاجر سے محکمہ ٹیکسز کے اہلکاروں نے شاہراہ کے مختلف مقامات پر گاڑیوں کو روک کر ان پر جرمانہ عائد کیا جس سے تاجر کافی پریشان ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کووِڈ-   19کے بیچ یہاں پر اس صنعت سے واب

مالی پیکیج دینے میں جموں وکشمیر امیتاز کا شکار: کمال

 سرینگر//نیشنل کانفرنس نے عالمی یوم سیاحت پر جموں وکشمیرمیں سیاحت کے شعبے کی ابتری پر تشویش کااظہار کیا ہے ۔ایک بیان میں پارٹی کے معاون جنرل سیکریٹری ڈاکٹر مصطفی کمال نے کہا کہ گزشتہ ایک برس سے مسلسل نامساعد حالات ،کووِڈ- 19کی عالمگیر وباء اورتباہ کن برف باری کیو جہ سے سیاح کشمیرنہیں آسکے۔اس وجہ سے اس شعبے سے وابستہ تاجر،دکاندار،شوروم والے،دستکار،ہاوس بوٹ مالکان ، ٹرانسپورٹر اوردیگر ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھے ہیںاورلاکھوں لوگوں کی روزی روٹی متاثر ہوئی ۔انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے اگرچہ موجوہ حالات میں مرکزی حکومت نے دیگرریاستوں کے صنعت کاروں ،تاجروں اور مزدوروں کو مالی پیکیج سے نوازالیکن جموں کشمیرکو ہرسطح پرنظرانداز کیا گیا،خا ص طور سے سیاحت سے وابستہ افراد کو۔انہوں نے کہا کہ جب ڈاکٹر فاروق نے1996میں زمام اقتدار سنبھالی توانہوں نے سب سے پہلے دستکاروں اور سیاحت سے وابستہ تاجروں کیلئے

بجبہاڑہ میں غر قآب بچی کی لاش 103روز بعد بر آمد

اننت ناگ//بجہبارڈہ مرہامہ میں 16جون کو دریائے جہلم میں غرق آب ہوئی 13سالہ کمسن لڑکی کی لاش پیر کو دریا سے بر آمد کی گئی ۔ اطلاعات کے مطابق13سالہ نگہت جان اپنی ماں کے ہمراہ 16جون کو گائوں سے گذرنے والی ندی کے کنارے کپڑے دھو رہی تھی جس دوران وہ پانی میں اچانک گر گئی جس کے بعد ماں نے بچی کو بچانے کے لئے ندی میں چھلانگ لگائی ، تاہم اس بیچ دونوں ماں بیٹی غرق آب ہوگئیں ،اگر چہ ماں کی نعش اُسی دن دریا سے برآمد کی گئی تاہم بیٹی کی نعش باز یاب نہیں ہو پائی تھی ،اورسوموار کو 103روز کے بعد ندی سے ریت نکالنے کے دوران بچی کی بوسیدہ لاش بر آمد ہوئی ۔  

زلزلوں کے لحاظ سے حساس جموں وکشمیر

سرینگر//زلزلیاتی پیمانے پر سب سے زیادہ خطرناک 4 اور 5 زون میں آنے والے جموں وکشمیر میں ان دنوں زلزلے کے جھٹکوں کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجے میں لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے۔ گذشتہ 6روز کے دوران جموں وکشمیر میں  5بارزلزلوں کے جھٹکے محسوس کئے گئے۔ تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔سوموار کی صبح ایک مرتبہ پھر لوگوںمیں اس وقت خوف و ہراس پھیل گیا جب زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کئے گئے ۔ محکمہ سسما لوجی کے مطابق جموں کشمیر میں سوموار کی صبح 10بجکر 42منٹ پرزلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے جن کی شدت 4.2ریکارڈ کی گئی ۔زلزلہ کا مرکز 22ستمبر سے 28ستمبر تک جموں وکشمیر میں  5بارزلزلے کے جھٹکے آئے ۔ 22ستمبر کو زلزلے کا ایک زور دار جھٹکا سرینگر میں محسوس کیا گیا جس کے نتیجے میں لوگوں میں افرتفری پھیل گئی اس دوران مکمل طور پر محکمہ موسمیات یہ پتہ لگانے میں ناکام رہا تھا کہ یہ زلزلہ ہے ی

ویری ناگ بازار میں بیت الخلاء ناقابل استعمال

اننت ناگ//سیاحتی مقام ویری ناگ کے بازار میں سرکاری بیت الخلاء ناقابل استعمال ہے اور بدبو نزدیکی مکینوں کے لئے سوہان روح ثابت ہورہی ہے۔سیاحتی مقام ہونے کی وجہ سے ویری ناگ بازار میں اکثر لوگوں کا رش لگا رہتا ہے تاہم بازار میں موجود سرکاری بیت الخلاء ناقابل استعمال بن گئے ہیں ۔بیت الخلاء کی عدم دستیابی کے سبب راہگیروںبالخصوص خواتین کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتاہے۔جامع مسجد ویری ناگ اوربس اسٹینڈ کے نزدیک 3بیت الخلاء انتہائی خستہ حالی کا شکارہیں ۔ میونسپل کمیٹی نے کئی سال قبل جنرل بس اسٹینڈ میں بیت الخلاء تعمیر کیا تاہم ڈیولپمنٹ اتھارٹی کی جانب سے آج تک پختہ ڈرین کو تعمیر نہیں کیا جاسکا جس کے باعث بستی کا سارا گندہ پانی بیت الخلاء میں داخل ہورہا ہے اور لاکھوں روپئے کی لاگت سے تعمیر کئے گئے بیت الخلاء کھنڈرات میں تبدیل ہوچکے ہیں ۔ محمد امین نامی ایک  شہری نے کہا کہ بازار میں بیت الخلاء

بنک میں این پی اے کیلئے متعلقہ افسران کو جوابدہ بنایا جائے: نوین چودھری

 سرینگر //پرنسپل سیکریٹری امداد باہمی ، پشو ، بھیڑ ، ماہی پالن نوین کمار چودھری نے آج بنک میں ہر نان پرفارمنگ ایسٹ کیلئے متعلقہ افسروں کو جوابدہ بنانے کیلئے کہا ۔ یہ ہدایات انہوں نے جموں سنٹرل کواپریٹو بنک لمٹیڈ کی چھٹی بورڈ آف ڈائریکٹرس کی میٹنگ کے دوران دئے ۔ میٹنگ میں صوبائی کمشنر جموں ، ڈپٹی کمشنر جموں ، جنرل منیجر جے سی سی بی اور بنک کی ڈائریکٹر موجود تھیں جبکہ بنک کے دیگر افسران اور ملازمین نے جموں سے بذریعہ ویڈیو کانفرنسنگ شرکت کی ۔ نوین چودھری جو کہ بنک کے چئیر مین بھی ہیں ، نے افسروں کو بنک کی جانب سے فراہم کئے گئے قرضہ جات کی تفاصیل پیش کرنے کیلئے کہا ۔ انہوں نے بنک افسروں کو بنک کی جانب سے کی گئی سرمایہ کاری کا جائیزہ لینے اور ترجیحی شعبوں کیلئے قرضے فراہم کرنے پر توجہ مرکوز کرنے کی ہدایت دی جو کہ امدادِ باہمی بنکوں کے قیام کا مقصد ہے ۔ انہوں نے بنک حکام کو بنک کی بحا

مزید خبرں

موجودہ حکومت نے میوہ صنعت کو مکمل نظراندازکیا سابق وزیرعبدالغنی وکیل کاالزام سرینگر//سابق وزیرعبدالغنی وکیل نے الزام لگایا ہے کہ موجودہ حکومت نے میوہ صنعت کوبالکل نظراندازکیا ہے حالانکہ میوہ اُگانے والے کافی مالی دشواریوں سے دوچار ہیں۔ایک بیان میں عبدالغنی وکیل نے کہا کہ حیرانگی کی بات ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے حالیہ سپیشل پیکیج میں میوہ صنعت کاکہیں نام ونشان نظرنہیںآتا ۔انہوں نے کہا کہ میوہ اُگانے والے گزشتہ دوبرسوں سے خسارے کاسامنا کررہے ہیں جس کی وجہ موسمی حالات،امن وقانون کی ابترصورتحال اورموجودہ کووِڈ بیماری ہے۔وکیل نے کہا کہ پھربھی سرکار نے میوہ صنعت کے فروغ کو مکمل نظراندازکیا ہے حالانکہ میوہ صنعت لاکھوں لوگوں کو روزگار فراہم کررہی ہے اورجموں کشمیرکے اقتصادیات کی ریڑھ کی ہڈی ہے۔عبدالغنی وکیل نے مرکزی سرکاراور جموں کشمیرحکومت پرزوردیا کہ وہ میوہ اُگانے والوں کی اقتصادی

تازہ ترین