تازہ ترین

سوپور سڑک حادثہ میں معمر خاتون ہلاک | روپوش ڈرائیور کی تلاش شروع ،زوجیلا میں پتھر گرنے سے شہری زخمی

سوپور+کنگن//لالڑ سوپور میں سڑک کے ایک دلدوز حادثہ میں معمر خاتون ہلاک ہوگئی۔ادھر زوجیلا میں پتھر کی زد میں آنے سے شہری زخمی ہوا۔ سوپور سرینگر شاہراہ پر 70سالہ فاطمہ بیگم زوجہ غلام محمد نائیکو ساکنہ لالڑ سڑک پار کررہی تھی جس کے دوران ایک نامعلوم گاڑی نے اسے زوردار ٹکر ماردی جس کے باعث وہ شدید زخمی ہوئی اور موقعہ پر ہی دم توڑ بیٹھی۔ اس موقعہ پر ڈرائیور جائے حادثہ سے فرار ہوگیا۔ پولیس نے کیس درج کرکے روپوش ڈرائیور کی تلاش شروع کی ہے۔ ادھرکرگل سے سرینگر کی طرف آرہی ایک گاڑی جب زوجیلا پر پہنچ گئی تو وہاں ایک گاڑی سڑک کے بیچ خراب تھی جس کی وجہ سے مشتاق احمد خان ولد علی محمد خان ساکن آلوچی باغ سرینگر اپنی گاڑی سے نیچے آیا اور شاہراہ کھلنے کا انتظار کررہا تھا کہ اس دوران پہاڑ سے اچانک ایک پتھر گرآیا جس سے وہ ذخمی ہوگیا ۔ مذکورہ شخص کو علاج ومعالجہ کیلئے سونہ مرگ ہسپتال لایا گیا جہاں سے اس

بانڈی پورہ میں جھلی خاتون زندگی کی جنگ ہارگئی | کیس درج، میت میکے کے قبرستان میں دفن

بانڈی پورہ //چٹے بانڈے بانڈی پورہ میں جلنے والی 3بچوں کی ماں موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد انتقال کرگئیں۔  ایس ایچ او آرہ گام کاکہنا ہے کہ مبارک احمد بٹ کی اہلیہ گزشتہ شام جل گئی۔90فیصد جھلسی خاتون کوفوری طور پر بانڈی پورہ ہسپتال لے جایاگیا تاہم ڈاکٹروں نے اسے سرینگر ہسپتال منتقل کیا جس کے دوران پولیس اہلکار بھی ہمراہ تھے ۔ ہسپتال میں زیر علاج رہنے کے دوران مذکورہ خاتون صبح کو دم توڑ بیٹھی۔ ایس ایچ او نے کہاکہ ایف آئی آر درج کرکے تحقیقات شروع کی گئی ہے۔پوسٹ مارٹم کرنے کے بعد میکے والوںنے میت کو اپنے آبائی قبرستان آیتمولہ میں سپرد خاک کیا ہے ۔  

۔13جولائی کا دن تاریخ کا اہم سنگ میل: حریت (ع) | قربانیاں ناقابل فراموش، مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر

سرینگر//حریت (ع)نے13 جولائی 1931  کے دن کو جموں و کشمیر کی تاریخ کا ایک اہم سنگ میل قرار دیاہے جب پہلی بار کشمیریوں نے اجتماعی طور پر جابرانہ شخصی راج کے خلاف شدید مزاحمت کرتے ہوئے اپنے جذبات اور امنگوں کے اظہار کیلئے اٹھ کھڑے ہوئے۔ بیان میں کہا گیا کہ اس دن اظہار رائے کی آزادی کو طاقت کے بل پر خاموش کرنے کے لئے ریاستی سنٹرل جیل کے باہر 22 کشمیریوں کو بے دردی سے شہید کردیا گیا اور اس کے بعد سے آج تک بلا امتیازکشمیری عوام اس دن کو ’’ یوم شہدائے کشمیر‘‘ کے طور پر مناتے آئے ہیں اور انہیں اجتماعی طور پر خراج عقیدت پیش کرتے آئے ہیں کیونکہ یہ قربانیاں جموں و کشمیر کے عوام کا ایک قابل فخر ورثہ ہیں جو اس وقت سے سے لیکر آج تک اپنے نصب العین کے حصول کیلئے مسلسل جدوجہد کرتے ہوئے قربانیاں دیتے آئے ہیں۔حریت (ع) نے 13 جولائی کے ان قومی شہیدوں کو زبردست الفاظ میں خر

کلہم ترقی کیلئے بہتر منصوبہ بندی لازمی: ایل جی | پلوامہ میں متعدد وفود ملاقی، ترقیاتی پروجیکٹوں کا ای افتتاح کیا

پلوامہ //لفٹینٹ گورنر گریش چندر مرمو نے ترقیاتی مقاصد کے حصول کیلئے عملی عوامی شمولیت اور اضلاع کی کلہم ترقی کیلئے بہتر منصوبہ بندی پر زور دیا ۔ لفٹینٹ گورنر نے اس کا اظہار ضلع پلوامہ کے دورے کے دوران کیا جہاں وہ مختلف وفود اور عوامی نمائندوں کے ساتھ ملے اور انہیں درپیش مسائل سے موقعہ پر جانکاری حاصل کی ۔ انہوں نے 91.91 کروڑ روپے کی مالیت کے 19 ترقیاتی پروجیکٹوں کا ای افتتاح کیا اور متعدد پروجیکٹوں کا سنگِ بنیاد رکھا ۔ اُن کے ہمراہ لفٹینٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان ، رُکنِ پارلیمان نذیر احمد لاوے ، پرنسپل سیکرٹری زراعت و باغبانی ، ڈویژنل کمشنر کشمیر ، آئی جی پی کشمیر ، ڈپٹی کمشنر پلوامہ اور مختلف محکموں کے سربراہان تھے ۔ دورے کے دوران لفٹینٹ گورنر سے 20 وفود ملے جن میں پنچائتی راج ، بلدیاتی اداروں اور مختلف سیاسی جماعتوں کے نمائندگان ، میوہ اُگانے والے ، ڈیری شعبہ سے وابستہ کسان ، کو

ضلع بارہمولہ کے بیشتر علاقوں میں پا نی کی شدید قلت

بارہمولہ //ضلع بارہمولہ کے بیشتر علاقوںمیںپینے کے پا نی کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہا ہا کار مچی ہوئی ہے۔عوام کو گرمیوں کے ان ایام میں بھی سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔ضلع کے ٹنگمرگ ،پٹن ،سوپور ،رفیع آباد ، واگورہ ،کنڈی ،نارواو ،بونیار اور اوڑی کے متعدد دیہات کے لوگوں کو کہنا ہے کہ اُنہیں پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ انہوں نے جل شکتی محکمہ پر الزام عائد کر تے ہوئے بتا یا کہ محکمہ ہذا کی عدم توجہی کے سبب لوگ ندی نالوں کاناصاف پانی پینے پر مجبور ہیں۔ ایک مقامی شہری اشفاق احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ جل شکتی محکمہ کی طرف سے اگرچہ کئی سکیموں پرکام شروع کیا گیا تھا لیکن نامعلوم وجوہات کی بنا پر اُسے ادھورا چھوڑاگیا جس کے نتیجے میں ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو پینے کا صاف پانی میسر نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ کئی جگہوں پر پہلے ہی واٹر سپلائی سکیمیں موجود ہیں

بیگم اکبر جہاں کی20برسی پر انکے مرقد پر گلباری | نیشنل کانفرنس،عوامی نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کا خراج عقیدت

سرینگر// مرحوم شیخ محمد عبداللہ کی اہلیہ اور سابق ممبر پارلیمنٹ بیگم اکبر جہاں کی 20 ویںبرسی پرنیشنل کانفرنس سمیت دیگر سیاسی جماعتوں نے انہیں شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا۔نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق عبد اللہ، نائب صدر عمر عبد اللہ نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈرصوفی غلام رسول نے مرحومہ کے مقبرے وقع نسیم باغ حضرت بل سرینگر پر حاضری دی جبکہ شیخ محمد عبد اللہ کے مقبرے پر بھی فاتحہ خوانی اور گلباری کی۔ دونوں لیڈارن نے درگاہ حضرت بل میں حاضری دیکر اس مہلک وبا سے عالم انسانیت کو بچانے ا ور امن کے لئے دعا کی ہے ۔پارٹی کے سینئر لیڈراںر محمد اکبر لون، محمد سعید آخون،پیر آفاق،شیخ محمدرفیع،غلام نبی بٹ، صبیہ قادی، نے بھی مرحومہ کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کر کے مرحومین کے مرقدوں پر گلباری کی اورنکے خدمات کو یاد کیا ہے جو انہوں نے جموںو کشمیر کے عوام کیلئے کی ہیں ۔جموں میں بھی اس حو

بابامحلہ کلن میں فلٹریشن پلانٹ بیکار

کنگن//بابا محلہ کلن گنڈ میں فلٹریشن پلانٹ بیکار ہونے کی وجہ سے لوگ ندی نالوں کا پانی استعمال کرنے پر مجبور ہیں۔ کلن گنڈ کے لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ 2015 میں علاقے میں سیلاب کی وجہ سے بابا پورہ کلن میں قائم فلٹریشن پلانٹ بیکار ہوگیا تھا جس کے بعد اس علاقے کو ایک ندی سے پانی فراہم کیا جارہا تھا۔ مقامی لوگوں کے مطابق چندماہ بعد جل شکتی محکمہ نے فلٹریشن پلانٹ کی مرمت کرکے علاقے کو پانی کی سپلائی بحال کردی ۔ غلام حسن نامی ایک شہری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ تین سال قبل محکمہ جل شکتی نے بابا پورہ میں فلٹریشن پلانٹ پر کام شروع کیا لیکن ابھی تک کام مکمل نہیں کیا جس کی وجہ سے لوگ مضر صحت پانی پینے پر مجبور ہیں۔ لوگوں نے جل شکتی محکمہ کے حکام سے مطالبہ کیا کہ جب تک اس فلٹریشن پلانٹ کو شروع کیا جائے تب تک پرانے فلٹریشن پلانٹ کی تار بندی کی جائے۔  

مزید خبرں

 تدریسی نقصان کا ازالہ کرنے کیلئے اقدامات | سامون کا گاندربل میں محکمہ تعلیم کے ترقیاتی پروجیکٹوں کا معائنہ  گاندر بل//پرنسپل سیکرٹری محکمہ تعلیم و سکل ڈیولپمنٹ ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے گاندر بل ضلع کا دورہ کر کے وہاں تعلیمی شعبے کے تحت زیر تعمیر ترقیاتی پروجیکٹوں کا معائنہ کیا اور کووڈ 19 لاک ڈاؤن کے سبب تدریسی نقصان کا ازالہ کرنے کیلئے کئے جا رہے اقدامات و طریقہ کار کا جائزہ لیا ۔ ڈپٹی کمشنر گاندر بل ، ناظمِ تعلیم کشمیر ، ناظمِ سکل ڈیولپمنٹ ، ایڈیشنل کمشنر گاندر بل ، سی ای او گاندر بل اور دیگر متعلقہ افسران دورے کے دوران اُن کے ہمراہ تھے ۔ پرنسپل سیکریٹری نے 12 کلاس رومز پر مشتمل تین منزلہ عمارت کی تعمیر ، گورنمنٹ گرلز ہائیر سکینڈری سکول گاندربل کیلئے زیر تعمیر آرٹ کرافٹ رومز ، لائبریری اور سائنس بلاک ، گورنمنٹ پالی ٹیکنک کالج ہتبورہ کیلئے کیفٹیریا اور ورکشاپ عمارت اور

تازہ ترین