’پلازمہ تھرپی‘ کو منظوری دی گئی

 سرینگر //گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر میںضوابط سے متعلق کمیٹی نے کشمیر میں کورونا وائرس مریضوں کے علاج کیلئے ’’پلازمہ تھرپی‘‘ کو منظوری دی ہے۔ گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر میں شعبہ امراض چھاتی کے سربراہ اورپلازمہ تھرپی کے ماہر ڈاکٹر نوید نذیر شاہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ماہر امراض قلب ڈاکٹر خورشید عالم کی سربراہی میں کمیٹی کا اجلاس اتوار کو ہوا،جس میں زندگی کے مختلف طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے حصہ لیا ‘‘۔ڈاکٹر نوید نذیر شاہ نے بتایا ’’ اتوار کی میٹنگ میں کمیٹی نے کشمیر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کا علاج کرنے کیلئے پلازما تھرپی کو منظوری دی ‘‘۔ ڈاکٹر نوید نذیر نے بتایا ’’ مشینری جی ایم سی سرینگر میں موجود ہے اور اس کے علاوہ کٹ درکار ہونگے‘‘۔ڈاکٹر نوید نے بتایا ’&rsquo

اننت ناگ میں ہولناک آگ م 6رہائشی مکانات خاکستر

اننت ناگ//اننت ناگ قصبہ میں آگ کی ایک ہولناک واردات میں6رہائشی مکانات خاکستر ہوگئے۔پوش محلہ اننت ناگ میں پیر کی صبح ایک رہائشی مکان سے آگ نمودار ہوئی جس نے بعداذاں نزدیکی 5 رہائشی مکانوں کو اپنی لپیٹ میں لیا۔اس بیچ آگ بجھانے والے عملہ ،مقامی لوگ ،پولیس جائے موقعہ پر پہنچ گئے اور آگ بجھانے کے لئے کاروائی شروع کی ۔کئی گھنٹوں کی کوشش کے بعد آگ کو مزید پھیلنے سے روک دیا گیاتاہم اس واردات میں غلام احمد پالہ ،شوکت احمد خان ،محمد اقبال بٹ ،منظور احمد بٹ اور فیاض احمد بٹ کے 6رہائشی مکانات خاکستر ہوئے ۔محکمہ فائر سروس کے ایک آفیسر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ آگ بجھانے کی کارروائی میں محکمہ کے 7فائر ٹینڈر شامل ہوئے اور3گھنٹوں کی مشقت کے بعد آگ پر قابو پالیا گیا ۔پولیس نے معاملے کی نسبت کیس درج کرلیا ہے۔  

پینے کے صاف پانی کا ناجائز استعمال

گاندربل//صفاپورہ میں جل شکتی محکمہ اور پولیس کی مشترکہ کارروائی کے دوران درجنوں پانی کے پمپ ضبط کئے گئے۔کئی علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی قلت واقع ہونے کے بعد متعلقہ محکمہ نے اپنی کارروائیاں تیز کردی ہیں۔ محکمہ کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ اس کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ خودغرض افراد پینے کے صاف پانی کا ناجائز استعمال کرتے ہیں جس کے نتیجے میں باقی آبادی کومشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔محکمہ جل شکتی اور پولیس کی مشترکہ کارروائی کے دوران صفاپورہ کے شیخ محلہ اور وانی محلہ سے درجنوں پانی کے موٹر اور پائپوں کو ضبط کیا گیا۔اس سلسلے میں محکمہ کے اہلکاروں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ پینے کا صاف پانی کھیت کھلیان،کچن گارڈناور گاڑیاں دھونے کے لئے استعمال کرنا سراسر غیر قانونی اور ناجائز ہے ۔انہوں نے کہا کہ دو روز میں 40 سے زائد پانی کے موٹر اور دیگر سامان ضبط کیا گیا اور یہ کارروائی آگے بھی جاری رے گ

ڈورو شاہ آباد میں چوکیدار ایسوسی ایشن کا احتجاج

اننت ناگ//اننت ناگ ضلع کے ڈورو شاہ آباد میں ایس ڈی ایم آفس کے سامنے جموں و کشمیر چوکیدار ایسوسی ایشن نے احتجاج کرتے ہوئے مشاہرہ بڑھانے کا مطالبہ کیا۔ ایسوسی ایشن کے صدر بشیر احمد شیخ نے کہا کہ وہ بہت کم مشاہرے کے عوض اپنا کام انجام دیتے ہیں ،اس کے علاوہ کورونا وائرس کے باعث ان پر مزید ذمہ داریاں عائد ہوئی ہیں جن کو وہ خوش اسلوبی سے انجام دے رہے ہیں ،تاہم مہنگائی کے اس دور میں قلیل مشاہرے پر گھر کے اخراجات کو پورا کرنا دشوار ہورہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ملک کی دیگر ریاستوں اور زیرانتظام علاقوںمیں چوکیداروں کو مشاہرے کے طور پر اچھی رقم دی جاتی ہے ،تاہم جموں کشمیر میں ماہانہ1500روپئے دئے جاتے ہیں  جو انتہائی قلیل ہے ۔اُنہوں نے لیفٹنٹ گورنر جی سی مرمو انتظامیہ سے مداخلت کی اپیل کی۔  

۔1994سے لیکر2015تک تعینات عارضی ملازمین | ملازمتوں کو مستقل کیا جائے،ایجیک (جی) کا مطالبہ

سرینگر// عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کے حق میں ملازمین انجمنوں اور پلیٹ فارموں کی جانب سے مسلسل مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ عرصہ دراز سے سرکاری محکموں میں کام کر رہے ڈیلی ویجروں اور کیجول ورکروں کو باقاعدہ بنایا جائے۔ سرینگر کے ایوان صحافت میں ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ایک اور دھڑے نے سبکدوش اور عارضی ملازمین کے مسائل کا ازالہ کرنے کا مطالبہ کیا۔ ایجیک(جی) کے جنرل سیکریٹری  سید غلام رسول گیلانی نے سرکار پر زور دیا کہ1994سے لیکر2015تک کے تمام عارضی ملازمین کو مستقل کیا جائے اور ایس آر ائو520کو کالعدم قرار دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ان عارضی ملازمین میں ڈیلی ویجر،کیجول لیبر،مشروط ادائیگی و معاہدوں پر کام کرنے والے ملازمین کے علاوہ مختلف مرکزی و مقامی اسکیموں  کے تحت کام کرنے والے ملازمین کے علاوہ وہ لوگ بھی شامل ہیں،جنہوں نے سرکاری پروجیکٹوں کیلئے اپنی اراضی وقف کی ہے۔ غلام رسو

کپوارہ میں آندھی سے 6مکانوں کی چھتیں اُڑگئیں

کپوارہ// کپوارہ میں اتوار کی شام دیر گئے تیز آندھی اور طو فانی ہوائو ں نے تباہی مچا دی ۔معلوم ہو اہے کہ ضلع کے راجواڑ ،آہگام ،قلم آ باد ،ماور بالا ،لنگیٹ اور کھنہ بل علااقوں میں 6رہائشی مکانوں کے چھتو ں کو نقصان پہنچا جبکہ کھیت کھلیانو ں میں کھڑی فصلوں کے علاوہ میوہ با غات کو بھی شدید نقصان پہنچا ۔ضلع کے متعدد علاقوں میں بجلی کی سپلائی بھی رات بھر متا ثر ہوئی ۔ان علاقوں کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ امسال اپریل کے اوئل سے ہی ضلع میں کئی بار شدید ژالہ باری ہوئی جس کے نتیجے میں ان کے میو ہ باغات کو پہلے ہی نقصان پہنچ چکا ہے جبکہ رہی سہی کسر اتوار کی تیز آندھی اور طو فانی ہوائوں نے پوری کر دی ۔لوگو ں کا کہنا ہے تیزی آندھی نے اس قدر تباہی مچا دی ہے کہ میو ہ درختوں سے پھل گر کر تباہ ہو گیا جبکہ اخروٹ کی فصل کو بھی تیزی آ ندھی اور طوفانی ہوائو ں سے نقصان پہنچا ۔  

کولگام میں دوشیزہ کیساتھ مبینہ زیادتی کیخلاف احتجاج

اننت ناگ //کولگام میں دوشیزہ کے ساتھ مبینہ جنسی زیادتی کے خلاف لوگوں نے زبردست احتجاج کیااور اس جرم میں ملوث افراد کوکڑی سزادینے کا مطالبہ کیا۔اس دوران محکمہ تعلیم نے تین اساتذہ کوتحقیقات مکمل ہونے تک معطل کیا ہے۔اطلاعات کے مطابق کولگام میں دوشیزہ نے اُستاد پر جنسی ہراسانی کا الزام عائد کیا ہے ،جس کے بعد محکمہ تعلیم نے3اساتذہ کو تحقیقات مکمل ہونے تک معطل کیا ہے ۔چچی مولہ دمہال ہانجی پورہ کولگام کی رہنی والی20سالہ دوشیزہ(نام مخفی)نے پولیس اسٹیشن دمہال ہانجی پورہ میں تحریری شکایت درج کی کہ اُسے ہلال احمد ڈار جو کہ اُستاد ہے، نے اپنے دو دیگر ساتھیوں کی مدد سے اُس وقت اپنی ہوس کا شکار بنایا ،جب وہ کھیت میں کام کر رہی تھی ۔لڑکی کے مطابق ملزم نے بہیوش کر کے اُس کے ساتھ جنسی زیادتی کی ۔اس بیچ پولیس نے تعزیرات ہند کے دفعات366/376کے تحت کیس زیر نمبر109/2020 درج کیاہے۔ پولیس نے گھنائونی حرکت میں

مزید خبرں

نئی میڈیا پالیسی کو منسوخ کرنے کاسیاسی جماعتوں کا مطالبہ  سرینگر// اپنی پارٹی ،کمیونسٹ پارٹی آف انڈیااورپیپلزڈیموکریٹک فرنٹ نے حکومت کی نئی میڈیا پالیسی کی نکتہ چینی کرتے ہوئے صحافیوں کے ساتھ یکجہتی کااظہار کیا ہے اور اس پالیسی کو فوری طور واپس لینے کا مطالبہ کیا۔کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا(مارکسسٹ)کے رہنما یوسف تاریگامی نے نئی میڈیا پالیسی کوآزادی رائے اوراظہار کاگلاگھونٹنے سے تعبیر کیا ہے ۔ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ نئی میڈیا پالیسی نے صحافیوں میں بے چینی پیداکی ہے کیوں کہ اس کا مقصدجموں کشمیرمیں صحافیوں کی آوازکودبانا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت اور اس پالیسی کو تیار کرنے والوں کو سمجھنا چاہیے کہ ذرائع ابلاغ جمہوریت کاچوتھا ستون ہے اوردیگرستونوں کے ہم پلہ ہے.۔انہوں نے کہا کہ اس پالیسی کے تیار کرنے والوں نے واضح کیا ہے کہ وہ صحافیوں کو قارئین اور ایڈیٹرس کے سامنے جوابدہ بنانا

تازہ ترین