،ک ڈائون کا 58واں دن،سڑکوں پر لوگوں کی آمد و رفت میں اضافہ

سرینگر// پیر کو ملک گیرلاک ڈائون کا 58واں دن تھا۔ لیکن مجموعی طور پر وادی میں لاک ڈائون کے 2ماہ مکمل ہوچکے ہیں کیونکہ کشمیر میں جنتا کرفیو سے ہی بندشین عائد ہیں اور لوگ گھروں میں محصور ہیں ۔اب پورے ملک میں لاک ڈائون کا چوتھا مرحلہ شروع ہوگیا ہے اور یہ وادی میں تیسرے مہینے میں داخل ہوچکا ہے۔مجموعی طور پر وادی میں شہر سرینگر اور دیگر اضلاع کے علاوہ قصبوں اور دیہات میں ایک جیسی صورتحال ہے۔البتہگزشتہ چنددنوں سے وادی میں قدرے نرمی برتی جارہی ہے تاکہ لوگ عید کی مناسبت سے خریداری کر سکیں۔اگر چہ سبھی کاروباری و تجارتی مراکز، شاپنگ مال اور دیگر مارکیٹ بند ہیں تاہم کہیں کہیں اکا دکا دکانیں کھل رہی ہیں اور زیادہ تر دکانداروں نے گھروں میں ہی مال رکھ کر اسے فروخت کرنے کا سلسلہ شروع کردیا ہے۔شہر سرینگر اور وادی کے دیگر علاقوں میں پرائیویٹ گاڑیوں کی آمد و رفت میں غیر معمولی اضافہ ہوگیا ہے اور یہ صور

بجبہاڑہ ہسپتال سے 27کورونا مریض صحتیابی کے بعد رخصت

؎ اننت ناگ//ٹراما اسپتال بجبہاڑہ میں زیر علاج 27کورونا وائرس مریضوں کو صحتیابی کے بعد گھر روانہ کیا گیا ۔ مریضوں کو گھر روانہ کرنے کے موقع پر ڈپٹی کمشنر اننت ناگ بشیر احمد ڈار، چیف میڈیکل آفیسر اننگ ناگ، ڈیٹی چیف میڈیکل آفیسر اننت ناگ، ایس ڈی ایچ بجبہاڑہ کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ کے علاوہ مریضوں کے تیماردار موجود تھے۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر اننت ناگ بشیر احمد ڈار نے بتایا ’’ ضلع میں صحتیاب ہونے والے کورونا وائرس مریضوں کی کل تعداد61ہوگئی ہے جن میں سے50سب ضلع اسپتال بجبہاڑہ میں صحتیاب ہوئے‘‘۔ بشیر احمد ڈار نے اس موقع پر ایس ڈی ایچ بجبہاڑہ کے طبی و نیم طبہ عملہ کی سراہنا کی جنہوں نے مریضوں کی صحتیابی کیلئے 24گھٹے مسلسل  کام کیا۔ یہ بات قبل ذکر ہے کہ ضلع اننت ناگ میں محض 34دنوں کے دوران کورونا وائرس مریضوں کی تعداد 236ہوگئی ہے جن میں سے 61صحتیاب ہوگئے ہیں اور اسط

پولیس ٹریننگ سنٹر منیگام میں آگ | سات دہائی پرانی عمارت خاکستر

گاندربل//پولیس ٹریننگ سینٹر منیگام میں بجلی شارٹ سرکٹ ہونے کے باعث سات دہائی پرانی ایک عمارت خاکستر ہوگئی۔سوموارکی  شام افطار ہونے کے فوراً بعد آٹھ بجکر آگ نمودار ہوئی جس نے پوری عمارت کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔عمارت کے اندر دیودار کی لکڑی لگی تھی اور اس وقت محکمہ صحت کے لئے استعمال کی جاتی تھی۔اگ کی واردات میں عمارت اور اس میں موجود سارا سازوسامان مکمل طور پر خاکستر ہوگیا۔ اگرچہ محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی نے کنگن، گاندربل سے پانچ فائر ٹینڈر آگ بجھانے کی کارروائی میں مصروف تھے تاہم 1952 میں تعمیر کئی گئی یہ عمارت 15منٹ میںخاکستر ہوگئی۔  

بجلی کی عدم دستیابی | شتکڑی سونہ مرگ کی بستی کا احتجاج

کنگن/سونہ مرگ کے شتکڑی میں خواتین نے سرینگر لیہ شاہراہ پر محکمہ بجلی کے خلاف احتجاجی دھرنا دیکر گاڑیوں کی آمد رفت روک دی۔ احتجاجی خواتین کا کہنا تھا کہ شتکڑی کو اگرچہ گذشتہ کئی برسوں سے بجلی ٹرانسفارمر اور بجلی کھمبوں سے فراہم کی جاتی تھی۔ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ جب سے اس بستی کو زیر زمین بجلی سپلائی فراہم کی گئی تب سے بستی کے ہر گھر کے نلو سے بجلی کرنٹ پیدا ہوگئی ہے اور اب لوگ نالہ سندھ سے پینے کا پانی لاکر استعمال کرتے ہیں ۔مقامی خاتون نے بتایا کہ گذشتہ روز ایک بچے نے اچانک گھر میں پانی پینے کے لئے نل کو ہاتھ لگایا تو ?س کو کرنٹ لگ گیا جس کی وجہ سے وہ  بعد اذاںایس ایچ او پولیس تھانہ سونہ مرگ لطیف علی موقع پر پہنچ گئے اور احتجاجی خواتین کو دھر ختم کرنے پر آمادہ کیا۔  

کپوارہ میں معمولات زندگی ٹھپ

کپوارہ//کورونا وائرس کی دہشت اور لاک ڈائون کی وجہ سے تعمیرو ترقی کی رفتار تھم گئی ہے ۔ضلع میں مزدورو ں کے ساتھ ساتھ چھوٹی بڑی مسافر گاڑیو ں کے ڈرائیور اور کنڈیکٹر تذبذب کا شکار ہیں۔ ورکشاپو ں میں گاڑیا ں ٹھیک کرنے والے ماہرین اپنے ہی گھرو ں میں بے یارو  مدد گار اس انتظار میں بیٹھے ہیں کہ لاک ڈائون کا اختتام کب ہو گا اور وہ دوبارہ اپنے ورز گار کی تلاش میں نکل پڑیں ۔ضلع کپوارہ میں تعمیراتی سر گرمیاں گزشتہ2ماہ سے ٹھپ ہیں جس کی وجہ سے ہزارو ں گلکار ،ترکھان ،مزدور اور لوہار بھی گھرو ں میں معاشی اور بد حالی کی مار جھیل رہے ہیں ۔  

پانپور میں12غیر قانونی تعمیراتی ڈھانچے منہدم

پلوامہ //ضلع انتظامیہ پلوامہ نے پانپور میں 12غیر قانونی تعمیراتی ڈانچوں کو منہدم کر کے یہاں سرکاری اراضی کے ایک پلاٹ سے قبضہ ختم کیاہے ۔ضلع انتظامیہ پلوامہ نے تجاوزات کے خلاف انہدامی مہم جاری رکھتے ہوئے پانپور کے تل باغ علاقے میں غیر قانونی طور تعمیرکی گئی 12دکانیں منہدم کیں۔ڈپٹی کمشنر پلوامہ ڈاکٹر راگو لنگر نے اپنے ماتحت عملے کے ہمراہ تل باغ پانپور پہنچ کر یہ کارروائی عمل میں لائی ۔ انہوں نے بتایاکہ کارروائی کے دوران اراضی کے ایک بڑے حصے سے ناجائز قبضہ بھی ہٹا لیا گیا ۔انتظامیہ کے ایک سینئرافسر نے بتایا کہ اس موقع پر کچھ لوگوں نے پتھرائو کرنے کی کوشش کی اورکچھ وقفہ کے لئے انہدامی کارروائی کو روکنا پڑا تھا اور بعد میں فورسز کی مزید نفری کو یہاں لایا گیا اور کاروائی دوبارہ شروع کی گئی ۔انکے ہمراہ تحصیلدار پانپور ،ڈی ایس پی اور سیول انتظامیہ کے دیگر افسران بھی تھے۔  

ٹنگمرگ میں ڈیلی ویجر تنخواہوں سے محروم

 ٹنگمرگ//محکمہ وائلڈ لائف ٹنگمرگ کے ڈیلی ویجر ملازمین نے گزشتہ ایک سال سے رکی پڑی تنخواہ ادا نہ کرنے پر محکمہ کے خلاف خاموش احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ دیگر ملازمین کی طرح ڈیوٹی بخوبی انجام دیتے ہیں تاہم گزشتہ ایک سال سے اُن کی تنخواہیں بند ہیں۔ٹنگمرگ میں تعینات محکمہ وائلڈ لائف کے ڈیلی ویجر ملازمین نے ایک سال کی رکی پڑی اجرتیں عید سے قبل ادا کرنے کا مطالبہ کیا ۔  

کوکر ناگ کے نظربندنوجوان کی علیل ماں کوبیٹے کی رہائی کی آس

اننت ناگ//کوکرناگ کے دھن ویٹھ گائوں کے طارق احمد،جوگزشتہ ڈیڑھ برس سے جیل میں نظر بند ہے،کی والدہ سخت علیل ہے اور وہ جیل میں نظر بند اپنے لخت جگر کی رہائی کی آس لگابیٹھی ہے۔ 31سالہ طارق احمد ملک ولد نزیر احمد7مارچ2019سے کٹھوعہ جیل میں نظر بند ہے ۔ پیشے سے ڈرائیور نظر بند نوجوان بوڑھے والدین ،کمسن بچہ،اہلیہ اور 3بہنوں کا بھائی ہے ۔ماں گذشتہ ایک سال سے جگرکی بیماری میں مبتلا ہے اور ڈاکٹروں کے مطابق مرض آخری اسٹیج پر ہے ۔ کشمیر عظمیٰ کو اپنی روئیداد سناتے ہوئے نظر بند نوجوان کی بیمار ماںنے روتے بلکتے ہوئے کہا کہ اُن کا بیٹا گذشتہ ڈیڑھ سال سے کھٹوعہ جیل میں پی ایس اے کے تحت نظر بند ہے ۔نظر بند رہنے کے سبب میرا جگر خراب ہوگیا ہے اور وہ زندگی کی آخری سانسیں گن رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ موت آنے سے پہلے میں وہ اپنے لخت جگر سے ملنا چاہتی ہے ۔اُنہوں نے بتایا میرا بیٹا جرم بے گناہی کی سزا کاٹ رہا

ایمبولینس ڈرائیورکی مارپیٹ | شوپیان اسپتال میں ڈرائیوروں کا احتجاج

شوپیان/شوپیان میں فورسزکے ہاتھوں ایک ایمبولنس ڈرائیور کو مبینہ طور تختہ مشق بنانے کے خلاف ضلع کے سبھی ایمبولینس ڈرائیوروں نے احتجاج کیا۔تفصیلات کے مطابق طارق احمد نامی ایک یمبولینس ڈرائیورکواتوار شام کوضلع پلوامہ میں فورسزاہلکاروں نے روکااور اُس کی مارپیٹ کی۔ضلع کے ایمبولینس ڈرائیوروں نے ضلع اسپتال شوپیان کا مین گیٹ بند کرکے اس کے خلاف احتجاج کیااور قصورواراہلکاروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔ا س حوالے سے چیف میڈیکل افسر شوپیان نے بتایا کہ اتوار شام دیرگئے ہماراایک ایمبولینس ڈرائیورقرنطینہ سے ایک شخص کولانے کیلئے گیاتھاجس دوران فورسزاہلکاروں نے اُسے روک کراس کی مارپیٹ کی۔انہوں نے کہا کہ ہم نے یہ معاملہ ڈپٹی کمشنر شوپیان کی نوٹس میں لایا۔   

میاں قیوم پرایکٹ کااطلاق | عدالت عالیہ نے فیصلہ محفوظ رکھا

سرینگر// عدالت عالیہ نے بار ایسو سی ایشن کے صدر ایڈوکیٹ میاں عبدالقیوم پر عائد پی ایس ائے کے تحت نظربندی کو منسوخ کرنے پر دائر عرضداشت پر اپنے فیصلے کو محفوظ رکھا۔ایڈوکیٹ میاں عبدالقیوم کو گزشتہ برس5 اگست کو حراست میں لیا گیا تھا۔ عدالت عالیہ کے سنگل بینچ کی طرف سے ایڈوکیٹ میاں عبدالقیوم پر ’پی ایس اے‘ کو منسوخ کرنے کی عرضی کو خارج کرنے کے فیصلے کے خلاف جسٹس علی محمد ماگرے اور جسٹس ونود کوہلی  پر مشتمل ڈویژن بینچ  کے پاس اپیل کی عرضی پر ڈویژن بینچ نے فیصلہ محفوط رکھا۔ اس کیس کی سماعت ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے ہوئی۔اس دوران عدالت نے سینئر ایڈیشنل ایڈوکیٹ  جنرل بی اے ڈار کو پیر کے روز ہدایت دی کہ وہ متعلقہ نظربندی کے ریکارڈ کے علاوہ ایف آئی آروں کی ترجمہ والی کاپیاں از خود راجسٹرار جوڈیشل کے ذریعے پیش کریں۔ بار صدر ایڈوکیٹ میاں عبدالقیوم  کی پیروی سینئر و

مزید خبریں

’شب قدر،جمعتہ الوداع اورعید الفطر پر مذہبی اجتماعات نہیں ہوں گے‘  بصیر خان کی ڈپٹی کمشنروں ، سی ایم اوز کے ساتھ ویڈیو کانفرنس   جموں//جموں کشمیرمیں شب قدر،جمعتہ الوداع اور عید الفطر کے موقعہ پر مذہبی اجتماعات کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔اس بات کااظہار لیفٹینٹ گورنر کے مشیربصیراحمدخان نے  ڈپٹی کمشنروں ، چیف میڈیکل آفیسروں ، ڈائریکٹر سکمز سری نگر اور ڈائریکٹر سکمز بمنہ کے ساتھ کووِڈ۔19 وَبا کے مزید پھیلائو پر روک لگانے کے لئے اُٹھائے جارہے اقدامات اور متعلقہ ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت کی تیاریوں کا جائزہ لینے کے لئے ایک ویڈیو کانفرنس کے دوران کیا۔میٹنگ میں آئی جی کشمیر ، ڈائریکٹر محکمہ صحت کشمیر ، پرنسپل جی ایم سی اور ڈائریکٹر ائیرپورٹ سری نگر موجود تھے۔دوران میٹنگ مشیر نے کہا کہ کووِڈ۔19وَبا کے پھیلائو پر روک لگانے کے لئے اِنتظامی اور علاج و معالج

تازہ ترین