تازہ ترین

نظم و ضبط کامیاب طرز ِ زندگی کی کلید

نظم وضبط کسی معاشرے کے قیام کی پہلی شرط ہے۔ انسان کی زندگی کو منظم، پُرسکون، کامیاب بنانے اور مطلوبہ نتائج کے حصول میں نظم و ضبط بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔ زندگی میں اس کی اہمیت سے انکار ناممکن ہے بلکہ یوں کہا جائے کہ نظم و ضبط کے بغیر ایک اچھے معاشرے کا تصور ہی محال ہے۔زندگی میں اکثر پریشانیاں،مشکلات،محرومیاںاور ناکامیاں نظم وضبط کے فقدان کا نتیجہ ہوتی ہیں۔ انسانی طرز زندگی میں مثبت تبدیلیاں پیدا کرنے ، وقت اور سرمایہ کو ضائع ہونے سے بچانے میں ڈسپلن کوایک منفرد مقام حاصل ہے ۔ نظم و ضبط کی متعدد تعریفیں بیان کی گئی ہیں۔بامقصد سرگرمیوں میں ترجیحات کی بنیاد پر لائحہ عمل کے تعین کو نظم و ضبط کہتے ہیں۔ بہ الفاظ دیگر نظم و ضبط تدبیر اور کام کی تقسیم اور مستقبل میں اسے انجام دینے کے فیصلے سے عبارت ہے۔ کام کی انجام دہی سے قبل تدبیر اور منصوبہ بندی آدمی کو پشیمانی سے محفوظ رکھتی ہے۔ انسان

عصر ِحا ضر میں مطا لعہ سیرتؐ کی ا ہمیت و مقصدیت

حضور خاتم النبین حضرت محمد ﷺ کے تشریف لانے سے پہلے بھی ہر زمانے اور ہر ملک میںنبیؑ اور رسولؑ بھیجے گئے اور وہ پیغمبر مخصوص اپنی اپنی قوموں کی ہدایت کے لئے بھیجے گئے۔ اور آخر میںنبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو رحمت اللعالمین بنا کے بھیجا گیا تا کہ وہ پوری  دنیا کے لیے قیامت کے دن تک اپنی زندگی  یا سیرت نمو نے کے طور پر چھوڑجائیں۔جب نبی اکرمؐ کو یہ مقام حاصل ہوا تو پھر ہما رے لئے ،ہم سے پہلے اور بعد میں آنے والے لوگوں کے لیے ضروری ہو گیا کہ ہم حضو اکرمؐ کی زندگی جسے ہم ’’سیرت ‘‘ کی مخصوص اصطلاح سے مو سوم کرتے ہیں سے اپنے ہر چھوٹے اور بڑے مسلے کے حل اور دین ودنیا کی کا میا بی حاصل کر نے کے لیے نصیحت یا سبق حا صل کریں۔حضور رسالت مآبؐ کی سیرت کا مطالعہ تاریخ کی کسی کتاب کا مطا لعہ نہیں ،بلکہ یہ قرآن مجید کے اصولوں اور احادیث مبارک  کے قانون کی صحیح