تازہ ترین

ایک دن میں اضافہ کے بعد کورونا وائرس میں پھر کمی

نئی دہلی// ملک میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 59 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے ، لیکن اس جان لیوا وبا کو شکست دینے والوں کی تعدادبھی بہت تیزی سے بڑھ رہی ہے ، جس کی وجہ سے ایک دنکے بعد اس کے فعال کیسز میں کمی درج کی گئی ہے ۔ملک میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ، کووڈ ۔19 کے ایکٹیو کیسز کی تعداد نو ہزار سے زیادہ کم ہوگئی جس سے مریضوں کی مجموعی تعداد کم ہو کر تقریبا 9.61 لاکھ رہ گئی۔ اس سے قبل جمعہ کے روز ملک میں صحت مند ہونے والوں سے 3437 زیادہ تھی۔ ملک میں جمعہ سے قبل لگاتار چھ دن تک صحت مند افراد کی تعداد اس وبا کا شکار ہونے والے نئے افراد کی تعداد سے زیادہ تھی ، جس کی وجہ سے فعال کیسز کی تعداد میں کمی آئی ہے ۔مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کی جانب سے ہفتہ کے روز جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے 85،362 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور 93،420 مر

ایک دن میں 13 لاکھ ٹیسٹ ہوئے

نئی دہلی// گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں کورونا وائرس کووڈ ۔19 کی جانچ کرنے والی لیبارٹریوں کی تعداد مزید پانچ بڑھ کر 1،823 ہوگئی ہے اور ان تمام لیبارٹریوں نے مل کر اس دوران 13،41،535 نمونوں کی جانچ کی ۔انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ کی جانب سے ہفتہ کے روز جاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کی جانچ کرنے والی لیبارٹریوں کی فہرست میں مزید پانچ نام شامل کئے گئے ہیں ۔ ان میں سرکاری 1،086 اور پرائیوٹ 737 لیبارٹریاں ہیں۔فی الوقت آر ٹی پی سی آر پر مبنی ٹیسٹنگ لیبارٹریاں 926 ( سرکاری- 478 ، پرائیوٹ - 448 ) ہیں جبکہ ٹرو نیٹ پر مبنی ٹیسٹنگ لیبارٹریوں کی تعداد 771 (سرکاری: 574 ، پرائیوٹ: 197) اور سی بی این اے ٹی پر مبنی لیبارٹریاں 126 ( سرکاری: 34 ، پرائیوٹ: 92)) ہیں ۔ ان 1،823 لیبارٹریوں نے 25 ستمبر کو 13،41،535 نمونوں کی جانچ کی ۔ اس طرح اب تک مجموعی طور پر سات کروڑ

حکومت نہ صرف کسانوں بلکہ مزدوروں کے استحصال کا قانون بھی لے کر آئی: کانگریس

نئی دہلی// کانگریس نے مودی حکومت کو کسان اور مزدور مخالف قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کے مانسون سیشن میں کسانوں کے لئے تین سیاہ قانون بنانے کے ساتھ ہے اس نے مزدوروں کے مفادات کو نظرانداز کرکے ان کا استحصال کرانے والے تین بل بھی پاس کرائے گئے ۔کانگریس کے سینئر لیڈر اورسابق مرکزی لیبر وزیر ملک ارجن کھڑگے ، کانگریس کے ترجمان پون کھیڑااور کانگریس سے تعلق رکھنے والے مزدور تنظیم انٹیک کے چیئرمین ڈاکٹر سنجیو ریڈی نے سنیچر کو یہاں مشترکہ نامہ نگاروں کی کانفرنس میں کہا کہ حکومت نے مزدوروں سے متعلق جو تین بل پارلیمنٹ میں پاس کرائے ہیں ان میں مزدوروں کے مفادات کو پوری طرح سے نظرانداز کیا گیا ہے اور کام کی شرائط اور دیگر سہولتوں پر توجہ نہیں دی گئی ہے ۔ یہ تینوں قوانین مزدوروں کا استحصال کرنے اور صنعت کاروں کے مفادات میں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان تینوں قوانین کو حکومت جس طرح سے پاس کرنا چاہتی تھ

زرعی و مزدور بل کسانوں و مزدوروں کے مفاد پر کاری ضرب : ڈاکٹر انصاری

پرتاپ گڑھ //حکومت کے ذریعہ دونوں ایوانوں سے زرعی و مزدور بل پاس ہونا کسانوں و مزدوروں کے مفاد پر کاری ضرب ہے ۔اس قانون سے جہاں زراعت کے نجی سیکٹر میں جانے سے پیداوار کی صحیح قیمت کسانوں کو موصول نہیں ہوگی ،وہیں دوسرا بل سرمایہ داروں کے مفاد میں مزدوروں کو غلام بنانے والا قدم ہے ۔ دونوں بل کسان مزدور کے مفاد میں نہیں ہے ۔پیس پارٹی کے قومی نائب صدر ڈاکٹر عبدالرشید انصاری نے جاری بذریعہ پریس ریلیز بیان میں مذکورہ تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے صدر جمہوریہ سے دونوں بلوں کو واپس کرنے کا مطالبہ کیا ۔ڈاکٹر انصاری نے کہا کہ حکومت نے دونوں ایوانوں سے دونوں سیاہ قانون کے بلوں کو پاس کراکر منظوری کے لیئے صدر جمہوریہ کو بھیجا ہے ۔صدر جمہوریہ کی مہر لگ جانے کے بعد قانون بن جانے سے اس کے نتائج کسانوں و مزدوروں کے برعکس ہوں گے ۔اس میں صرف سرمایہ داروں کو فائدہ ہوگا ۔حکومت عوام ،کسان و مزدوروں کے مفاد میں

نتیش کمار سے آدھے سے زیادہ بہار ناراض

 پٹنہ//بہار میں اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان ہو چکا ہے اور اس کے ساتھ ہی ان انتخابات کو لے کر سروے بھی سامنے آنے لگے ہیں۔ خبر رساں ادارہ آئی اے این ایس کے ساتھ کیے گئے سی-ووٹر کے سروے میں سامنے آیا ہے کہ بہار کے نصف سے زیادہ ووٹر وزیر اعلیٰ نتیش کمار سے ناراض ہیں۔ حالانکہ وہ جس اتحاد یعنی این ڈی اے کا حصہ ہیں اس کی جیت کی امید بھی سروے میں ظاہر کی گئی ہے۔بہار کے 25 ہزار سے زیادہ ووٹروں کے درمیان سبھی 243 اسمبلی حلقوں میں پہلی سے 25 ستمبر کے درمیان کیے گئے اس سروے میں اقتدار مخالف لہر سامنے آئی ہے۔ سروے کے مطابق 56.7 فیصد جواب دہندگان نے کہا کہ وہ نتیش کمار کی حکومت سے ناراض ہیں اور بدلاؤ چاہتے ہیں۔ 29.8 فیصد لوگوں نے کہا کہ وہ ناراض ہیں لیکن بدلاؤ نہیں چاہتے۔ 13.5 فیصد لوگ ایسے ہیں جنھوں نے کہا کہ وہ نتیش کمار کی حکومت سے ناراض نہیں ہیں۔سروے کے مطابق وزیر اعلیٰ نتیش ک

تازہ ترین