کورونا وائرس|مزید 13موت کی آغوش میں

 سرینگر //جموں و کشمیر میں کوروناوائرس سے ایک سینئر کے ائے ایس افسر سمیت مزید 13متاثرین فوت ہوگئے اور اس طرح متوفین کی تعداد بڑھکر378ہوگئی ۔ ان میں سے 28جموں جبکہ 350کشمیر صوبے سے تعلق رکھتے ہیں۔ جمعہ کو مزید 490افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ اسطرح متاثرین کی تعداد 20ہزار کا ہندسہ پار کرکے 20359ہوگئی جن میں سے 4444جموں جبکہ 15915کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ تازہ متاثرین میں سے 128سرینگر، 24بارہمولہ، 11کولگام، 8شوپیان، 21اننت ناگ، 9کپوارہ، 85پلوامہ، 29بڈگام، 22بانڈی پورہ، 10گاندربل، 43 جموں، 11 کٹھوعہ، 24راجوری، 24ادھمپورہ،ایک رام بن، 18سانبہ، 1پونچھ، 1کشتواڑ اور 20ریاسی سے تعلق رکھتے ہیں۔  13اموات  جموں و کشمیر میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران13افراد کورونا وائرس کی وجہ سے فوت ہوگئے۔ ان میں سے 6سرینگر،2پلوامہ، ایک بانڈی پورہ، ایک بڈگام ، ایک کپوارہ اور 2جموں میں فوت ہوئے۔مح

سینئرکے اے ایس افسر تصدق جیلانی فوت

 سرینگر //سینئر کے ائے ایس افسر اور محکمہ سماجی بہبود کے سپیشل سیکریٹری تصدیق جیلانی جے وی سی بمنہ میں کوروناوائرس سے زندگی کی جنگ ہار گئے۔ پرنسپل جے وی سی بمنہ ڈاکٹر ریاض انتو نے بتایا ’’تصدق جیلانی کورونا وائرس سے لڑنے کے بعد پیدا ہونے والی بیماری کی وجہ سے فوت ہوگئے‘‘۔ڈاکٹر ریاض انتو نے بتایا ’’ موت کی  اصل وجہ سانس لینے میں مشکلات کے بعد حرکت قلب بند ہونا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا’’ تصدیق جیلانی کو 14 جولائی کو اسپتال میں داخل کیا گیا لیکن وہ  اسپتال میں 18دنوں تک زیر علاج  رہنے کے بعد جمعہ کو دیر شام گئے فوت ہوگئے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ جیلانی شوگر کی بیماری میں مبتلا تھے اورآئی سی یو میں زیر علاج تھے۔ ادھر گورنر گریش چندر مرمو،گورنر کے مشیر  فاروق احمد خان،گورنر کے مشیر راجیو رائے بٹناگر، ڈی سی

عیدالاضحیٰ آج

سرینگر//وادی میں کرونا وائرس کے پھیلائو کے بیچ آج سنیچر کو عید الضحیٰ منائی جارہی ہے،تاہم عید پر بڑے اجتماعات کا اہتمام کرنے کی اجازت نہیں دی گئی ہے۔کشمیر میں مسلسل تیسری عید ہے جس میں روایتی گہما گہمی اور چہل پہل دیکھنے کو نہیں ملے گی۔عالمگیر وبائی بیماری کرونا وائرس کے پھیلائو اور اموات میں اضافے کے نتیجے میں عید الضحیٰ کی خوشیاں پھیکی پڑ چکی ہیں،جبکہ اس سے قبل امسال عید الفطر بھی کورنا اوائرس کے پھیلائو کے بیچ منائی گئی تھی اور اس عید پر بھی کوئی بھی روایتی جوش و خروش دیکھنے کو نہیں ملا تھا۔سال گزشتہ5اگست کو مرکزی حکومت کی جانب سے جموں کشمیر کے آئین کی تنسیخ اور تقسیم کے فیصلے کے بعد پیداشدہ صورتحال کے نتیجے میں12اگست کو عید الضحیٰ منائی گئی تھی،جس میں بھی روایتی گہما گہمی دیکھنے کو نہیں ملی تھی۔ کووِڈ-  19 میں اضافے کے نتیجے میں عید سے قبل بالخصوص عرفہ کو بازاروں میں کوئی خا

محبوبہ مفتی کے پی ایس اے میں تین ماہ کی توسیع

سری نگر// جموں و کشمیر حکومت نے پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی، جو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت نظربند ہیں، کی نظربندی میں مزید تین ماہ کی توسیع کردی ہے۔ پی ڈی پی نے محبوبہ مفتی پر پبلک سیفٹی ایکٹ کے اطلاق میں تین ماہ کی توسیع کئے جانے کی مذمت کی ہے۔محکمہ داخلہ کے پرنسپل سکریٹری شالین کابرا کی طرف سے جاری حکم نامے کے مطابق محبوبہ مفتی دختر مرحوم مفتی محمد سعید ساکنہ بجبہاڑہ حال نوگام سری نگر کی نظربندی میں مزید تین ماہ کی توسیع کی گئی ہے اور انہیں سب جیل فیئر ویو گپکار روڈ میں ہی بند رکھا جائے گا۔ قبل ازیں حکومت نے محبوبہ مفتی کو رواں برس 7 اپریل کو سب جیل ٹرانسپورٹ یارڈ سری نگر سے اپنی رہائش واقع گپکار روڈ منتقل کیا تھا ،جسے سب جیل قرار دیا گیا تھا۔ساٹھ سالہ محبوبہ مفتی، جنہیں پانچ اگست 2019 کو حراست میں لیکر چشمہ شاہی کے گیسٹ ہائوس میں نظربند کیا گیا تھا، کو گذشتہ برس نومبر کے

سجاد لون کم وبیش ایک سال بعد رہا

سرینگر//پیپلزکانفرنس کے چیئرمین سجادغنی لون کو جمعہ کولگ بھگ ایک سال کی نظربندی کے بعد رہا گیا۔ لون کو مرکزی حکومت کی طرف سے گزشتہ برس دفعہ370کی تنسیخ اور ریاست جموں کشمیرکودومرکزی زیرانتظام علاقوں میں تقسیم کئے جانے کی پہلی سالگرہ سے کئی روز قبل رہاکیاگیا۔لون نے ٹوئٹرپر اپنی رہائی کی تصدیق کی ۔ایک ٹوئٹ میں انہوں نے لکھا، ’’آخرکار ایک بر س سے پانچ روزکم مجھے سرکاری طور مطلع کیاگیاکہ میں آزاد ہوں،کتنابدل چکا ہے ، اورمیں بھی۔جیل کوئی نیا تجربہ نہیں تھا۔پہلے کے تجربے سخت تھے،جسمانی اذیتیں دی جاتی تھیں ۔لیکن یہ والانفسیاتی طور تھکادینے والاتھا ۔عنقریب بہت کچھ بتائو گا۔‘‘جموں کشمیر پیپلزکانفرنس کے چیئرمین کو اس سال فروری میں اپنی رہائش گاہ منتقل کیاگیااورخانہ نظربندرکھاگیا۔ انہیں گزشتہ سال5فروری کو حراست میں لیاگیاجب مرکز ریاست جموں کشمیرکاخصوصی درجہ ختم کیااورسابق

تازہ ترین