تازہ ترین

جموں کشمیر میں کورونا وائرس کے835نئے کیس

 سرینگر// ملک کے ساتھ ساتھ جموں کشمیر میں کورونا وائرس انتہائی تیزی کے ساتھ پھیلنے لگا ہے اور یہاں جمعرات کو اس وائرس کی وجہ سے مزید835افراد انفیکشن میں مبتلاءہوگئے۔اس طرح مرکز کے زیر انتظام علاقے میں کورونا متاثرین کی مجموعی تعداد135662ہوگئی۔ آج ظاہر ہونے والے کیسوں میں555کا تعلق وادی کشمیر جبکہ280کا تعلق صوبہ جموں سے ہے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق آج ایک بار پھر سرینگر ضلع میں سب سے زیادہ349کیس سامنے آئے جبکہ ضلع بارہمولہ کا نمبر دوسرا رہا جہاں74،ضلع بڈگام میں24،پلوامہ میں8،کپوارہ میں31،اننت ناگ میں22بانڈی پورہ میں18،گاندربل میں7،کولگام میں13اور شوپیان ضلع میں3کورونا کیس سامنے آئے۔مذکورہ ذرائع نے بتایا کہ جموں ضلع میں148نئے کیس سامنے آگئے۔  

جنوبی قصبہ شوپیان میں فورسز آپریشن کے دوران معرکہ آرائی

سرینگر//جنوبی قصبہ شوپیان میں جمعرات سہ پہر جنگجوﺅں اور فورسز کے مابین معرکہ آرائی شروع ہوگئی۔ یہ معرکہ آرائی اُس وقت شروع ہوگئی جب فورسز اور پولیس کی ایک مشترکہ ٹیم نے جان محلہ میں تلاشی کارروائی شروع کی۔ اس دوران چھپے جنگجوﺅں نے فورسز پارٹی پر فائرنگ کی جس کے بعد طرفین میں باضابطہ معرکہ چھڑ گیا۔ پولیس نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ”سیکورٹی فورسز کام پر لگے ہیں“۔  

شمالی ضلع کپوارہ میں60کروڑ روپے مالیت کی ہیروئین ضبط: پولیس

سرینگر//پولیس نے جمعرات کو دعویٰ کیا کہ انہوں نے شمالی کشمیر کے ضلع کپوارہ میں ایک نیٹ ورک کا پردہ فاش کرکے جنگجوﺅں کے ایک اعانت کار کی گرفتاری عمل لاکر اُس کی تحویل سے60کروڑ روپے مالیت کی ہیروئین بر آمد کی۔ پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ نیٹ ورک کے دوسرے ممبران کی شناخت کی گئی ہے اور اُن کی تلاش کی جارہی ہے۔ گرفتار مبینہ جنگجو اعانت کار کی شناخت مختار حسین شاہ ولد سید اکبر شاہ ساکن پنج ترن کرناہ کے طور کی گئی ہے جس کی تحویل سے پولیس کے مطابق9کلو گرام نشہ آور اشیا بر آمد کی گئی ہے جس کی قیمت60کروڑ روپے بنتی ہے۔ پولیس نے کہا کہ یہ نیٹ ورک پاکستان میں مقیم اپنے ہینڈلرس کے ساتھ رابطے میں تھا اور یہ نشہ آور اشیا کا کاروبار کرتا ہے تاکہ کشمیر میں جنگجویانہ سرگرمیوں کو بڑھاوا دیا جاسکے۔اس نیٹ ورک کا مقصد پولیس کے مطابق یہ بھی تھا کہ وادی کے نوجوانوں کو جنگجوﺅں کی صف میں شامل ہونے پ

کشمیر یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر ریاض پنجابی نہ رہے

سرینگر//کشمیر یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر ریاض پنجابی جمعرات کو مختصر علالت کے بعد انتقال کرگئے۔ اُن کے گھریلو ذرائع کے مطابق پروفیسر پنجابی نے آج سویرے اپنی دہلی کی رہائش گاہ پر آخری سانس لی۔ ادب اور تعلیم میں پدم شری ایوارڈ یافتہ پروفیسر پنجابی نے یکم جنوری2008سے یکم جون2011تک کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی حیثیت سے اپنے فرائض انجام دئے ۔ اُنہوں نے قانون میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی تھی اور وہ کئی کتابوں اور تحقیقی مضامین کے مصنف تھے۔مرحوم پروفیسر پنجابی نے یورپ، ایشیا،افریقہ اور آسٹریلیا کی کئی یونیورسٹیوں میں تحقیقی تقاریر کی ہیں۔ ریاض پنجابی کے انتقال پر سماج کے ادبی اور علمی حلقوں نے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔  

ریکارڈ 812متاثر ، 6فوت

 سرینگر //جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کی دوسری لہر میں انتہائی تشویشناک حد تک شدت آرہی ہے اور متاثرین میں نا قابل یقین اضافہ ہورہا ہے۔پچھلے 24گھنٹوں کے دوران جموں و کشمیر میں  اب تک کا سب سے بڑا اچھال دیکھنے کو ملا جب متاثرین میں ایک دم سے812کا اضافہ ہوا اور اس دوران 6اموات بھی واقع ہوئیں۔متاثرین میں257سفر کرنے والے بھی شامل ہیں۔گذشتہ سال2020میں 6ماہ بعد 11ستمبر کو وائرس سے 875افراد متاثر ہوئے تھے جبکہ 9افراد جان گنوابیٹھے تھے لیکن بدھ کو اس سال میں پہلی مرتبہ متاثرین کی تعداد نے 800کا ہندسہ پارکیا ہے۔ اس دوران  43ہزار 875تشخیصی ٹیسٹ کئے گئے ۔ مثبت قرار دئے گئے 812افراد میں 465کشمیر جبکہ جموں صوبے میں اچانک بڑے اچھال کی وجہ سے بدھ کو وہاں 347افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں ۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے  465افراد میں سے 377مقامی سطح پر جبکہ 88  سفر سے لوٹے ہیں۔ ا

ہندو پاک کے مابین مسائل

واشنگٹن// امریکہ نے کہا ہے کہ وہ ہند پاک کے درمیان تشویش کن مسائل پر براہ راست گفت و شنید کی حوصلہ افزائی کرے گا،تاہم امریکی وزارت خارجہ نے پاکستانی کابینہ کی جانب سے حال ہی میں بھارت سے کھانڈ اور کپاس درآمد نہ کرنے کے فیصلے پر کوئی بھی ردعمل ظاہر نہیں کیا۔ امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے روزانہ نیوز کانفرنس کے دوران نامہ نگاروں کو بتایا’’ میں مخصوص اس بات پر کوئی ردعمل نہیں کرنا چاہتا‘‘۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا’’ میں جو کہنا چاہتا ہوں وہ یہ ہے کہ ہم ہندوستان اور پاکستان کے درمیان تشویش کن مسائل پر براہ راست مذاکرات کی بدستور حمایت کرینگے‘‘۔ پاکستانی کابینہ نے یکم اپریل کو اعلیٰ اختیاراتی کمیٹی کی جانب سے  بھارت سے کپاس اور کھانڈ درآمد کرنے کی تجوئز کو مسترد کیا۔ پاکستان کے وزیر خارجہ نے کہا کہ نئی دہلی کے ساتھ

۔13سالہ لڑکا پاکستانی فوج کے حوالے

کرناہ// 14فروری 2019 کولیتہ پورہ پلوامہ فدائین حملہ کے بعد بند کئے گئے ٹیٹوال کراسنگ پوائنٹ پر بدھ کو ایک بار پھر گہما گہمی دیکھنے کو ملی جب کراسنگ پوائنٹ کو اُس وقت دوبارہ کھولا گیقا جب 3روز قبل غلطی سے لائن آف کنٹرول پار کرنے والے ایک نابالغ لڑکے کو پاکستانی زیر انتظام کشمیر روانہ کرنے کی تقریب منعقد ہوئی۔ 13سالہ معصوم ولد منظور احمد ساکن لیپا (پاکستانی زیر انتظام کشمیر) 5اپریل کو غلطی سے کنٹرول لائن عبور کرنے کے بعد اس طرف آیا تھا۔معصوم کو بھارتی فوج نے اپنی تحویل میں لیکر اس سے سرسری پوچھ تاچھ کی اور اسکے فوراً بعد پاکستانی فوجی حکام کو اس بارے میں مطلع کیا۔دونوں طرف کے فوجی حکام نے ہارٹ لائن پر رابطہ کرکے اس کی وطن واپسی کیلئے بدھ کا دن مقرر کیا تھا ۔بدھ کی صبح 12بجکر 50منٹ پر مذکورہ لڑکے کو ٹینٹوال کراسنگ پوائنٹ پر پاکستانی فوجی افسران کے حوالے کیا گیا ۔اس موقع پر بھارتی فوج نے

گلاب باغ زکورہ میں 18گھنٹے کے بعد آپریشن ختم

گاندربل+شوپیان// سرینگر کے مضافاتی علاقے گلاب باغ زکورہ میں18گھنٹے تک محاصرہ کی کارروائی جاری رکھی گئی لیکن دوران آپریشن ایک زیر تعمیر عالی شان رہائشی مکان پر ماررٹر گولوں کی بارش کے بعد بھی جنگجوئوں کا کوئی اتہ پتہ نہیں چلا سکا اور نہ انہوں نے دوران شب کوئی جوابی فائر کیا۔ادھر امام صاحب شوپیان میں فوج کی ایک گشتی پارٹی پر جنگجوئوں نے فائر کھول دیا تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔ زکورہ منگل کی شام8 بجکر 30 منٹ پر گلاب باغ کی ایک ملحقہ بستی’ مرزا باغ کالونی ‘کو پولیس، سی آر پی ایف، اور 5 آر آر گاندربل نے محاصرہ کیا اور ایک مخصوص مکان کے ارد گرد گھیرا تنگ کیا۔منگل کی شام پولیس کی جانب سے میڈیا کو بتایا گیا کہ انہیں بستی میں کم سے کم 2جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملی ہے جن کے خلاف آپریشن کیا جارہا ہے۔اس موقعہ پر فوری طور پر علاقے میں روشنی کا انتظام کیا گیا اور چاروں طر

سیاحت کے شعبہ کو بڑھاوا دینے کا مشن

سرینگر// وادی میںسیاحت کی صلاحیت کو فروغ دینے کیلئے مرکزی وزارت سیاحت کا ایک اعلی سطحی وفد اور اورسفارتکار1 1اپریل سے وادی کے 4 روزہ دورے پرآرہے ہیں۔۔ وادی میں2برسوں تک سیاحتی سرگرمیاں ماند پڑنے کے بعد امسال کے اوئل سے سیلانیوں اور سیاحوں نے وادی کا رخ کرنا شروع کیا اور امسال شدید سردی کے باوجود بھی بڑی تعداد میں بیرون ریاستوں کے سیاح وادی کی سیر و تفریح پر آئے۔11اپریل سے وادی کا دورہ کرنے والے100 سے زائد ممبران کے وفد میں مرکزی سیکریٹری سیاحت،  وزارت سینئر افسران ، ناقابل یقین ہندوستان(ان کریڈبل انڈیا) ٹیم ، مختلف ممالک کے سفراء ، انڈیا گالف ٹورازم ایسوسی ایشن کے ممبران ، تجارتی گروپ فیڈریشن آف انڈین چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری شامل ہیں۔ یہ وفد جموں کشمیر انتظامیہ ، محکمہ سیاحت کے اعلیٰ افسران کے علاوہ سفری اور ہاسپٹلٹی(مہمان نوازی) کے شعبے سے بھی ملاقاتیں کرے گا۔ ڈائریکٹر س

مسلسل بارش سے جہلم میں پانی کی سطح بلند

بارہمولہ// لور جہلم ہائیڈرو پاور پروجیکٹ مارچ کے مہینے سے  100 میگا واٹ بجلی پیدا کر رہا ہے۔متعلقہ حکام نے بتایا کہ پاور پروجیکٹ کی صلاحیت 105میگاواٹ ہے لیکن دریائے جہلم میں نومبر سے فروری تک پانی کی سطح بہت کم ہونے سے بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت نہ ہونے کے برابر رہ جاتی ہے اور یہ پاور ہاوس اپنی صلاحیت کو بروئے کار لانے میں پیچھے رہ جاتا ہے۔فروری کے وسط سے پروجیکٹ میں بجلی پیدا کرنے کی روزانہ کی صلاحیت میں اضافہ ہوجاتا ہے اور 40 سے 50 میگا واٹ بجلی حاصل ہوتی ہے۔ تاہم رواں برس لگاتار بارشوں کے بعد لور جہلم پاور ہاوس 100 میگا واٹ بجلی پیدا کررہا ہے اور مارچ سے بجلی کی روزانہ صلاحیت میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ ایگزیکٹو انجینئر ایل جے ایچ پی جاوید احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اس وقت یہ پروجیکٹ 98 سے 100 میگا واٹ بجلی پیدا کررہاہے اور اس میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ د

تازہ ترین