تازہ ترین

سرینگر میں ایڈوکیٹ بابر قادری گولیاں مار کر جاں بحق

سرینگر// نامعلوم بندوق برداروں نے جمعرات کی شام وادی کے معروف وکیل بابر قادری کو سرینگر میںگولیاں مارکر جاں بحق کیا۔  نیوز ایجنسی جی این ایس کے مطابق یہ واقعہ شہر کے حول علاقے میں پیش آیا جہاں بابر پر نزدیک سے گولیاں چلائی گئیں۔ بابر کو گولیاں لگتے ہی سکمز صورہ پہنچایا گیا لیکن وہ زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔ اسپتالی ذرائع نے بابر کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی ہے۔  

ترال معرکہ آرائی میں جاں بحق جنگجو البدر سے وابستہ تھا:پولیس

سرینگر//جنوبی کشمیر کے ترال علاقے میں جمعرات کی صبح جو جنگجو فورسز کے ساتھ معرکہ آرائی میں جاں بحق ہوا وہ البدر تنظیم سے وابستہ تھا۔ ایک سینئر پولیس آفیسر کا حوالہ دیتے ہوئے نیوز ایجنسی جی این ایس نے لکھا کہ عرفان احمد ڈار ساکن گڈی کل نامی یہ جنگجو معرکہ آرائی کے دوران ابتدائی فائرنگ میں ہی جاں بحق ہوگیا اور اس نے اسی سال20اگست کو جنگجوﺅں کی صف میں شمولیت اختیار کی تھی۔ مذکورہ پولیس آفیسر کا مزید کہنا تھا کہ ایک شہری کے ذریعے عرفان کو سرنڈر کرنے کی پیشکش کی گئی جو اس نے مسترد کی۔ اطلاعات کے مطابق فوج اور پولیس نے آج صبح مچہامہ نامی علاقے کا محاصرہ کرکے تلاشی آپریشن شروع کیا جس کے دوران ایک معرکہ آرائی میں عرفان نامی جنگجو جاں بحق ہوگیا۔

وسطی کشمیر کے بڈگام میں جنگجویانہ حملے میں زخمی سی آر پی ایف اہلکار چل بسا

سری نگر// وسطی ضلع بڈگام کے بادی پورہ چاڈورہ میں جمعرات کی صبح جنگجوﺅں نے سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کی ایک پارٹی پر حملہ کر کے ایک اہلکار کو ہلاک کر دیا۔ حملہ آور مہلوک اہلکار سے اس کی سروس رائفل بھی چھین کر لے گئے ہیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ بادی پورہ چاڈورہ میں جمعرات کی صبح قریب پونے آٹھ بجے موٹر سائیکل پر سوار جنگجوﺅں نے 117 بٹالین سی آر پی ایف کے اہلکاروں کی طرف پہلے گرینیڈ پھینکا اور پھر اندھا دھند فائرنگ کی۔ اس حملے میں مذکورہ اہلکار زخمی ہوگیا اور اسے 92بیس اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ بعد میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔  

سرینگر کے مختلف مقامات پر این آئی اے کے تازہ چھاپے

سرینگر//قومی تحقیقای ایجنسی (این آئی اے ) نے جمعرات کی صبح سرینگر کے متعدد علاقوں میں چھاپے مارے۔ نیوز ایجنسی کے این او کے مطابق این آئی اے کے ہمراہ سی آر پی ایف اور پولیس اہلکار بھی تھے اور انہوں نے ظہور احمد بٹ ساکن وزیر باغ،بشیر احمد لون ساکن ہوکر سر، عارف احمد مسگر اور فضل حق ساکنان باغ سندر چھتہ بل کے مکانات پر چھاپے مارے۔بتایا جاتا ہے کہ مذکورہ سبھی شہری کراس ایل او سی تجارت کے ساتھ وابستہ رہے ہیں۔ یاد رہے کہ این آئی اے اور انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے کم و بیش30 کشمیری تاجروں اور علیحدگی پسندوں کو گرفتار کر رکھا ہے اور ان پر جنگجوﺅں کی فنڈنگ کا الزام ہے۔ کراس ایل او سی تجارت مارچ2019سے معطل ہے۔  

جنوبی کشمیر کے ترال میں معرکہ آرائی، ایک جنگجو جاں بحق،فورسزآپریشن جاری

سرینگر//جنوبی ضلع پلوامہ کے ترال علاقے میں جمعرات کی صبح ایک جنگجو اُس وقت جاں بحق ہوگیا جب جنگجوﺅں اور فورسز کے مابین معرکہ آرائی ہوئی۔یہ واقعہ ترال کے مچہامہ علاقے میں پیش آیا جہاں فورسز آپریشن جاری ہے۔ ذرائع کے مطابق جنگجوﺅں اور فورسز کے مابین معرکہ آرائی کے ابتدائی مرحلے پر ایک جنگجو جاں بحق ہوگیا جس کی شناخت ہونا ابھی باقی ہے۔ اس سے قبل فوج، پولیس اور سی آر پی ایف نے مچہامہ کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا جس کے دوران طرفین کا آمنا سامنا ہوا اور معرکہ آرائی شروع ہوگئی۔

بی ڈی سی چیئرمین ہلاک

  پلوا مہ قصبہ میں گرینیڈ حملہ،فورسز ناکہ پارٹی کو نشانہ بنایا گیا   بڈگام +پلوامہ//ڈالوش کھاگ بیروہ میں مشتبہ جنگجوئوں نے بلاک ڈیولپمنٹ کونسل چیئرمین کھاگ کو گولیاں مار کر ہلاک کردیا۔ اس دوران جنوبی کشمیر کے پلوامہ ٹائون میں جنگجوئوں نے فورسز کی ایک ناکہ پارٹی پر حملہ کیا تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔ پولیس نے بتایا کہ ڈلواش کے سرپنچ و بی ڈی سی چیئر مین کھاگ بھوپندر سنگھ ولد دھیرج سنگھ کو انکے گھر میں مشتبہ جنگجوئوں نے رات 8بجکر 10منٹ پر گولیاں مار کر ہلاک کردیا۔پولیس نے بتایا کہ بھوپندر سنگھ آجکل آلوچی باغ سرینگر میں قیام پذیر تھا اور بدھ کو ہی تحصیل کھاگ کا دورہ کرنے کیلئے آیا تھا۔دن بھر اپنی سرگرمیوں سے فارغ ہو کر اس نے اپنی حفاظت پر مامور 2  پولیس محافظین کو کھاگ پولیس سٹیشن میں چھوڑا اور کسی کو اطلاع دیئے بغیر اپنے گھر چلا گیا ۔ اس دوران مشتبہ جنگجو اسکے گھر

کورونا کی قہرسامانی جاری،مزید 20موت کی آغوش میں

 سرینگر // جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے مزید 20 متاثرین فوت ہوگئے۔ مہلوکین کی مجموعی تعداد 1062ہوگئی ہے جن میں سے 269جموں جبکہ 793کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ بدھ کو فوج، نیم فوجی دستوں اور پولیس کے 106 اہلکاروں، 7کمسن بچے ، 2ڈاکٹروں اور 62سفر کرنے والوں سمیت مزید 1249افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ متاثرین کی مجموعی تعداد 67510 ہوگئی ہے۔ ان میں سے 24848جموں جبکہ 42662کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ تازہ 1249 متاثرین میں سے603کشمیر جبکہ 646جموں صوبے میں مثبت قرار دئے گئے ہیں۔کشمیر کے 603متاثرین میں سے 199سرینگر، 62بڈگام، 80بارہمولہ، 25پلوامہ، 40اننت ناگ، 41 بانڈی پورہ، 61کپوارہ،4گاندربل، 13کولگام اور8شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں۔ جموں صوبے کے646متاثرین میں سے 230ضلع جموں، 88راجوری، 48ادھمپور، 24کٹھوعہ، 61ڈوڈہ، 39سانبہ، 58پونچھ، 44رام بن، 14ریاسی اور 40کشتواڑ سے تعلق رکھتے ہیں۔   2

ڈومیسائل قانون جموں کشمیر کو ہندو اکثریتی علاقہ بنانے کا منصوبہ: ڈاکٹر فاروق

سرینگر // نیشنل کانفرنس صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہاہے کہ اس وقت کشمیری عوام ہندوستانی محسوس نہیں کرتے اور وہ ہندوستانی نہیں بننا چاہتے ہیں،یہاں تک کہ وہ  کہنے لگے ہیں کہ ان کے بجائے چین ہی بہتر ہے۔کرن تھاپر کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں فاروق عبداللہ نے کہاکہ کشمیریوں کو غلام سمجھ کر ان کے ساتھ دوسرے درجے کے شہریوں کی طرح سلوک کیا جارہا ہے۔ اپنے 44 منٹ کے انٹرویو میںنیشنل کانفرنس سربراہ نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کیلئے یہ دعویٰ کرناکوئی معنی نہیں رکھتا کہ کشمیری عوام نے اگست 2019 کی تبدیلیوں کو صرف اس وجہ سے قبول کیا کہ کوئی احتجاج نہیں ہوا ۔انہوں نے کہا کہ اگر ہر گلی میں موجود فوجیوں اور دفعہ 144 کوہٹا لیا جائے تو دسیوں لاکھ لوگ نکل آئیں گے۔ عبداللہ نے دی وائر کو بتایا کہ نیا ڈومیسائل قانون ہندو اکثریت بنانے کیلئے ہے اور اس سے کشمیری عوام کو مزید متاثر کیا گیا ہے۔ یہ پوچھے

۔جموں کشمیر سرکاری زبانیں قانون2020 پارلیمنٹ میں منظور

نئی دہلی//پارلیمنٹ نے بدھ کو کشمیری، ہندی اورڈوگری زبانوں کو جموں کشمیر کی سرکاری زبانوں کی فہرست میں شامل کرنے کی بل پاس کی۔اس سے قبل انگریزی اوراردوجموں کشمیرکی سرکاری زبانوں میں شامل تھیں ۔جموں کشمیر سرکاری زبانیں بل2020راجیہ سبھا میں زبانی ووٹ کے ذریعے پاس کی تھی۔لوک سبھا نے قانون کو منگل کے روز ہری جھنڈی دکھائی تھی۔اس موقعہ پربحث میں حصہ لیتے ہوئے وزیرمملکت برائے داخلی امورجی کشن ریڈی نے کہا کہ یہ جموں کشمیرکے لوگوں کی دیرینہ مانگ تھی کہ جوزبانیں وہ بولتے ہیں انہیں سرکاری زبانوں کی فہرست میں شامل کیاجائے۔انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کی74فیصد آبادی کشمیری اورڈوگری زبانیں بولتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ حالیہ مردم شماری کے مطابق صرف0.16فیصدآبادی اردواور2.3فیصد آبادی ہندی زبانیں بولتی ہے ۔

بل غیر آئینی، تنظیم نو قانون سپریم کورٹ میں زیر سماعت: مسعودی

نئی دہلی//نیشنل کانفرنس رکن پارلیمان جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے جموں وکشمیر سرکاری زبان بل 2020 کو آئین کے منافی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ قانون جموں و کشمیر تنظیم نوایکٹ کا نتیجہ ہے، جس کی جوازیت ہندوستان کی عدالت عظمیٰ میں زیر سماعت ہے۔ لوک سبھا میں جموں و کشمیر سرکاری زبانوں کے بل پر بات کرتے ہوئے مسعودی نے کہا کہ یونین آف انڈیا سے الحاق کے وقت تک جموں و کشمیر ایک خود مختار ملک تھا جس کا اپنا آئین تھا جو دوسرے راجواڑوں کے برعکس 1950 تک برقرار رہا۔ اس کے بعد ہندوستان کے آئین نے جموں و کشمیر کو اپنا آئین بنانے کی سہولت فراہم کی۔ بعد ازاں جموں و کشمیر نے اپنی آئین ساز اسمبلی کا قیام عمل میں لایا جس نے 1957 میں اپنا کام مکمل کر کے ریاست کو آئین دیا۔ انہوں نے کہا کہ مہاراجہ پرتاپ سنگھ نے 1899 میں اردو کو جموں و کشمیر کی سرکاری زبان بنایا تھا اور جموں و کشمیر کی آئین ساز اسمبلی نے

محبوبہ مفتی کی نظر بندی | پٹیشن میں تبدیلی کی اجازت طلب

سرینگر // سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی بیٹی التجاء مفتی نے اپنی ماں پر عائد پبلک سیفٹی ایکٹ کو چیلنج کرنے کیلئے عدالت عظمیٰ میںدائر کی گئی درخواست میں تبدیلی کی اجازت طلب کی ہے۔ پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کو گزشتہ سال 5اگست کو دفعہ 370کی تنسیخ اور ریاست کو دو حصوں میں تقسیم کرنے کے موقع پر گرفتار کیا گیا ۔عدالت عظمیٰ میں دائر کی گئی درخواست میں التجاء نے اپنی پہلی درخواست میں ترمیم کی اجازت طلب کی ہے۔ دائر کی گئی درخواست میں بتایا گیا ہے کہ درخواست میں ترمیم کا مقصد پبلک سیفٹی ایکٹ کے نفاذ کی وجوہات کو چیلنج کرنے کے علاوہ 26فروری، 5مئی اور 31جولائی کے احکامات کو بھی چیلنج کیا گیا ہے اور انہیں رد کرنے کی اپیل کی ہے۔ درخواست میں محبوبہ مفتی کی نظربندی کو مختلف بنیادوں پر چیلنج کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ محبوبہ مفتی کی نظر بندی اور توسیع کے احکامات غیر قانونی اور پبلک سیفٹی ایکٹ کے سیکش

پولیس کے550سے زیادہ افسران کی ترقی اور ریگو لرائزیشن کے احکامات صادر

سرینگر//جموں کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے بدھ کو 550سے زیادہ پولیس افسران کی ریگو لرائزیشن اور ترقی کے احکامات صادر کئے۔ان میں ایس پی اورڈی ایس پی رینک کے افسران بھی شامل ہیں۔ ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ایسا کرکے تین دہائیوں پرانا سینئارٹی سے متعلق تنازع حل ہوگیا ہے ۔ بیان کے مطابق ایل جی سنہا نے کہا کہ جموں کشمیر پولیس ملی ٹنسی کیخلاف اول صف میں کھڑا ہے اور یہ قانون کا احترام کرنے والے شہریوں کو محفوظ ماحول فراہم کرنے میں پیش پیش ہے۔ فی الوقت ایسے 550سے زیادہ افسران کی ریگولرائزیشن یا ترقی عمل میں لائی گئی ہے جن کے کیس2007سے التواءمیںپڑے ہوئے تھے۔ان میںایسے 440ایس پی اور ڈی ایس بھی شامل ہیں جو اس وقت اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں ۔      

کورونا وائرس| مزید 18فوت، تازہ 1235مثبت

 جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے مزید18 شہری فوت ہوگئے۔ مہلوکین کی مجموعی تعداد1042تک پہنچ گئی جن میں سے253جموں جبکہ789 کا تعلق کشمیر سے ہے۔ اس دوران منگل کو مزید 1235افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اس طرح مجموعی تعداد 66261تک پہنچ گئی ہے۔ان میں سے 24202جموں جبکہ42059 وادی سے ہے۔ تازہ 1235متاثرین میں سے 499کشمیر جبکہ 736افراد کشمیر میں فوت ہوگئے۔ کشمیر کے 499متاثرین میں سے 210سرینگر، 59بڈگام، 30بارہمولہ،62پلوامہ، 28اننت ناگ، 22کپوارہ، 21گاندربل، 12کولگام  اور 19شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ جموں کے 736متاثرین میں سے 253جموں، 68راجوری، 64ادھمپور، 41کٹھوعہ، 98ڈوڈہ، 52سانبہ،73پونچھ، 35رام بن، 15ریاسی اور 37کشتواڑ سے تعلق رکھتے ہیں۔  ۔ 18اموات جموں و کشمیر میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران18افراد کورونا وائرس سے فوت ہوگئے۔ فوت ہونے والے افراد میں سے 11کشمیر جبکہ 7جموں

چرار شریف جھڑپ19گھنٹے بعد اختتام پذیر ، جنگجو جاں بحق ،کئی فرار

چرار شریف//وسطی ضلع بڈگام کے چرار شریف ٹائون کی نوہاڑ بستی میں 19گھنٹے تک معرکہ آرائی کے دوران سانبورہ پانپور کا ایک جنگجو جاں بحق جبکہ ایک فوجی اہلکار زخمی ہوا۔ معرکہ آرائی کے دوران دو جنگجو فرار ہوئے جبکہ ایک رہائشی مکان مکمل طور پر تباہ اور ایک کو جزوی نقصان پہنچا۔ فائرنگ میں ایک گائے بھی لقمہ اجل بن گئی۔ادھر انتظامیہ نے مسلح تصادم کے پیش نظر پورے ضلع بڈگام میں موبائل انٹرنیٹ خدمات منقطع کر دیں۔ تصادم آرائی پولیس کے مطابق انہیں چرار شریف ٹائون کے مفصلات میں چونگی کے نزدیک نوہاڑ کی بستی میں کم سے کم 3جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملی جس کے بعد53آر آر اور سی آر پی ایف سے مدد طلب کی گئی اور سہ پہر کے بعد قریب ساڑھے 5بجے محاصرہ کرنے کی کوشش کی گئی۔پولیس کا کہنا ہے کہ جونہی تلاشی کارروائی کا آغاز ہونے والا تھا تو محاصرے میں موجود جنگجوئوں نے ایک مکان کی آڑ لیکر فائرنگ کی ج

بھارت اور چینی فوج میں بعض نکات پر اتفاق

نئی دہلی // بھارت اور چین نے اس بات پر اتفاق کیا ہے کہ حقیقی کنٹرول لائن پر مزید فوجیوں کو نہیں بھیجا جائیگا نیز سرحدی علاقوں میں پر امن حالات بحال کرنے کی خاطر اقدامات کئے جائیں گے تاکہ ٹکرائو کی کوئی صورتحال پیش نہ آئے۔ طرفین نے فوجی کمانڈروں کی سطح پر ساتوں میٹنگ بھی کرنے پر رضا مندی ظاہر کردی ہے۔دونوں ملکوں کے درمیان پیر کو فوجی سطح پر قریب 13گھنٹے تک بات چیت ہوئی تھی جس میں فوجیوں کی واپسی پر کوئی اتفاق نہیں پایا گیا۔ البتہ منگل کو دونوں ملکوں کی جانب سے مشترکہ بیان جاری کیا گیا جس میں کہا گیا ہے کہ  بھارت اور چینی فوج مشرقی لداخ میں کشیدگی کم کرنے پر راضی ہوگئی ہے اور انہوں نے یہ فیصلہ بھی کیا ہے کہ سرحدی لاقوں میں اگلی چوکیوں پر مزید فوجیوں کو نہیں بھیجا جائیگا، طرفین یکطرفہ طور پر زمینی صورتحال تبدیل کرنے سے گریز کریں گے اور ایسے اقدام کرنے سے اجتناب کریں گے جن سے ماحول م

آئیسولیشن وارڈوں میں گنجائش

سرینگر//جموں و کشمیر میں کورونا وائرس مریضوں کیلئے3762آئیسولیشن بیڈ دستیاب ہیں ۔ان میں سے 1113بستروں پر مریض زیر علاج ہیں جبکہ 2649بستر خالی پڑے ہیں۔ سرکاری اعدادوشمارکے مطابق 3762بستروں میں سے 1078پہلے زمرے جبکہ 2684دوسرے زمرے کے بستر ہیں۔ پہلے زمرے کے 1078بستروں میں سے565پر مریض زیر علاج ہیں جبکہ اس زمرے کے 513بستر خالی پڑے ہیں۔ دوسرے زمرے کے آئیسولیشن وارڈوں میں مجموعی طور پر 2684بستر موجود ہیں جن میں سے 548پر مریض ہیں جبکہ 2136بستر خالی ہیں۔ کشمیر صوبے کے مختلف اسپتالوں کے آئیسولیشن وارڈوں میں مجموعی طور پر 1540بستر موجود ہیں جن میں سے 234پر مریض موجود ہیں جبکہ 1306بستر خالی پڑے ہیں۔ سرینگر ضلع میں مجموعی طور پر 803بستر دستیاب ہیں جن میں سے 394پر مریض موجود ہیں جبکہ 409بستر خالی پڑے ہیں۔پلوامہ ضلع میں 110بستر دستیاب ہیں جن میں سے 71بستر ابھی خالی پڑے ہیں۔ گاندربل ضلع میں آئی سو

نقب زنوں کی سرینگر میں رحباب صاحب ؒ کے آستان عالیہ میں چوری

سرینگر//نقب زنوں نے سرینگر کے عالی کدل علاقہ میں واقع رحباب صاحب ؒ کے آستان عالیہ سے نقدی اڑالی۔یہ سرینگر میں حالیہ دنوں کے دوران اپنی نوعیت کا دوسرا واقعہ ہے ۔ نیوز ایجنسی کے این او کے مطابق نقب زنوں نے گذشہ رات کے دوران مذکورہ آستان عالیہ میں نقب لگاکر لوہے سے بنی سیف توڑ کر اُس میں نذر و نیاز کی رقم پر ہاتھ صاف کرلیا۔ یاد رہے کہ نقب زنوں نے 12ستمبر کے روز خانیار میں واقع شیخ عبد القادر جیلانی ؒ کے آستان عالیہ سے بھی نقدی چرالی تھی۔ دریں اثناءمقامی آبادی نے چوری کی اس واردات پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ اس دوران پولیس نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات شروع کی ہے۔  

شمالی ضلع بارہمولہ میں این آئی اے کے تازہ چھاپے

 بارہمولہ //قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے منگل کی صبح شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع کے کئی علاقوں میں چھاپے مارے۔  ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ این آئی اے کی ٹیم نے سی آر پی ایف اور پولیس کے ہمراہ ضلع بارہمولہ کے پلہالن پٹن کے غلام رسول وازہ کے گھر پر چھاپا مارا۔ اس کے علاوہ کانسپورہ اور ضلع کے دیگر مقامات پر بھی این آئی کی طرف سے چھاپے مارے گئے۔ تفصیلات کا انتظار ہے

چرار معرکہ آرائی میں عدم شناخت جنگجو جاں بحق،آپریشن جاری

سرینگر//وسطی کشمیر میں بڈگام ضلع کے چرار شریف علاقے میں منگل کی صبح فورسز اور جنگجوﺅں کے مابین معرکہ آرائی کے دوران ایک جنگجو جاں بحق ہوگیا۔ پولیس نے ایک جنگجو کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ جنگجو کی شناخت ہونی باقی ہے۔ یاد رہے کہ پولیس، سی آر پی ایف اور فوج نے گذشتہ شام مشترکہ طور چرار شریف میں تلاشی آپریشن شروع کیا اور جب فورسز اہلکار گھر گھر تلاشی میں مصروف تھے تو چھپے جنگجوﺅں نے اُن پر گولیاں چلائیں۔فورسز نے جواب میں گولیاں چلائیں اور اس طرح معرکہ آرائی کا آغاز ہوگیا۔ ذرائع کے مطابق رات بھر قدرے خاموشی رہنے کے بعدصبح ہوتے ہی گولیوں کا شدیدتبادلہ پھر شروع ہوگیا۔ انہوں نے کہا کہ فورسز کا جنگجو مخالف آپریشن جاری ہے  

۔ 6ماہ بعد تعلیمی ادارے جُزوی طور کھل گئے

سرینگر// وادی میں کورونا وائرس کے قہر کے بیچ پیر کو قریب6ماہ بعد تعلیمی ادارے کھل گئے۔ تاہم خصوصی کلاسوں میں طلاب کی بہت کم تعداد نے شرکت کی۔وادی میں وائرس کا پہلا کیس اگرچہ17مارچ کو سامنے آیا تھا،تاہم اس سے قبل ہی6مارچ کو حکام نے تمام تعلیمی ادارے بند کرنے کا حکم نامہ جاری کیا تھا۔ پیر کو قریب ساڑھے6ماہ کے بعد کورونا کے سائے میں9ویں سے 12ویں جماعت تک جزوی اور مشروط بنیادوں پر تعلیمی ادارے دوبارہ کھل گئے تاہم اکثر اسکولوں میں طلبا کی حا ضر ی نہ ہونے کے برابر تھی البتہ 50فیصد اسکو لی عملہ حاضر تھا ۔ پرنسپل سیکریٹری تعلیم ڈاکٹر اصغر سامون نے پہلے ہی کہا تھا کہ اسکولوں کے سر نو کھلنے کا مقصد ریگولر کلاسوں کو شروع کرنے کا نہیں ہے۔اسکولوں میں اکا دکا طلبا ہی نظر آ ئے جبکہ کئی علاقوں کے اسکولوں میں سناٹا چھا یا تھا۔حا ل ہی میں وزارت داخلہ نے اپنے جاری کردہ حکم نامے میں کہاتھا کہ ریاستوں او

تازہ ترین