خوش خبری: فضائی سفر کے دوران کرونا پھیلنے کے امکانات نہ ہونے کے برابر

 بیجنگ//تقریبا ایک سال سے پوری دنیا کرونا جیسی جان لیوا وبا کی زد میں جس نے اب تک ایک ملین سے زاید لوگوں سے زندگی چھین اور چار کروڑ کے قریب اس کے متاثرین ہیں۔چین سے پھیلنے والی اس وبا پرآج تک قابو نہیں پایا جاسکا ہے مگر پوری دنیا اس وبا سے نمٹنے کے لیے مختلف طریقے اپنا رہی ہے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی وزارت دفاع کی طرف سے کیے گئے ایک نئے تحقیقی مطالعے میں کرونا کے حوالے سے ایک اچھی خبر بھی سامنے آئی ہے۔ یہ خبر فضائی کمپنیوں اور فضائی سفر کرنے والے مسافروں کے لیے زیادہ خوش آئند ہے۔اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ فضائی سفر کے دوران کرونا پھیلنے کے امکانات نہ ہونے کے برابر ہیں۔اگرچہ اسے عالمی سطح پرماہرین صحت کی طرف سے مصدقہ طور پر تسلیم نہیں کیا گیا تاہم تحقیق سے پتا چلتا ہے فضائی سفر کے دوران ماسک پہننے والے مسافر کی سانس خارج کرنے کے دوران صرف 0.003 بیکٹریا ہوا میں داخل ہوسک

آرمینیا کیساتھ لڑائی، آذربائیجان کے 60 لوگوں کی موت

باکو//ارمینیا اور آذربائیجان کے درمیان نارگورنو - کراباخ کی لڑائی کی شروعات سے لے کر اب تک 60 آذربائیجان شہریوں کی موت ہوگئی ہے جبکہ 270 دیگر زخمی ہوئے ہیں۔ملک کے استغاثہ جنرل دفتر نے ہفتے کو یہ اطلاع دی۔ایک سرکاری ویب سائٹ پر شائع ایک متعلقہ انفوگرافک کے مطابق،’’ آذربائیجان میں اب تک 60 شہریوں کی موت ہوئی اور 270 لوگ زخمی ہوئے ہیں،1704 مکان تباہ ہوئے ہیں اور قریب 90 کامپیکس اور عامرتیں تباہ ہوچکی ہیں۔      سلامتی کونسل کی میٹنگ اقوام متحدہ//آرمینیا اورآذربائیجان کے مابین نگورنو قاراباخ خطے میں جاری لڑائی پر تبادلہ خیال کیلئے بند دروازوں کے درمیان پیر کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی میٹنگ ہونے جارہی ہے۔جمعہ کے روز یہ اطلاع اقوام متحدہ میں روسی مشن کے پریس سکریٹری فیڈراسٹریز زووسکی نے دی۔ فیڈراسٹریزز ووسکی نے کہا‘‘ پیر کی صبح

ٹرمپ نے امریکی معیشت غرق کردی

واشنگٹن//گزشتہ روز امریکی حکومت کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق 30 ستمبر 2020 کو ختم ہونے والے مالی سال میں فیڈرل بجٹ کا خسارہ 3100 ارب ڈالر کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکا تھا، جو دوسری جنگِ عظیم کے بعد امریکی تاریخ کا سب سے زیادہ بجٹ خسارہ بھی ہے۔واضح رہے کہ امریکی معیشت کو دنیا بھر میں سب سے زیادہ خسارے والی معیشت بھی قرار دیا جاتا ہے۔ تاہم اس سال کورونا وائرس کی وجہ سے امریکی معیشت کا خسارہ پہلے سے بھی کہیں زیادہ ہوگیا جس کے نتیجے میں امریکی معیشت مجموعی طور پر گزشتہ سال کے مقابلے میں 15.2 فیصد سکڑ چکی ہے۔ٹرمپ انتظامیہ نے اس سال فروری میں تخمینہ لگایا تھا کہ فیڈرل بجٹ کا خسارہ 984 ارب ڈالر رہے گا لیکن اندازوں کے مقابلے میں یہ خسارہ تین گنا سے بھی زیادہ ہو کر 3.1 ٹریلین ڈالر (3100 ارب ڈالر) پر پہنچ گیا۔یہ 2008 کے عالمی معاشی بحران کے بعد 1.4 ٹریلین ڈالر خسارے کے دگنے سے بھی زیادہ ہے

تازہ ترین