تازہ ترین

مزید خبریں

تاریخ    1 دسمبر 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک

 رواں سال جنگجوحملوں میں نمایاں کمی | دفعہ370کی تنسیخ کے بعد نقل مکانی کرچکے1678پنڈت نوکریوں کیلئے وادی واپس آئے:وزارت داخلہ

سرینگر//مرکز نے منگل کو پارلیمنٹ کو مطلع کیا کہ جموں و کشمیر میں اس سال 15نومبر تک جنگجو واقعات میں 40 عام شہری ہلاک اور 72 زخمی ہوئے ہیں۔دفعہ370کی منسوخی کے بعد کل8 167کشمیری سے نقل کانی کرچکے پنڈت نوکری کے سلسلے میں کشمیر واپس لوٹ آئے  اور کشمیرچھوڑ کرچلے گئے پنڈتوں کی150کنال  اراضی بحال کی گئی ہے ۔ کے این ایس کے مطابق یہ تفصیلات وزیر مملکت برائے امور داخلہ نتیا نند رائے نے لوک سبھا میں ایک سوال کے جواب میں دیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ 15نومبر تک ایسے واقعات میں جموں و کشمیر پولیس سمیت سیکورٹی فورسز کے 35 اہلکار ہلاک اور 86 زخمی ہوئے۔رائے نے شہریوں کو انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں سے بچانے کے لیے حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کے بارے میں بھی بتایا۔ ان میں جنگجوئوں کے خلاف فعال کارروائیاں، جنگجویت کے زمینی کارکنوں/حامیوں کی نشاندہی اور گرفتاری، کالعدم تنظیموں کے ارکان کے خلاف کارروائی، ناکے پر رات کی چیکنگ اورگشت کو تیز کرنا، مناسب تعیناتی کے ذریعے سیکورٹی کے انتظامات، سیکورٹی اداروں کے درمیان تال میل اجلاس، اعلیٰ سطح کی چوکنائی شامل ہیں، سیکورٹی فورسز کی طرف سے برقرار رکھا گیااور جنگجوئوںکی فنڈنگ کے معاملات میں قانونی کارروائی شامل ہے ۔پیر کو حکومت نے راجیہ سبھا کو بتایا کہ جموں و کشمیر میں پچھلے تین برسوں میں جنگجویانہ حملوں کے 1033 واقعات ہوئے ہیں۔ وزیر مملکت برائے دفاع اجے بٹ کی فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق، سب سے زیادہ واقعات سال 2019میں 594 رپورٹ ہوئے۔انہوں نے کہا کہ اس سال 15 نومبر تک 196 واقعات رونما ہو چکے ہیں۔بٹ نے کہا،’’گزشتہ دو سالوں کے مقابلے جموں و کشمیر میں 2021 میںجنگجویانہ حملوں اور ان حملوں میں مارے گئے سیکورٹی فورسز کے اہلکاروں کی تعداد میں کمی آئی ہے۔اس دوران گشتہ کئی سال کے اعداد شمار پیش کرتے ہوئے انہوں نے بتایا 2017میں جموں و کشمیر پولیس کے اہلکاروں سمیت سیکورٹی فورسز کے 80 اہلکار مارے گئے ۔ 2018 میں 91، 2019 میں 80، 2020 میں 62 اور 2021 میں 35،اہلکار 15 نومبر تک ہلاک ہوئے ہیں جبکہ 2017 میں یہاں40 شہری مارے گئے۔ 2018 اور 2019 میں ہر ایک میں 39، 2020 میں 37 اور 2021 میں 15,40نومبر تک شامل ہیں، کے حوالے سے یہاں جانکاری دی گئی ہے ۔ادھرجموں و کشمیر کی حکومت کی معلومات کے مطابق،دفعہ 370 کی منسوخی کے بعد، کل 1678 تارکین وطن پی ایم ڈیولپمنٹ پیکیج 2015 کے تحت ملازمتیں لینے کے لیے کشمیر واپس آئے ہیں۔ 150 درخواست دہندگان کی زمین بحال کی گئی۔ان باتوں کی جانکاری وزارت داخلہ نے لوک سبھا میں ایک سوال کے تحریری جواب میں دی۔
 
 
 
 

ووکھوپلوامہ میں آبپاشی زمین CRPFکومنتقل نہیں کی جارہی

سرکارکی وضاحت
پلوامہ//ضلع انتظامیہ پلوامہ نے سوشل میڈیا اور دیگرذرائع ابلاغ میں شائع ان خبروںکو من گھڑت اور بے بنیادقرار دیا ہے جن میں کہاگیاتھا کہ پلوامہ میں لوگوں کی آبپاشی اراضی کو کیمپ قائم کرنے کیلئے  سی آر پی ایف کے حوالے کیا جائے گا۔ایک بیان میں سرکارنے کہا کہ عوام الناس کو مطلع کیا جاتا ہے کہ ووکھو میں جوزمین ہے ،وہ امتیازی طور سرکاری ہے اوریہ کسی فرد یاادارے کی ملکیتی زمین نہیں ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ انتظامیہ لوگوں کی فلاح بہبود کیلئے پرعزم ہے اورجوکوئی بھی غلط افواہیں یاپروپیگنڈہ پھیلائے گااس کے خلاف موثرطور نمٹاجائے گا۔ 
 
 
 
 

۔19سیکشن افسر،انچارج ایڈمنسٹریٹوافسر تعینات

بلال فرقانی
سرینگر// انتظامیہ نے19سیکشن افسراں کو6ماہ کیلئے انچارج انتظامی افسراں کے طور پر تعینات کرنے کو منظوری دی ہے۔ عمومی انتظامی محکمہ کی جانب سے منگل کو جاری حکم نامہ میں کہا گیا کہ محکمانہ سربراہوں کے سیکشن افسراں کو آئندہ6ماہ تک،یا جب تک مستقل طور پر یہ محکمانہ ترقیاتی کمیٹیوں کی سفارشات پر اسامیاں پُر کی جائیں گی، کو اپنی تنخواہ و گریڈ پرانچارج  ایڈمنسٹریٹو افسراں کے طور پر تعینات کیا جاتا ہے۔ ان افسراں میں جموں کشمیر آرکیٹکٹس آرگنائزیشن کے محمد مقبول بٹ، محکمہ اعلیٰ تعلیم میں ڈائریکوٹریٹ آف کالجز کے ارشد حسین عشائی، رچنا دیوی، اشوک کمار ٹنڈن، راجندر کمار، راکھی کلو، گورنمنٹ میڈیکل کالج  و منسلک اسپتالوں کے طارق عمر ہنڈو، ڈائریکٹوریٹ آف انمل ہسبنڈری کشمیر کے سید ہلال احمد، صوبائی کمشنر کشمیر میں تعینات شفاعت احمد شانساز،  علی محمد ملا،جموں کشمیر جیل خانہ جات کے سجاد احمد خان، ڈائریکوٹریٹ برائے فروغ ہنر کے حمیدہ زرگر، موٹر گراجز ڈائریکوٹریٹ کے ہلال احمد وانی، ایڈوکیٹ جنرل ڈائریکٹوریٹ کے نذیر احمد متو،کلکٹر لیگل میٹرولوجی کی زاہدہ  میر اور ڈائریکٹوریٹ آف ہارٹی کلچر جموں کے ڈُٹی ناتھ شامل ہیں۔ حکم نامہ میں کہا گیا ہے یہ تعیناتیاں محض اسامیوں کو پُر کرنے کیلئے کی جارہی ہیں،اور ان افسراں کو ان بنیادوں پر انتظامی افسراں کے عہدے پر ترقیوں کا دعویٰ کرنے کا کوئی بھی حق حاصل نہیں ہوگا۔آرڈر میں مزید کہا گیا ہے کہ جب تک ان افسراں کو انچارج انتظامی افسراں کے طور پر  تقرری عمل میں نہیں لائی جاتی تب تک وہ اپنی موجودہ جگہوں پر ہی  کام کرینگے۔
 
 

 

 بی ایس ایف کی قربانیاں ناقابل فراموش: آئی جی ؔ دراندازی کی کسی بھی کوشش کوناکام بنایا جائیگا

سرینگر//کشمیر سے کنیا کماری تک بی ایس ایف لوگوں کی خدمت کیلئے حاضر ہے۔ اس بات کااظہار انسپکٹرجنرل بی ایس ایف ،راجابابونے کہا ہے۔ سی این آئی کے مطابق سرحدی علاقہ ٹنگڈار میں بی ایس ایف کی جانب سے منعقد ہ ایک تقریب میں، انسپکٹر جنرل بی ایس ایف، راجا بابو نے کہا کہ بی ایس ایف جموں کشمیر میں حالات کو قابو میں رکھنے کیلئے متحر ک ہے اور بی ایس ایف نے ملک کی حفاظت میں جو قربیانیاں پیش کی ہیں،اُن کو کوئی بھی بھول نہیں سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر سے کنیار کماری تک بھارت ایک ہے اور ہمیں فخر ہے کہ ہم بھارت ملک کے باشندے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کے ساتھ ساتھ بنگلہ دیش سرحد پر بھی بی ایس ایف متحرک ہے اور کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کیلئے تیار ہے ۔ انہوںنے کہا کہ حدمتارکہ ہوچاہئے وہ پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدہو یا بنگلہ دیش کے ساتھ سرحدہو، دراندازی کی کوئی بھی کارروائی ہو گی تو اس کا بھر پور انداز میںجواب دیا جائے گا ۔ برفباری کے دوران بی ایس ایف کی تیاریو ں کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوںنے بتایا کہ کوئی بھی کوشش سرحد کے اُس پار سے ہو گی تو اسکو کامیاب نہیںہونے دیا جائے گا اور کسی بھی ملک کی ہمت نہیںہے کہ وہ بھارت کے خلاف کوئی بھی مذموم حرکت کرنے کی سوچ لیں۔ آئی جی بی ایس ایف نے کہا کہ سرحدوں پر کسی بھی کارروائی کیلئے بی ایس ایف ہمیشہ تیاری کی حالت میںہوتی ہے اور آگے بھی رہے گی اور اس طرح کی کوئی بھی کارروائی جس سے ملک کی سیکورٹی اور سالمیت کو نقصان پہنچے اس کو کامیاب نہیںہونے دیا جائے گااور ہم لوگوں کو یقین دہانی کرتے ہیںکہ سرحدوں کو محفوظ رکھنے میںکوئی بھی دقیقہ فرگزشت نہیں کیا جائے گا ۔ 
 
 
 
 

دُرگا ماتا کی1300سال پرانی مورتی 

کھاگ بڈگام میں برآمد ،پولیس نے محکمہ آثار قدیمہ کے سپرد کردی

ارشاد احمد
سرینگر// جموں وکشمیر پولیس نے وسطی ضلع بڈگام کے کھاگ علاقے میں 13سو سالہ نایاب مورتی کو برآمد کیا ہے ۔پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ’ دُرگا ماں‘ کی یہ مورتی برآمد ہونے کے بعد محکمہ آرکیالوجی اور میوزم کے عہدیداروں کو اس بارے میں آگاہی فراہم کی گئی۔ ۔انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر انتظامیہ نے منگل کے روز بتایا کہ یہ مورتی لگ بھگ تیرہ سوسال پُرانی ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ مجسمہ ایک سیاہ پتھر میں کنندہ ہے ، یہ مجسمہ شیر کے تخت پر بیٹھی دُرگا ماں کا ہے ، اس مورتی کا بائیں بازو کندھے سے غائب ہے جبکہ مجسمہ گندارا اسکول آف آرٹ کی عکاسی کرتا ہے اور اس کے دائیں ہاتھ میں کنول کا پھول ہے۔ترجمان نے بتایا کہ منگل کے روز ایس ایس پی بڈگام طاہر سلیم نے ڈی ایس پی ہیڈ کواٹر نسیم وانی اور دوسرے افسران کی موجودگی میں اس نادر مورتی کو ڈپٹی ڈائریکٹر آرکیالوجی مشتاق احمد بیگ کے سپرد کیا۔
 
 
 
 

لداخ میں زلزلہ کے ہلکے جھٹکے محسوس

یواین آئی
سری نگر//مرکزی زیرانتظام خطہ لداخ کے ضلع لیہہ میں منگل کی صبح زلزلے کے ہلکے جھٹکے محسوس کئے گئے تاہم کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ریکٹر اسکیل پر زلزلے کی شدت 3.7 ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ اس کا مزکر ضلع لیہہ کا مشرقی علاقہ تھا۔نیشنل سینٹر فار سیسمولوجی کے مطابق منگل علی الصبح قریب چار بج کر پچاس منٹ پر لیہہ میں 3.7 کی شدت کے زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے ۔انہوں نے بتایا کہ اس زلزلے کا مرکز لیہہ کا مشرقی علاقہ تھا۔واضح رہے کہ جموں کشمیر اور لداخ زلزلیاتی پیمانے پر سب سے زیادہ خطرناک پانچ اور چار زون میں آتے ہیں۔جموں و کشمیر میں ماضی میں زلزلوں نے بے تحاشا تباہی مچائی ہے ۔ 8 اکتوبر 2005 میں ہونے والے قیامت خیز زلزلے کے نتیجے میں حدمتارکہ کے آر پار زائد از 80 ہزار لوگوں کی موت واقع ہوئی تھی اور بے تحاشا مالی نقصان ہوا تھا۔ ریکٹر اسکیل پر اس زلزلے کی شدت 7.6 ریکارڈ ہوئی تھی۔
 
 
 

۔70سبکدوش پولیس اہلکاروں کو70.75لاکھ روپے کاریٹائرمنٹ تحفہ

جموں //پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے منگل کو71سبکدوش ہوئے پولیس اہلکاروں کی کارکردگی کے اعتراف میں انہیں70.75لاکھ روپے کا ریٹائرمنٹ تحفہ دیا۔ ان میں تین گزیٹیڈ اور10نچلے درجے کے ملازمین اورچار فالور شامل ہیں۔یہ اہلکار پولیس کے مختلف شعبوں اور یونٹوں میں کام کررہے تھے۔70پولیس اہلکاروں کے حق میں فی کس ایک لاکھ روپے کاسبکدوشی تحفہ منظورکیاگیا جب کہ ایک ڈپٹی سپرانٹنڈنٹ  پولیس(ایم) 08-10-2021سے قبل رضاکارانہ طور ریٹائرمنٹ لی تھی،کے حق میں 75ہزارروپے منظور کئے گئے۔یہ رقم پولیس کنٹری بیوٹری فینڈ سے دی گئی۔
 
 
 
 

ڈسٹرکٹ آسپریشنل پروگراموں کا نفاذ | منصوبہ بندی محکمہ کے کمشنر سیکریٹری نوڈل افسرمقرر

سرینگر//بلال فرقانی// سرکار نے ضلعی آسپریشنل پروگراموں کے نفاذ کیلئے محکمہ منصوبہ بندی ،ترقی و نظارت کی کمشنر سیکریٹری کو نوڈل افسر  نامزد کیاہے۔ حکومت کی جانب سے منگل کو جاری حکم نامہ میں کہا گیا کہ جنرل ایدمنسٹریشن محکمہ کی جانب سے5جولائی کو جاری حکم نامہ میں جزوی ترمیم کی گئی،جس کے تحت کمشنر سیکریٹری محکمہ ترقی ومنصوبندی اور نظارت ،محکمہ اعلیٰ تعلیم کی انتظامی سیکریٹری سوشیما چوہان کی بدلے ضلعی آسپریشنل پروگراموں کے نفاذ کیلئے نوڈل افسر نامزد کیا جاتا ہے۔
 
 
 
 

پائین شہر میں6 روز بعد موبائل انٹرنیٹ بحال

سری نگر//یواین آئی// سری نگر کے پائین علاقوں میں منگل کو موبائیل انٹرنیٹ خدمات کو بحال کیا گیا جس سے طلبا و تاجر برادری نے راحت کی سانس لی ہے ۔ایک طالب علم منان منظور نے بتایا کہ موبائیل انٹرنیٹ معطل رہنے کی وجہ سے طلبا کو آن لائن تعلیم کے حصول میں دقتیں پیش آرہی تھیں جس وجہ سے اُن کی پڑھائی متاثر ہو رہی تھی۔انہوں نے کہا کہ موجودہ سائنسی دور میں انٹرنیٹ کی اشد ضرورت ہے تاکہ طلبہ و طالبا ت مقابلہ آرائی کے اس دور میں اپنی قابلیت کا لوہا منوا سکیں۔بتا دیں کہ رام باغ تصادم کے بعد انتظامیہ نے پائین شہر میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات کو منقطع کیا جس وجہ سے طلبہ وطالبات کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا تھا جبکہ تاجر برادری کو بھی اس حوالے سے طرح طرح کی مشکلات آڑے آرہی تھیں۔علاوہ ازیں شہری ہلاکتوں کے بعد ڈاون ٹاون علاقوں میں صبح اور شا م کے اوقات میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات کو منقطع کرنے کا عمل پچھلے ایک ماہ سے جاری ہے جس سے نہ صرف طلبا کا قیمتی وقت ضائع ہورہا ہے بلکہ سرکاری کام کاج میں بھی رخنہ پڑا ہے ۔تاہم منگل کی صبح سے ہی انتظامیہ کی جانب سے پائین شہر میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات کو بحال کیا گیا اور توقع ظاہر کی جارہی ہے کہ اب معمول کے مطابق ہی موبائیل انٹرنیٹ سروس بحال رہے گی۔
 
 
 
 

کورونا معاملوںمیں اضافہ |  کرگل میں اسکول ایک بار پھر بند

سری نگر//یواین آئی// کورونا کیسز میں اضافے کے پیش نظر ضلع مجسٹریٹ کرگل نے ضلع میں تین دسمبر سے اسکولوں میں درس وتدریس کے عمل کو ایک بار پھر بند کرنے کے احکامات صادر کئے ہیں۔ضلع مجسٹریٹ کرگل سنتوش سکھدیو کی طرف سے جاری ایک حکمنامے میں کہا گیا کہ ضلع میں کورونا کیسز میں اضافہ درج ہونے اور عالمی صحت تنظیم کی طرف سے ‘اومی کرون’ نامی نئے کووڈ ویرینٹ کے انکشاف کے پیش نظر تمام سرکاری و غیر سرکاری اسکولوں میں 3 دسمبر سے اگلے احکامات صادر ہونے تک تدریسی عمل بند رہے گا۔حکمنامے میں کہا گیا کہ تاہم دسویں اور بارہویں کے سالانہ بورڈ امتحانات حسب ڈیٹ شیٹ کورونا گائیڈ لائنز پر من و عن عمل در آمد کے بیچ منعقد ہوں گے ۔موصوف ضلع مجسٹریٹ نے حکمنامے میں چیف میڈیکل افسر(سی ایم او) کرگل کو ہدایات دی ہیں کہ وہ اسکولوں کے بند ہونے سے قبل ہی طلبا کی صد فیصد سمپلنگ کو یقینی بنائیں نیز بورڈ امتحانات میں حصہ لینے والے طلبا کی سمپلنگ ان متحانات کے اختتام کے فوراً بعد مکمل کی جانی چاہئے ۔حکمنامے میں چیف ایجوکیشن افسر(سی ای او) کرگل کو ان ہدایات سے تمام نجی سکولوں کے منتظیمن کو باخبر کرنے کی ہدایت دی گئی نیز انہیں کہا گیا کہ وہ امتحانات کے دوران کورونا گائیڈ لائنز پر عمل در آمد کو یقینی بنائیں۔حکمنامے میں کہا گیا کہ ہدایات کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف تحت قانون کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔قابل ذکر ہے کہ کورونا کیسز میں کمی واقع ہونے کے بعد ضلع کرگل میں یکم ستمبر کو اسکول کھولے گئے تھے ۔
 
 
 

کووِڈ-19کی نئی ہیت’اومی کرون‘ کی ہیبت | اسپتال کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیار رکھے جائیں:ناظم صحت

نیوز ڈیسک
سرینگر // ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر نے منگل کو وادی کے تمام ضلع اور سب ضلع اسپتالوں میں تعینات میڈیکل سپر انٹنڈنٹوں کے ساتھ میٹنگ کی اور کووِڈ - 19 صورتحال کا جائزہ لیا ۔ڈائریکٹر ہیلتھ سروسزکشمیرمشتاق احمد راتھر نے وادی میں کورونا وائرس کی صورتحال کا جائزہ لیا اور کورونا وائرس کی نئی ہیت ’اومی کرون ‘کی روکتھام کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لیا ۔ انہوں نے تمام میڈیکل سپر انٹنڈنٹوں کو ہوشیار رہنے کی ہدایت دی اور تمام اسپتالوں کو کسی بھی صورتحال سے نپٹنے کیلئے تیار رہنے کی ہدایت دی۔ ڈائریکٹر ہیلتھ نے کورونا سے متعلق تمام ضروری چیزوں کو اسپتالوں میں دستیاب رکھنے کے علاوہ آئیسولیشن بیڈ وں کو تیار رکھنے کی ہدایت دی۔ ڈائریکٹر ہیلتھ سروسزنے زوردیا کہ آئی ای سی سرگرمیوں اور لوگوں کو کووِڈ سے متعلق جانکاری فراہم ،کرنے کیلئے اقدامات اٹھائیں ۔انہوں نے کہا کہ ایس او پیز، کووِڈ ضابطہ اخلاق، سماجی دوری اور ماسک کاپہننا، وائرس سے بچنے کا واحد ذریعہ ہے۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز نے کنٹرولر سٹورز کو ہدایت دی ہے کہ وہ تمام اسپتالوں کو کورونا سے متعلق سپلائی کو وافر مقدار میں دستیاب رکھیں ۔میٹنگ کے دوران ڈائرکٹر ہیلتھ سروسز نے ٹیسٹنگ پر توجہ دینے کے علاوہ اسپتال انتظامیہ کو بھی ٹیسٹنگ میں اضافہ کرنے کی ہدایت دی۔ میٹنگ کے دوران ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز نے کہا کہ کیسوں میں اضافہ ہورہا ہے اور ہمیں ٹیسٹنگ ، قرنطین اور صحیح طریقے سے علاج پر توجہ مرکوز کرنی چاہئے۔  انہوں نے کہا کہ لوگ تھوڑے سے لاپرواہ ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کو احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنا کافی خطرناک ہوسکتا ہے اور یہ کویڈ کے خلاف لڑائی میں مشکل پیدا کرسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کسی بھی صورتحال سے نپٹنے کیلئے تیار ہے ۔
 
 
 

قدیم کتب میں کہیں بھی لفظ ’ہندو‘ نہیں :بھیم سنگھ

بھارت دراوڑوں کاملک تھا

مشرقی ایشیاء کے آریائوں نے قبضہ کیا

سرینگر//بھارت دراوڑوں کاملک تھا جس پر مشرقی ایشیاء سے آئے آریائوں نے قبضہ کیا۔اس بات کااظہار پنتھرس پارٹی کے صدر پروفیسر بھیم سنگھ نے ایک بیان میں کیا۔پنتھرس پارٹی صدر پروفیسر بھیم سنگھ نے راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ کے سربراہ موہن بھاگوت پر زوردیا کہ وہ آریائوں کے دیش کی شروعات سے تحقیق اور مطالعہ کریں۔انہوں نے کہا کہ بھارت کی تاریخ کا مطالعہ کرنے کیلئے تحقیق کی ضرورت ہے ،آج جس ملک کو’ ہندوستان ‘کہا جاتا ہے،وہ  انگریزوں کا دیاہوا نام ہے۔پروفیسر بھیم سنگھ نے کہا ہزاروں برس پہلے جب بھارت کا پہلا دھرم متعارف ہوا،لوگوں کو آرین کہا جاتا تھا،نہ کہ ہندو۔انہوں نے کہا کہ راشٹر سوئم سیوک سنگھ کے سربراہ موہن بھاگوت قدیم کتب کاحوالہ دیئے بغیرآریائوں کو ہندوکہتے ہیں ۔انہوں نے مزیدکہا کہ شری کرشن نے بھگوت گیتا میں مہابھارت کی جنگ کے دوران ارجن اور گروئوں کو ’آریہ‘کہہ کرمخاطب کیا ،جب وہ ارجن کو اپنے خاندان والوں کے ساتھ لڑنے کیلئے تیار کرنے کی کوشش کررہے تھے ۔رامائن میں بھی لفظ ’آریہ‘آیاہے ،نہ کہ ہندو۔پروفیسر بھیم سنگھ نے کہا کہ رامائن،گیتا،مہابھارت،ویداوراُپنشدوں کے کسی بھی ایک شلوک میں کہیں بھی لفظ ’ہندو‘استعمال نہیں ہوا ہے۔درحقیقت ہندوستان کثیرکاملک ہے اور کثرت کیلئے ہے۔بھارت کے آئین میں بھی کہیں لفظ’ہندو‘استعمال نہیں ہواہے۔پروفیسر بھیم سنگھ نے آریائی رہنمائوں جو اب اپنے آپ کو ہندو کہلاتے ہیں،سے کہا کہ وہ قدیم ادب کاکھلی آنکھوں سے مطالعہ کریں کہ آریاورتاکو کبھی ہندوملک نہیں کہاگیا۔یہ دراوڑوں کا ملک تھا جس پرمشرقی ایشیاء سے آئے آریائوں نے قبضہ کیا۔کہیں بھی قدیم تاریخ  اور ادب میں  لفظ ’ہندو‘کاذکر نہیں ہے۔یہ ’ہندو‘لفظ کہاں سے اُبھرا،اس کی تحقیق کی جانی چاہیے ، قدیم ادب اور تاریخ کے مطالعے کے ساتھ۔پروفیسر بھیم سنگھ نے کہا کہ جنوب مشرقی ایشیاء جسے اب ہندوستان کہاجاتا ہے ،میں سینکڑوں سلطنتیں تھیں ۔لازمی ہے کہ قلمکار،شاعر،صحافی ادب کے میدان میں تاریخ کو کھوج ڈالیں۔متعددحملہ آورہندوستان آئے ،پرتگالی پہلے آئے۔قدیم تاریخ کے کتب میں ہمالیہ کے دامن کوآریہ ورت کہاجاتا تھا،جب برطانوی آئے ،انہوں نے متعددآزادسلطنتوں کو فتح کیااور پورے اراضی کو انڈیایاہندوستان کہا۔ پروفیسر بھیم سنگھ نے راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ کے سربراہ موہن بھاگوت سے اپیل کی کہ وہ آریائوں کی تاریخ کا شروع سے مطالعہ کریں۔انہوں نے کہا کہ بھارت ،جسے اب ہندوستان کہا جاتا ہے،کی تاریخ کا مطالعہ کرنے کیلئے تحقیق کی ضرورت ہے۔
 
 
 

لداخ میں مزید12متاثر،1فوت

لیہہ//لداخ میں کورونا وائرس سے مزید 12افراد متاثر اورایک فوت ہوا اور اس طرح مرکزی زیر انتظام لداخ میں متاثرین کی تعداد 21ہزار 540ہوگئی ہے جن میں20ہزار 76صحتیاب جبکہ 250معاملات ابھی فعال ہیں۔ لداخ میں منگل کو مزید ایک شخص فوت ہوگیا ہے جو لہہ سے تعلق رکھتا ہے۔اس طرح لداخ میں متوفین کی مجموعی تعداد214ہوگئی ہے جن میں 156لہہ جبکہ 58کرگل میں فوت ہوئے ۔ اس دوران پچھلے 24گھنٹوں میں مزید 29افراد صحتیاب ہوئے ۔ لداخ  میں سرگرم معاملات کی مجموعی تعداد 250ہے جن میں 229لہہ جبکہ 21کرگل سے تعلق رکھتے ہیں۔ 
 
 
 

گزریال کے بجلی ٹرانسفارمرکو آگ سے نقصان

اشرف چراغ 
کپوارہ//کرالہ پورہ کے مضافات ڈون واری گزریال میں دوران شب بجلی ٹرانسفارمر میں آگ نمودار ہوئی جس کی وجہ سے ٹرانسفارمر کو جزوی نقصان پہنچا جبکہ مقامی لوگو ں نے بر وقت کاروائی کر کے آس پاس کی آ بادی کو بچا لیا ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے پیر اور منگل کی درمیانی رات کو ڈون واری گزریال میں نصب بجلی ٹرانسفارمر میں آگ نمو دار ہوئی ۔آگ نمودارہوتے ہی مقامی لوگو ں وہاں پر جمع ہوئے اور بچائو کاروائی کرتے ہوئے آگ پر قابو پا لیا تاہم ٹرانسفارمر کو جزوی نقصان پہنچ چکا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے بجلی ٹرانسفارمر کو آبادی کے وسط میں نصب کیا گیاہے جس کی وجہ سے اس بستی کو ہمیشہ خطرہ لاحق رہتا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ اگر لوگو ں نے دوران شب بر وقت کاروائی کرتے ہوئے آگ پر قابو پایاہوتا، تو آس پاس کی بستی کو بھی خطرہ تھا ۔لوگو ں نے محکمہ بجلی کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس بجلی ٹرانسفارمر کوبستی سے باہر نصب کیا جائے ۔
 
 
 

’سائبر آگاہی دن‘ | نئی تیکنالوجی کے نئے چیلنجوں میں سائبر جرائم بھی شامل:ڈاکٹرنثار

سرینگر//نئی تیکنالوجی نے انسانی سماج کیلئے نئے چیلنج کھڑاکئے ہیںاوران میں سائبر جرائم ایک چیلنج ہے۔اس بات کا اظہار کشمیریونیورسٹی کے رجسٹرار ڈاکٹرنثاراحمد میرنے یونیورسٹی کے قانون کے اسکول میں منگل کو منعقدہ ایک خصوصی تقریری سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،جو ’سائبرجاگرتادن ‘منانے کے سلسلے میں منعقد کیا گیاتھا۔ڈاکٹر نثار نے نوجوان طلبہ سے کہا کہ ایسے تقاریر انہیں سائبر جرائم کی روکتھام اورقانونی برادری ،جن میں ماہرین تعلیم اوروکلاء بھی شامل ہیں، کودرپیش نئے چیلنجز سے متعلق مزیدجاننے کا موقعہ فراہم کرتے ہیں ۔یونیورسٹی کے قانون کے اسکول کی سراہنا کرتے ہوئے ڈاکٹر میر نے کہایونیورسٹی کے قانون کے طلاب کو یونیورسٹی کے سفیروں کے طور کام کرنا ہے تاکہ ملک اورملک سے باہر کشمیریونیورسٹی کے بارے میں جانکاری فراہم ہو۔قانون کے شعبے کے سربراہ پروفیسر بیوٹی بانڈے نے شرکاکاخیرمقدم کیا،جبکہ ڈاکٹرمحمد یاسین اسسٹنٹ پروفسیر شعبہ قانون نے ’سائبر آگاہی دن ‘ کی اہمیت اورمقاصد بیان کئے۔ڈاکٹر میر جنیدعالم نے متعددسائبر جرائم کاحوالہ دیااور آئی ٹی ایکٹ2002اور تعزیرات ہند کے تحت ان جرائم کی سزاکے بارے میں جانکاری دی۔
 
 
 

ایل جی گریوینس سیل کا ویر جی ہانگلو کو اَلوداعیہ 

جموں//لیفٹیننٹ گورنرس گریوینس سیل سول سیکرٹریٹ نے سیکرٹری پبلک گریوینس ویر جی ہانگلو کو ان کی سبکدوشی پرپر وَقار الوداعیہ دیا ۔ویر جی ہانگلوزائد اَز 37برس سے اَپنی خدمات انجام دینے کے بعد سرکاری ملازمت سے سبکدوش ہوئے۔کمشنر سیکرٹری پبلک گریوینس ریحانہ بتول نے سبکدوش ہونے والے آفیسر کی ریٹائرمنٹ کے بعد صحت مند اور خوشحال زندگی کے لئے دعا کی۔
 
 
 
 
 
 
 

پہلگام کا خوبصورت علاقہ |  رینز پل بنیادی سہولیات سے محروم 

سرینگر//پہلگام کے خوبصور علاقہ رینز پل میں لوگ بنیادی سہولیات سے محروم ہیں۔ مقامی لوگوں کے مطابق نالہ لدر پربرسوں سے لکڑی کا ایک پْل بنا ہے جو میویشوں کے ساتھ ساتھ انسانوں کیلئے بھی باعث خطرہ ہے اور اب تک متعدد واقعات پیش آئے ہیں جن میں میویشی اور انسان پل کو پار کرنے کے دوران نالہ میں ڈوب گئے۔چار گائوں پر مشتمل اس علاقے کی آبادی ہزاروں افرادپر مشتمل ہے لیکن اس خوبصورت علاقے کو سرکار نے نظر انداز کررکھا ہے۔مقامی لوگوں نے کہا کہ یہاں بجلی، پانی اور سڑکوں کی سہولیات دستیاب نہیں ہیں۔ اس سلسلے میں کئی بار متعلقہ حکام خاصکر پہلگام ڈیولپمنٹ اتھارٹی سے استدعاکی گئی تھی کہ اس نالہ پر ایک پْل تعمیر کیا جائے کیونکہ لکڑی کے اس پل سے اب تک متعدد مویشی اور انسان حادثات کا شکارہو چکے ہیں ۔لوگوں نے کہاکہ اس ضمن میں متعلقہ حکام نے کوئی بھی اقدام نہیں کیا۔ ادھر پہلگام ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے افسران کا کہنا ہے کہ علاقہ میں جلد ہی پل تعمیر شروع کیا جائے۔سی این آئی
 
 

 خانصاحب بڈگام میںپولیس دربار | مختلف سماجی مسائل پر تبادلہ خیال

سرینگر//خانصاحب میں ایک پولیس دربار کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت ایس ڈی پی او خانصاحب نے کی۔پولیس دربار میںایس ایچ او خانصاحب کے علاوہ بڑی تعدادمیں علاقے کے معززین نے شرکت کی۔ شرکاء نے اس موقع پر مختلف مسائل جس میں ٹریفک کی نقل و حمل ، بجلی کٹوتی ، پانی کی قلت، منشیات کی لعنت، سماجی جرائم اور دیگر کئی مسائل کو اجاگر کیا ۔پولیس نے شرکاء کو یقین دلایا کی کہ ان کے مسائل کو ترجیہی بنیادوں پر حل کیا جائے گا اور دیگر مسائل کو متعلقہ حکام کی نوٹس میں لایا جائے گا تاکہ انکا جلدی سے ازالہ ہوسکے۔اس موقع پر شرکاء سے درخواست کی گئی کہ وہ کووڈ19کو مدنظر رکھتے ہوئے مناسب احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔ایس ڈی پی او نے شرکاء کو کووڈ 19کے پھیلاؤ پر قابو پانے کیلئے احتیاطی تدابیر کے بارے میں بھی آگاہی فراہم کی تاکہ وہ اس وبائی مرض سے بچ جائیں۔ اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر ملک دشمن سرگرمیوں کے لیے نوجوان لڑکوں کے استحصال کے بارے میں بھی آگاہ کیا اور انہیں بچوںونوجوانوں کے آن لائن رویے پر نظر رکھنے کی ضرورت کے بارے میں مشورہ دیا۔شرکاء نے پولیس کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔
 
 

نیشنل کانفرنس کا اوڑی اور دریش کدل آتشزدگان سے اظہار یکجہتی

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے سٹیٹ سیکریٹری عرفان احمدشاہ ،شمالی زون صدر جاوید احمد ڈار اور صدرِ ضلع بارہمولہ سجاد شفیع اوڑی نے دریش کدل سرینگر اور بونیا راوڑی میں 2رہائشی مکانوں اور 8دکانوں کے خاکستر ہونے پر گہرے صدمے کا اظہار کیا اور متاثرین کے ساتھ ہمدردی کا اظہارکیا۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ آتشزگان کی فوری بازآبادکاری کیلئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں اور فی الوقت متاثرین کے قیام و طعام کا انتظام کیا جائے ۔ انہوں نے سرینگر اور بارہمولہ کے ضلع ترقیاتی کمشنر وںپر زور دیا کہ متاثرین کی فوری بازآبادکاری کیلئے اقدامات کئے جائیں۔
 
 

جمعیت اہلحدیث کے سرکردہ رکن محمد یحییٰ نقاش فوت

سرینگر//جمعیت اہلحدیث کے سینئر رکن اور سرکردہ تاجر محمد یحییٰ نقاش ساکن لالبازار سرینگر گذشتہ شب انتقال کرگئے ۔موصوف گذشتہ کچھ عرصے سے علیل تھے۔ صدرِ تنظیم پروفیسر غلام محمد بٹ المدنی کی پیشوائی میں ان کی نماز جنازہ ادا کی گئی ۔انہوں نے اس موقع پرمختصر انداز میں توحید و سنت کے فروغ اور پھیلاو کیلئے ان کی خدمات کو سراہا اور کہا کہ جمعیت کے ساتھ ان کا تعلق مثالی تھا ۔ انہوں نے کہا کہ صدمہ صرف ان کے لواحقین کو نہیں بلکہ جمعیت اہلحدیث سے وابستہ سبھی پیر و جواں رنج و غم کا شکار ہیں ۔ انہوں نے مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی ۔جمعیت کی دیگر اکائیوں اور ذمہ داروں نے بھی مرحوم کی مغفرت کیلئے دعا کی۔

 سرکار ہماری ہوگی ،وزیر اعلیٰ بھی بھاجپا کا ہی ہو گا :صوفی یوسف 

سرینگر// بھارتیہ جنتا پارٹی کے نائب صدر صوفی محمد یوسف نے بتایا کہ جموںو کشمیر میں اگلی سرکار بی جے پی کی ہو گی اور وزیر اعلیٰ بھی بھاجپاکا ہی ہوگا ۔موصوف منگل کے روز سریگفوارہ بجبہارہ میںپارٹی کارکنان سے خطاب کر رہے تھے ۔انہوں نے پی ڈی پی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا جو لوگ کل تک بے جے پی کی مخالفت کرتے تھے، ان کا ہی ایک لیڈر رفیع احمد میر اپنی پارٹی میں شامل ہواہے جو بی جے پی کی اپنی پارٹی ہے ۔انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں مزید کئی لیڈران بی جے پی کے ساتھ اننت ناگ میں شمولیت کریں گے ۔ صوفی یوسف نے کہا کہ کانگریس پارٹی اب ملک کے ساتھ ساتھ جموںو کشمیر میں بھی ختم ہو ئی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ غلام نبی آزاد کولگام میں جلسہ منعقد کر رہا ہے اور غلام احمد میر بڈگام میں جس سے یہ عیاں ہورہا ہے کہ اب یہاں بھی یہ پارٹی بکھر گئی ہے ۔کے این ایس
 

مجلس النساء کے’نساء ایوارڈز2021‘ کا اعلان 

سرینگر//ادبی مرکز کمراز کی ایک اکائی مجلس النساء اس سال اپنی گولڈن جوبلی منا رہی ہے اوراس موقع پر ’نساء ایوارڈ2021‘فراہم کررہی ہے ۔ایک بیان کے مطابق مجلس نے فیصلہ لیا ہے کہ ڈاکٹر فرحت جبین کو طب (زنانہ امراض)کے شعبے میں ان کی خدمات کیلئے ، حنیفہ قریشی کو شعبہ تعلیم ، رافعہ ولی کو ادب اور فل برائٹ فیلو اشواق مسعودی کو صحافت کے میدان میں ان کی کامیابی پریہ ایوارڈ دئے جارہے ہیں۔مجلس النساء نے تمام ایوارڈ حاصل کرنے والوں کو مبارکباد دی ہے۔ایوارڈ جلد ہی سوپور میں پیش کیے جائیں گے جو ادبی مرکز کمرازکی گولڈن جوبلی تقریبات کا حصہ ہوں گے۔ 
 
 

عامر حسینی کی تین نئی کتابیںمنظر عام پر 

سرینگر//معروف اسلامی شاعر اور نقادمحمد حیات عامرحسینی کی تین نئی کتابیں منظر عام پر آچکی ہیں جن میں کبریت احمر، پارئہ عم کا کشمیری زبان میں ترجہ ’نور ہ پرتو‘ اور ان کی ایک اور طویل نعت ’رقص جہاںتاب‘ شامل ہے ۔ اس سے پہلے ان کا اوراد فتحیہ کاکشمیری زبان میں ترجمہ ہوا تھا ۔ وہ فارسی ، کشمیر ی، اردو اور انگریزی زبانوں میں لکھتے ہیں اور اس وقت وہ حضرت میر سید علی ہمدانیؒاور علمدار کشمیرؒکے فلسفہ پر لکھ رہے ہیں جس کے کچھ مضامین بین الاقوامی رسائل میں چھپ چکے ہیں۔ کشمیری زبان میں ان کے شعری مجموعہ ’زمزم ہانکل‘ کو عالمی سطح پر پذیرائی مل چکی ہے۔سی این آئی
 
 
 

الطاف بخاری کا پارٹی لیڈر سے اظہار تعزیت 

سرینگر//اپنی پارٹی صدر محمد الطاف بخاری نے پارٹی زونل سینئر نائب صدر امیرا کدل محمد اشرف بٹ کی بہن کے انتقال پردکھ کااظہار کیا ہے، جوسکمزصورہ میں گذشتہ روز اِس دنیا سے رحلت کرگئیں۔ایک تعزیتی بیان میں بخاری نے مرحومہ کو نیک سیرت خاتون قرار دیا ۔ انہوں نے کہا ’’میں دکھ کی اس گھڑی میں غمزدہ کنبے کے ساتھ ہوں ، سوگوارانِ کنبہ خاص طور سے ہماری جماعت کے لیڈر محمد اشرف بٹ کے ساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کرتا ہوں اور دعا گو ہوں کہ اللہ تبارک وتعالیٰ انہیں یہ ناقابل ِ تلافی نقصان بردداشت کرنے کی ہمت عطا کرے‘‘۔ پارٹی صدر کے علاوہ دیگر ذمہ داروں نے بھی لواحقین کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے مرحومہ کی جنت نشینی کیلئے دعا کی ہے۔
 
 

 کانگریس کا پارٹی لیڈر سے اظہار تعزیت

سرینگر//جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی (جے کے پی سی سی) نے منگل کو پارٹی لیڈر وسیم احمد شالہ کے چچا غلام نبی شالہ کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا اور سوگوار خاندان کے ساتھ گہرے صدمے کا اظہار کیا۔جے کے پی سی سی صدر غلام احمد میر نے وسیم احمد شالہ اور سوگوار خاندان کے دیگر افراد کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا اور مرحوم کی روح کے لیے ابدی سکون کے لیے دعا کی۔سرینگر ضلع کانگریس کمیٹی کے صدر عبدالغنی خان اور دیگر پارٹی رہنماؤں نے غلام نبی شالہ کے انتقال پر دکھ کا اظہار کیا۔