تازہ ترین

مزید خبریں

تاریخ    30 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   


۔49متوفی پولیس اہلکاروں کو بچوںوظائف

دلباغ سنگھ نے ترقیاب اہلکاروں کے شانوں پر تارے سجائے

جموں//مارے گئے پولیس اہلکاروں کے بچوں کومالی مددفراہم کرنے کی دوڑدھوپ کوجاری رکھتے ہوئے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے2 لاکھ 45 ہزار کے وظائف جاں بحق ہوئے اہلکاروں کے لواحقین کے حق میں منظور کئے۔یہ وظائف دوران ڈیوٹی49فوت ہوئے پولیس اہلکاروں کے بچوں کے حق میں منظور کئے گئے۔نوبچوں جوپرائمری کلاسزمیں زیرتعلیم ہیں، کے حق میں ہرایک کیلئے5000روپے  منظور کئے گئے جبکہ مڈل کلاسوں میں زیرتعلیم 10بچوں ،ہائراسکینڈری کلاسز کے14بچوں ،سینئرسکینڈری کے 12بچوں اور گریجویشن کررہے 4طلاب کے حق میںفی کس 5ہزارروپے منظور کئے گئے۔یہ وظائف پولیس ویلفیئرفنڈ سے منظورکئے گئے۔ ادھر دلباغ سنگھ نے یہاں دوترقی یاب اہلکاروں شانوں پر اسسٹنٹ سب انسپکٹر عہدے کے تارے سجائے۔ترقی پانے اہلکاروں میں ونے دتا اور راجندرکمار شامل ہیں۔اس موقعہ پر ترقی پانے اہلکاروں کو مبارکباد دیتے ہوئے پولیس سربراہ نے صلاح دی کہ وہ تندہی اور لگن کے ساتھ کام کریںاورعوام کی امیدوں پر ہمیشہ کھرااُتریں۔
 
 

کان کنی اور معدنیات کے ضوابط میں نرمی کی گئی

سرینگر//بلال فرقانی// حکومت نے کان کنی اور معدنیات ضوابط میں بیکن،بارڈر روڈس آرگنائزیشن اور جی آر ای ایف کی جانب سے رائلٹی کی پیشگی ادائیگی میں نرمی کا اعلان کیاہے۔ سرکار کی جانب سے پیر کو جاری حکم نامہ میں کہا گیاہے کہ’’ جموں کشمیر میں رائلٹی کی پیشگی ادائیگی میں ان سرکاری محکموں،بیکن،بی آر او،جی آر ای ایف کے لیے نرمی کی جائے گی‘‘۔ آرڈر میں کہا گیا کہ محکمہ ارضیات اور کان کنی کی طرف سے قلیل مدتیڈسپوزل پرمٹ کے اجرا کی تاریخ سے ایک ماہ کے اندر رائلٹی ادا کریں گے۔ سرکار کا کہنا ہے’’ کان کنی اور معدنیات ڈیولپمنٹ اینڈ ریگولیشن ایکٹ مجریہ1957 مرکزی ایکٹ نمبر 67کے دفعہ23سی کے حاصل اختیارات کے استعمال کے تحت حکومت جموں و کشمیر معمولی معدنی رعایت، ذخیرہ اندوزی، معدنیات کی نقل و حمل اور غیر قانونی کان کنی کے قوانین، مجریہ2016کے ضابطہ 56 کے ذیلی اصول (1) کی شق (v) میں اس شق کو شامل کیا جائے گا۔
 
 

ناظم صحت کا سرینگرطیران گاہ کادورہ

تازہ کووِڈ - 19رہنماخطوط کے اطلاق کا جائزہ لیا

سرینگر //ایڈیشنل چیف سیکریٹری صحت و طبی تعلیم وویک بھاردواج کی ہدایت پر ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر مشتاق احمد راتھر نے پیر کو سرینگر ایئر پورٹ کا دورہ کیا اور وہاں تازہ گائیڈ لائنز کے اطلاق کا جائزہ لیا ۔ ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر نے ڈائریکٹر انٹر نیشنل ایئر ہ پورٹ کلدیپ سنگھ اور دیگر افسران کے ساتھ وزیرت صحت و خاندانی بہبود کی جانب سے جاری کی گئی ہدایت کی عمل آوری پر تفصیلی بات چیت کی۔ میٹنگ کے دوران ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر نے نئے قوائد و ضوابط پر سختی سے عمل کرنے کی بھی ہدایت دی۔ میٹنگ کے دوران ناظم صحت نے افسران کو ہدایت جاری کی کہ وہ بیرون ممالک سے آنے والے افراد کی ٹیستنگ اور دیگر احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کریں۔ میٹنگ میں ایئرپورٹ افسران کو بتایا گیا ہے کہ وہ 14دن قبل اپنی سفری تفاصیل اور منفی آر ٹی پی سء آر رپورٹ Air Suvidha portal کے ایپ پر اپلوڈ کریں۔  نئے قوائد و ضوابط یکم دسمبر سے لاگو ہوںگے۔ 
 
 

’اومی کرون ‘کاخطرہ،لوگ ہوشیاررہیں:سول سوسائٹی

سرینگر //نیوز ڈیسک//کورونا وائرس کی نئی ہیت ’اومی کرون ‘کے خطرے کو دیکھتے ہوئے جموں و کشمیر سول سوسایٹی نے لوگوں کوخبر دار رہنے کی اپیل کی ہے۔ جے کے سی ایف سی ایس عبدالقیوم وانی نے کہا کہ تمام مشکلات کے بائوجود بھی جموں و کشمیر کورونا وائرس سے نپٹنے میں کامیاب ہوا ہے  اور اس کامیابی کا سہرا جموں و کشمیر کے لوگوں کو جاتا ہے۔ چیئرمین نے کہا کہ وائرس سے نپٹنے کیلئے ہمت، پیشہ ورانہ اور طبی علمی قابلیت سے جموں و کشمیر میں ڈاکٹر پچھلے 2سال سے عالمی وباء کے ساتھ لڑ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اُمید ہے کہ تمام فریقین جن میں طبی ، نیم طبی عملہ، والنٹیر  اور رضاکار تنظیمیں  شامل ہیں،اسی طریقے سے نئے چیلنج کابھی مقابلہ کریں گے۔انہوں نے کہا کہ تمام اسپتالوں میں آلات ، بستر اور آکسیجن کے علاوہ دیگر سامان اور مشینری دستیاب ہوگی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ قوائد و ضوابط پہلے سے ہی ابھی لاگوں ہے اور لوگوں کو اجتماعی پروگرام میں شرکت کرنے سے گریز کریں گے۔ 
 
 
 

محکمہ بجلی کے ڈیلی ویجروں کے مسائل

 حل کیلئے حکومت کی عدم توجہی تشویشناک:اپنی پارٹی لیڈر

سرینگر//اپنی پارٹی ضلع صدر پلوامہ غلام محمد میر نے محکمہ بجلی کے یومیہ اجرت پر کام کررہے ملازمین کے دیرینہ مطالبات کے تئیں حکومت کی عدم توجہی اور غیر سنجیدہ پر گہری تشویش کا اظہار کیاہے۔ ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ محکمہ بجلی کے ڈیلی ویجر سخت مشکلات کا شکار ہیں جو محکمہ میں کئی سالوں سے بغیر مطلوبہ حفاظتی سامان کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بجلی ٹھیک کرتے وقت کئی ملازمین نے اپنی جانیں کھوئیں، اِتنا خطرہ مول لینے اور تندہی سے خدمات انجام دینے کے باوجود اِن ملازمین کو ماہانہ صرف 6700روپے دیئے جارہے ہیں۔میر نے محکمہ کے انجینئروں ودیگر سٹاف ممبران سے کہا ہے کہ وہ اپنے اِس نظر انداز طبقہ کے حقوق کے لئے آواز بلند کریں۔ انہیں ڈیلی ویجروں کے مطالبات کی حمایت میں کھڑا ہونا چاہئے۔ انہوں نے حکومت پرزور دیاکہ اِن ڈیلی ویجروں کی مستقلی یقینی بنائی جائے۔
 

 بجلی کی عدم دستیابی

پوشپورہ ترہگام کی آبادی مشکلات سے دوچار

اشرف چراغ 
کپوارہ//ترہگام کے مضافاتی گائو ں پوشپورہ میں بجلی کی عدم دستیابی کے نتیجے میں لوگوں کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔علاقے کے وارڈ نمبر4کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ گزشتہ ایک ہفتہ سے انہیں بجلی کی عدم دستیابی کا سامنا ہے ۔لوگو ں کے مطابق جب محکمہ بجلی کے فیلڈ عملہ سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتا یا کہ وارڈ نمبر 4کو جس بجلی ٹرانسفارمر سے سپلائی فراہم کی جاتی ہے وہ خراب ہوچکا ہے ۔مقامی لوگو ں کے مطابق ایک ہفتہ گزرنے کے باجو دبھی خراب ہوئے بجلی ٹرانسفارمر کی مرمت نہیں کی جاتی ہے جس کے نتیجے میں بستی میںشام ہوتے ہی گھپ اندھیرا چھاجاتا ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ ایک طرف سخت سردی میں لوگو ں کو مشکلات کا سامنا ہے تو دوسری طرف ان کے بچو ں کے امتحانات چل رہے ہیں اور بجلی کی عدم دستیابی کی وجہ سے سخت پریشانیو ں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگو ں نے بجلی محکمہ کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور خراب شدہ بجلی ٹرانسفارمر کو ٹھیک کرنے کے لئے اقدامات کریں تاکہ سردیو ں کے ان ایام میں لوگو ں کے مشکلات کا ازالہ ہو سکے ۔
 
 
 

قاضی گنڈمیں ریل گاڑی سے گرکر خاتون زخمی

محمد تسکین
بانہال//ریلوے سٹیشن قاضی گنڈ پر ایک خاتون ریل گاڑی سے اترنے کے دوران گر کر زخمی ہوگئی۔گزشتہ روز 38سالہ رفیقہ بیگم زوجہ نثار احمد ساکنہ مہومنگت تحصیل کھڑی ضلع رام بن نے عجلت میں قاضی گنڈ سٹیشن پر ریل نمبر04619سے اترنے کی کوشش کی جس کے سبب وہ پلیٹ فارم پر گر گئی اور وہ زخمی ہوگئی ۔ مذکورہ خاتون کو مسافروں اور ریلوے پولیس نے اسے اٹھالیا اور طبی امداد دی گئی۔
 
 
 

سبھی اضلاع میں ’سمواد‘ کے تحت پروگرام ہونگے

انکم ٹیکس اور سنٹرل جی ایس ٹی پر تبادلہ خیال ہوگا

سرینگر//انکم ٹیکس اور سنٹرل جی ایس ٹی محکمہ کشمیر کے تمام 10 اضلاع یعنی شوپیاں، کولگام، پلوامہ، بانڈی پورہ، گاندربل، اننت ناگ، سرینگر، بڈگام، بارہمولہ میں جموں و کشمیر کے تمام اسٹیک ہولڈروں کے ساتھ ’سمواد‘کے عنوان سے پروگرام منعقد کریں گے۔ کپوارہ اور لداخ کے 2 اضلاع یعنی لیہہ اور کرگل میں یکم دسمبر سے 7 دسمبر 2021 تک جبکہ جموں صوبے میں بھی اسی طرح کے پروگرام منعقد کیے جا رہے ہیں۔یاد رہے کہ 22 نومبر 2021 کو ایس کے آئی سی سی سرینگر میں ’سمواد – جموں و کشمیر کے ٹیکس ایڈمنسٹریٹرز اور اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ بات چیت‘ میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے ہدایت کی تھی کہ انکم ٹیکس اور سینٹرل جی ایس ٹی حکام کو مشترکہ طور پر جموں و کشمیر کے تمام اضلاع کا دورہ کرنا چاہئے تاکہ وہ ایک آؤٹ ریچ پروگرام انجام دے اور چھوٹے اور درمیانے تاجروں، نوجوان پیشہ ور افراد، اسٹارٹ اپ اور نوجوانوں سمیت مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ انٹرایکٹو سیشن منعقد کریں۔ یہ پہلی بار ہے کہ دونوں محکموں کی طرف سے مشترکہ طور پر جموں و کشمیر کے لوگوں سے براہ راست رابطہ قائم کرنے اور حکومت ہند سے ان کی آراء ، مشورے اور خواہشات حاصل کرنے کے لیے اس طرح کی ایک مشق انکم ٹیکس ڈیپارٹمنٹ اور مرکزی کے ساتھ کی جا رہی ہے۔
 

ڈورو میں مویشی چور سرگرم

۔ 2گائیں اور 2بچھڑوں کوچرالیا

عارف بلوچ
اننت ناگ//اننت ناگ میں مویشی چوروں نے ایک گائوخانے سے دوران شب دو گائیں اور 2بچھڑوں کو چراکر ایک غریب شخص کو روزی روٹی سے محروم کردیا ہے ۔ اننت ناگ ضلع کے براگام ڈورو میں مویشی چوروں نے عبدالرحمان شیخ اورمحمد امین شیخ نامی شہریوں کے گائوخانوں  سے 2گائیں اور 2بچھڑے چرالئے ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ علاقے میں مویشی چوری کی واردات کوئی نئی بات نہیں بلکہ اس سے قبل بھی کئی مرتبہ مویشی چوروں نے کئی مویشی چرالئے ہیں تاہم پولیس ان مویشی چوروں کو پکڑنے میں ہنوز ناکام ہے ۔ مقامی لوگوں نے پولیس سے اس سلسلے میں سخت اقدامات کی اپیل کی۔
 

لوگ جمہوری حکومت چاہتے ہیں

  دمہال ہانجی پورہ میں اجلاس 

سرینگر//اپنی پارٹی نے پیر کو ضلع کولگام کے دمہال ہانجی پورہ میں ورکروں کا ایک اجلاس منعقد کیا جس میں کثیر تعداد میں پارٹی سے وابستہ کارکنان نے شرکت کی۔ میٹنگ کی صدارت چیف کارڈی نیٹر عبدالمجید پڈر نے کی جنہوں نے ورکروں سے عوامی بہبود کے لئے تندہی سے کام کرنے کی تلقین کی۔ایک بیان کے مطابق انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی جموں وکشمیر میں واحد سیاسی پلیٹ فارم ہے جس نے لگاتار لوگوں کے مسائل کو اُجاگر کیا، خاصکر اُس وقت جب روایتی سیاسی جماعتوں نے خاموشی اختیار کر لی تھی۔ انہوں نے کہا’’اپنی پارٹی ہمیشہ جموں وکشمیر میں لوگوں کے حقوق کے لئے کھڑی ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک وقت تھا جب لوگ اُمید کھوچکے تھے اور اُن میں عدم تحفظ کا احساس تھا، یہ ہماری جماعت کی انتھک کوششیں تھیں کہ ہم نے جموں وکشمیر کے باشندوں کے لئے نوکریوں اور اراضی کے حقوق بحال کروائے‘‘۔ میٹنگ کے دوران پڈر نے جموں وکشمیر میں جمہوری حکومت کی ضرورت پرزور دیا کیونکہ لوگوں کو پسِ پشت ڈال دیاگیاہے اور اُن کی مشکلات کی کہیں سنوائی نہیں ہورہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک بیروکریٹک نظام کبھی بھی جمہوری حکومت کا متبادل نہیں ہوسکتااسلئے مرکزی سرکار عوام کے ساتھ کئے گئے وعدوں کو پورا کرے اور خطہ میں انتخابی عمل کا آغاز کرتے ہوئے ریاستی درجہ بحال کیاجائے تاکہ لوگوں کے مشکلات کم ہوں‘‘۔ انہوں نے انتظامیہ سے گذارش کی سرمائی ایام کے دوران بلاخلل بجلی سپلائی یقینی بنائی جائے۔