تازہ ترین

سردی میں خشک موسم مدافعتی نظام کیلئے ٹھیک نہیں

دمہ اور چھاتی کے دیگر امراض میں مبتلا لوگ گھروں میں بیٹھنے پر اکتفاء کریں: معالجین

تاریخ    25 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //دمہ اور چھاتی کے مختلف امراض میں مبتلا افراد کو شدید سردی اور خشک موسم میں باہر آنے سے پرہیز کرنے کی تلقین کرتے ہوئے معالجین کا کہنا ہے کہ سردی اور خشک ہوائوں کی وجہ سے چھاتی کے امراض میں مبتلا مریضوں کی مدافعتی قوت کم ہوجاتی ہے اور اس دوران کبھی بھی کوئی بھی وائرس حملہ کرسکتا ہے۔ امراض چھاتی کے ماہرین کا کہنا ہے کہ عمر رسیدہ افراد کو بلا وجہ گھروں سے باہر نہیں آنا چاہئے اور نہ ہی گھروں میں دھواں پیدا کرنے والی بخاریوں کا استعمال کرنا چاہئے۔ پچھلے 2ہفتوں سے میڈیکل سائنسز صورہ  میں شعبہ جنرل میڈیسن میں علاج و معالجہ کیلئے آنے والے افراد کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ شعبہ انٹرنل میڈیسن میں بطور اسسٹنٹ پروفیسر تعینات ڈاکٹر مدثر قادری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ سردی اور خشک موسم کی وجہ سے دو ہفتوں میں چھاتی کے امراض میں مبتلا مریضوں میں 20فیصد اضافہ ہوا ہے‘‘۔انہوں نے کہا ’’ دمہ اور چھاتی کے مختلف امراض میں مبتلا مریضوں میں سخت سردی اور ہوا میں نمی کی کمی کی وجہ سے ناک، سانس لینے کی نلی اور چھاتی میں مدافعتی قوت کم ہوجاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس دوران کسی بھی وائرس سے مریض متاثر ہوتا ہے ۔ اسلئے دمہ اور چھاتی کے امراض میں مبتلا مریضوں کو کسی بھی صورت میں باہر نہیں آنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے بزرگوں اور بیماریوں کو گھروں میں رکھنے کے دوران سماجی دوری اور بخاریوں کا استعمال نہیں کیا جانا چاہئے۔ ڈاکٹر مدثر نے بتایا ’’کوئلے اور گیس سے چلنے والی بخاریوں کی وجہ سے کمرے  میں آکسیجن کی کمی پیدا ہوتی ہے اور اس کی وجہ سے اچانک لوگ بے ہوش ہوکر فوت ہوجاتے ہیں‘‘۔ڈاکٹر مدثر نے بتایا ’’ جو کورونا متاثرین گھر قرنطین کئے گئے ہیں ، انہیں سماجی دوری اور گرمی کا خاص خیال رکھنا چاہئے۔ ماہر امراض چھاتی ڈاکٹر فرہانہ کہتی ہیں کہ سردیاں نہ صرف دمہ اور چھاتی کے دیگر امراض میں مبتلا مریضوں کیلئے مشکلات پیدا کرتی ہیں بلکہ شوگر، کینسر اور دیگر بیماریوں میں مبتلا مریضوں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شوگر، کینسر ، بلڈپریشر ،دمہ اور چھاتی کی بیماری میں مبتلا مریضوں کو بروقت ادویات، متواتر طور پر ڈاکٹری معائنہ کے علاوہ سالانہ ٹیکے بھی دینے چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ دمہ اور چھاتی کے مریضوں کو کورونا وائرس کے علاوہ Influenzaاور دیگر وائرس کیلئے بھی ویکسین لینا چاہئے کیونکہ کویڈ کے علاوہ دیگر وائرس بھی ان مریضوں کو نقصان پہنچاتے ہیں۔ ڈاکٹر فرہانہ نے بتایا کہ مختلف لوگوں کیلئے سالانہ ٹیکہ کاری دمہ اور چھاتی میں مبتلا مریضوں کیلئے راحت پیدا کرسکتی ہے۔