تازہ ترین

شادی سے پہلے وزن کیسے کم کیا جائے؟

صحت اور خوبصورتی کیلئے سرکہ کا استعمال

تاریخ    25 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   


رابعہ شیخ
اب جبکہ ہمارے یہاںسرما کی سردیوں کے ساتھ ہی شادیوں کا موسم اختتام کو پہنچا ہے توکیوں نہ آنے شادیوں کے موسم میںمنعقدہ شادیوں سے پہلے لی جانے والی سب سے بڑی ٹینشن کا ذکر کیا جائے۔ ہاں!اگر آپ کا وزن زیادہ ہے تو یقیناً آپ سمجھ گئی ہوںگی کہ کس ٹینشن کا ذکر کیا جارہا ہے۔ لہنگا فٹ ہونے کی ٹینشن، آستینوں میں بازو زیادہ بھاری لگنے کی ٹینشن یا پھر میک اَپ میں آنٹی والا لُک آنےکی ٹینشن۔ ظاہر ہے کہ ایک مکمل اور خوبصورت دلہن کیلئے نہ صرف بہترین لباس، خوبصورت جیولری اور دلکش انداز لازمی تصور کیا جاتا ہے بلکہ ایک آئیڈیل ویٹ (وزن ) بھی ضروری ہے اور اس خواہش کی تکمیل کیلئے شادی سے پہلے ہر دلہن کے سر پر وزن کم کرنے کی دھن سوار ہوجاتی ہے۔ اگر آپ کو بھی اسی صورتحال کا سامنا ہےتو شادی سے کم ازکم 6سے 8ہفتے پہلے ایکٹو ہوجائیے، کن عوامل کے ذریعے وزن میں کمی کی جاسکتی ہے، یہ ہم آپ کو بتائیں گے۔
باڈی پوسچر :  ہر دلہن کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ اپنےبناؤ سنگھار کے حوالے سے ایسے بہترین لباس اور میک اَپ لُک کا انتخاب کرے، جو اس کو خوبصورت و پرکشش روپ عطا کرے لیکن اس خوبصورتی سے قبل جو چیز زیادہ اہم ہے وہ آپ کا باڈی پوسچر ہے۔ اگر آپ کا باڈی پوسچر خوبصورت اور متوازن نہیں ہے تو ذیل میں دیے گئے اسٹیپس پر باقاعدگی سے عمل کرکے آپ شادی والے دن لمبی، دبلی اور مزید جاذبِ نظر لگ سکتی ہیں۔آلتی پالتی مار کر بیٹھ جائیں،سر پر کوئی کشن یا کتاب وغیرہ رکھیں اور بالکل سیدھی بیٹھیں، پھر اسی طرح اٹھیں اور دوبارہ بیٹھنے کی کوشش کریں۔ جب آپ کو محسوس ہو کہ اب آپ کتاب یا کشن گرائے بنا آسانی کے ساتھ اٹھ اور بیٹھ رہی ہیں تو پھر چلنے کی کوشش کریں۔ دن میں روزانہ 15سے 20منٹ یہ عمل کریں۔ وقت کے ساتھ بیٹھنے، اُٹھنے اور چلنے کا دورانیہ بڑھائیں۔اگر آپ کے بازو موٹے ہیں تو اس کے لئے دونوں ہاتھ اپنے بازوؤں کے سامنے بالکل سیدھے کرلیں، پھر مٹھیاں بند کرکے کلاک وائز اور اینٹی کلاک وائز گھمائیں۔ ہاتھوں کو فل اسٹریچ کریں ۔ آغاز میں یہ عمل10مرتبہ کریں اور پھر ہر دن اس کی تعداد بڑھاتی جائیں۔ اگر آپ کی چِن ڈبل ہے اور چہرے پر ایک ناگوار تاثر دیتی ہے تو شادی سے قبل اس سے نجات ضروری ہے۔ اس کیلئے منہ اوپر کی طرف کرکے انگلیوں کی مدد سے چِن کو آہستہ آہستہ تھپتھپائیں۔
ورزش سے وزن کم کریں :شادی والے دن دبلا پتلا اور سلم نظر آنے کے لیے ورزش بے حد ضروری ہے ۔ اس سے نہ صرف وزن کم کیا جاسکتا ہے بلکہ فٹنس اور فعالیت بھی برقرار رکھی جاسکتی ہے۔ ساتھ ہی اس جسمانی سرگرمی کے ذریعے جسم میں توانائی کی سطح بھی بڑھ جاتی ہے۔ شادی سے کم از کم ایک سے دو ماہ پہلے ورزش کرنا شروع کردیں۔ ذیل میں دی گئی ورزش کو آپ کے صرف14منٹ درکار ہوں گے اور ان چند منٹوں کے دوران کی گئی یہ ورزش ایک مہینے میں ہی آپ کے وزن میں خاصی کمی کا باعث بنے گی۔ ہر ورزش کے لیے دو منٹ مختص کریں۔٭اسکواٹس٭جاگنگ یا سیڑھیاں چڑھنا اور اترنا٭اسٹڈی چیئر کے ساتھ پریس اَپ اور پریس ڈپ٭جمپنگ جیکس٭پلینکس اور سٹ اَپ۔ہر مشق کے دوران 30سیکنڈ کا قفہ ضروری ہے۔ پہلے اور دوسرے ہفتے ایکسرسائز کا دورانیہ 14منٹ جبکہ تیسرے اور چوتھے ہفتے اس کا دورانیہ بڑھاکر دُگنا کردیں جبکہ پانچویں اور چھٹے ہفتے کا سیشن تین گنا بڑھا دیں۔ پہلے دوہفتوں میں20منٹ چہل قدمی کریں، تیسرے اور چوتھے ہفتے میں 30منٹ جبکہ پانچویں اور چھٹے ہفتے میں اس کا دورانیہ کم ازکم 40منٹ ہوجانا چاہیے۔
ڈائٹ پلان :    ایکسرسائز کے علاوہ جو ایک اور چیز اہم ہے، وہ آپ کا ڈائٹ پلان ہے۔ وزن کم کرنے کا مطلب یہ نہیں کہ کھانا پینا چھوڑ دیا جائے اور جسم کو درکار لازمی غذائیت بھی فراہم نہ کی جائے۔ اسی لیے شادی کی ویڈیو یا تصاویر میں دبلی پتلی نظر آنے سے بہتر ہے کہ صحت مند نظر آئیں۔ آپ ڈاکٹر کے مشورے سے بھرپور ڈائٹ کے ساتھ کچھ ایکسرسائز کرسکتی ہیں تاکہ آپ کے چہرے کی دلکشی اور بالوں کی مضبوطی اور گھنے پن میں کسی قسم کی کمی نہ پائے۔ علاوہ ازیں دوران ڈائٹ جن باتوں کا خیال رکھنا چاہیے وہ ذیل میں درج ہیں۔٭کم کھائیں لیکن اپنے ڈائٹ چارٹ میں زیادہ غذائیں شامل کریں٭دن بھر کی غذا میں پھلوں اور سبزیوں کا اضافہ کیجیے۔٭چینی اور ریفائنڈ کاربوہائیڈریٹ کی مقدار کم کردیں۔
دریں اثنا آپ کو معلوم ہوگا کہ سرکہ عام طور پر سلاد کا ذائقہ بڑھانے، ڈبہ بند غذاؤں کو محفوظ رکھنے یا پھر کھڑکی اور دروازوں کو چمکانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے لیکن اس کی افادیت اس سے کہیں زیادہ ہے۔ عربی، فارسی اور اردومیں بیک وقت ایک ہی نام سے معروف سرکہ انگریزی زبان میںVinegarکہلاتا ہے۔ یہ بظاہر ایک تیزابی مادہ ہوتا ہے، جو عام طور پر ایتھنول سے تیار کیا جاتا ہے۔ یہاں سرکہ سے مراد قدرتی طور پر تیار کیے جانے والا سرکہ ہے ناں کہ مصنوعی طریقے کے تحت تیار کردہ۔
سرکہ کئی قسم کا ہوتا ہے مثلاً سیب کا سرکہ، بلسان کا سرکہ، گنے کا سرکہ، ناریل کا سرکہ، کھجور کا سرکہ، پھلوں کا سرکہ، فلیورڈ سرکہ، شہد کا سرکہ، کیوی فروٹ کا سرکہ، چاولو ں کا سرکہ، سفید سرکہ اورکشمش کا سرکہ وغیرہ۔ سرکہ کی چند خاص اقسام ایسی ہیں جو دنیا بھر میں بالخصوص کچھ ممالک میں خاص اہمیت کی حامل ہیں۔سرکہ انبیائے کرام کو بھی بے حد پسند تھا۔ سنن ابن ماجہ کی ایک روایت کے مطابق نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا فرمان ہے،’’سرکہ کیا ہی عمدہ سالن ہے، اے اللہ سرکہ میں برکت عطا کر اس لئے کہ مجھ سے پہلے یہ تمام انبیاء کا سالن تھا اور جس گھر میں سرکہ ہو وہ گھر محتاج نہیں ہے‘‘۔
چین کی معروف ہوزونگ ایگریکلچرل یونیورسٹی میں کی جانے والی تحقیق کے مطابق سرکہ کا ترش ذائقہ جسم کو بلڈ گلوکوز لیول کنٹرول کرنے کے قابل بناتا ہے، اس سے میٹابولزم کو بہتر اور وزن کم کرنے میں مدد ملتی ہے جبکہ دوران خون بھی بہتر ہوتا ہے۔ دوسری جانب قدرتی اجزا کے ساتھ سرکہ کی تیاری کا عمل اسے انسانی جسم کے لیے بے شمار فوائد کا حامل بناتا ہے۔ویسے تو سرکہ مرد و خواتین دونوں کے لیےیکساں اہمیت کا حامل ہے لیکن کثیر المقاصد استعمال کے تحت یہ خواتین کی گروسری لسٹ کا لازمی حصہ بنتا ہے۔ کھانوں میں استعمال ہونے کے علاوہ اہل خانہ کی صحت، گھر کی صفائی اور خوبصورتی نکھارنے کے حوالے سے سرکہ (بالخصوص سیب کا سرکہ) بے پناہ افادیت کا حامل ہے، آئیے اس بارے میں جانتے ہیں ۔دنیا بھر کی خواتین کو اس وقت سب سے زیادہ خوف موٹاپے کا ہے۔ متناسب جسم اور مثالی وزن ہر خاتون کی اولین خواہش ہوتی ہے۔ سرکہ چونکہ شکم سیری(satiety) کی سطح میں اضافہ کرتاہے، لہٰذا اس کا استعمال وزن کم کرنے کی خواہش رکھنے والی خواتین کے لیے خاصا مفید ہے۔ شکم سیری درحقیقت ایک پیمانہ ہے، جس سے یہ پتہ چلتا ہے کہ انسان بھوک مٹانے کی خاطر کتنا کھانا کھاتا ہے۔ 
انٹرنیشنل سروے کے مطابق موٹاپے کا شکار 175افراد کو تین ماہ کےدوران بلا ناغہ سیب کا سرکہ پلایا گیا۔ جن افراد نے ایک چمچ سیب کا سرکہ استعمال کیا تھا، انھوں نے2.6پاؤنڈ وزن کم کیا اور جنھوں نے روزانہ 2چمچ سیب کا سرکہ استعمال کیا، ان کے وزن میں اس عرصے کے دوران 3.7پاؤنڈ کی کمی دیکھنے میں آئی۔
کیل مہاسوں اور ایکنی سے پریشان افراد کوسیب کا سرکہ استعمال کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ اینٹی فنگل اوراینٹی بیکٹیریل خصوصیات کے باعث سیب کا سرکہ جِلد کے کھلے مساموں کو بند کرنے اور اسے بیکٹیریا، آئل اور دھول سے پاک رکھنے میں مد د دیتا ہے۔ ایک پیالہ لیںاور اس میں خالص اور بغیر چھنا سیب کا سرکہ ڈالیں، پھر اس میں پانی شامل کریں ، دونوں کو اچھی طرح مکس کریں اور پھر روئی کی مدد سے اس مکسچر کو چہرے کے متاثرہ حصے پر لگائیں۔ 10منٹ لگارہنے دیں اور پھر منہ دھولیں ،دن میں تین سے چار بار یہ عمل کریں ۔سفیدسرکہ کا استعمال ہائر پگمنٹیشن کے باعث جِلد پر پڑنے والے سیاہ دھبوں سے نجات دلانے، اسے چمکدار بنانے اور قدرتی رنگت بحال کرنے میں خاصا معاون ہوتا ہے۔ اسکن پگمنٹیشن سے نجات کے لیےایک چمچ سفید سرکہ ، ایک چمچ پیاز کا عرق اور دو سے تین چمچ عرق گلاب لے کر اچھی طرح مکس کرلیں۔ 
اس محلول کو اسپرے بوتل میں بھرکر ہفتے میں ایک بار چہرے پر اسپرے کریں۔ عرق گلاب اینٹی انفلیمٹری خصوصیات کے باعث چہرے سے اضافی چکنائی ختم کرنے میں مدد دیتا ہے جبکہ سفید سرکہ اپنی کسیلی خصوصیات(Astringent properties) کے باعث چہرے سے سیاہ دھبے اور پگمنٹیشن کے اثرات زائل کرنے میں مدد دے گا۔سفید سرکہ تیزابیت کی سطح میں تبدیلیاں لاکر خشکی کو دور کرتا ہے۔ بالوںکی خشکی دور کرنے کے لیے ایک چوتھائی کپ سیب کے سرکہ کو چوتھائی کپ پانی میں ملا کر کسی اسپرے بوتل میں بھرلیں اور پھر اپنے سر پر چھڑکاؤ کریں۔ اس کے بعد اپنے سر پر تولیہ لپیٹ لیں اور پندرہ منٹ سے ایک گھنٹے تک کے لیے بیٹھ جائیں، اس کے بعد بالوں کو دھولیں۔ بہترین نتائج کے لیے ہفتے میں دو بار اس عمل کو دہرائیں۔
سیب کے سرکہ میں موجود ہائیڈروکسل خصوصیات جِلد کو مردہ خلیات سے نجات دلانے اور صحت مند و چمکتی ہوئی جِلد کے حصول میں خاصی مددگار ہیں۔ یہی نہیں، سیب کا سرکہ اینٹی ایجنگ خصوصیات کا بھی حامل ہے۔ چہرے کی جِلد سے جھریوں اور بڑھتی عمر کے اثرات کو ختم کرنے کے لیے روئی کے ذریعے سیب کا سرکہ متاثرہ حصوں پر لگائیں۔ 30منٹ تک سرکہ لگا رہنے دیں اور اس کے بعد ٹھنڈے پانی سے چہرہ دھولیں، 6ہفتوں تک یہ عمل ہفتے میں دو بار آزمائیں۔