تازہ ترین

احساس کی موت

کہانی

تاریخ    21 نومبر 2021 (00 : 01 AM)   


رحیم رہبر
تم نے مجھے زہر پلا کر مارا تھا۔۔۔۔ مگر نہیں۔۔۔ تم نے مجھے پھانسی دے کر مار ڈالا تھا۔۔۔ مگر نہیں ۔۔۔ میں دراصل دَم گُٹھنے سے مرا تھا! اُسی دن ہاں۔۔۔ ہاں بالکل اُسی دن جب میرے سائیز کا پیرہن تم کو برابر ہوا تھا ! اور اپنی خواہشات پوری کرنے کے لئے تُم نے میرے ارمانوں کا خون کیا تھا! میں نے آخری لمحات میں اپنا کلمہ خود پڑھا تھا۔ میں نے تمہیں حسرت کی نگاہوں سے دیکھا تھا۔ تم سے بچھڑنے کا غم مجھے سانپ کی طرح ڈس رہا تھا۔ ہر باپ اپنی اولاد کی خاطر اسی طرح فکر مند رہتا ہے۔ اِب برآمدے پر کون تمہارا انتظار کرے گا؟ کون تمہارے آنے کے لئے بے قرار ہوگا! کون اب تمہاری راہیں تکتا رہے گا؟ تم کس کے ساتھ اب اپنا دُکھ بانٹو گے؟
تمہارے آنسو کون پونچھے گا؟ اب تم کس سے رُوٹھو گے؟ کون تمہیں منائے گا؟ یہ سارا غم مجھے پریشان کرتا تھا! میرے لخط جگر! مجھے دیکھ کر تم اَن دیکھی کا کھیل کھیلتے تھے۔ تمہاری نادانی پر مجھے ترس آتا تھا۔۔۔ پھر تم بہت چِلّائے۔۔۔ زور سے چِلّائے۔۔۔ لوگ میرے ارد گرد جمع ہوئے۔ وہ میری موت پر تبصر کرتے تھے، جتنے منہ اتنی باتیں۔ تم صرف میری لاش کو گُھور رہے تھے۔!
تمہاری قسم مجھے تمہاری کردار نگاری اچھی لگی۔ میرے منہ سے بے اختیار، واہ! نکلا۔ اولاد ہر باپ کا غرور ہوتا ہے۔ میری دعا ہے بیٹا تم سدا سُکھی رہو۔ میری موت کے کچھ ہی دنوں بعد تم نے میرے لاکر کی تلاشی لی۔ میری بینک بیلنس (Bank Balance) معلوم کی۔ میرا بینک کھاتہ دیکھ کر تمہارے ہونٹوں پر مسکان رقصان ہوئی لیکن ایک بہترین اداکار کے ناطے تم جلدی اپنے کردار میں زم ہوئے۔۔۔ شاباش بیٹے۔۔۔۔ شاباش۔ اسی کو Craf(فن) کہتے ہیں۔ Son! I am Proud of you.(بیٹے ، مجھے تم پر فخر ہے)۔
میں تمہاری کردار نگاری کو دیکھ کر اپنی موت بھول جاتا تھا۔۔۔!
تم۔۔۔ تم میرے جگر کے ٹکڑے ہو۔ تُم بن میں ہزار بار مرتا تھا۔ اسی لئے میں تمہاری خاطر اپنی لاش کو کندھوں پر اُٹھا کر تمہارے ہمراہ چلتا تھا۔
مجھے تمہارے بچپن کا ایک واقعہ یا آگیا۔ جب میں خود کے لئے دوائی لانے بازار گیا تھا۔ دوائی نہیں لائی پر تمہاری خاطر میں وہ گُڈیا لایا، جس کی تم نے مجھے فرمائش کی تھی! تمہیں پال پوس کے بڑا کیا۔۔۔ اچھی تعلیم دی۔۔۔ خود فاقہ کشی کی لیکن تمہیں کھلایا پلایا۔۔۔
بیٹا! تمہاری قسم پہلی بار مجھے اپنی موت کا احساس تب ہوا جب تم اپنی معشوقہ کے ساتھ میرے بچھونے پر سویئے تھے۔ تمہیں اپنی معشوقہ کا لمس محسوس ہوا اور تم مسکرائے۔۔۔!!
 
���
رابطہ: آزاد کالونی پیٹھ کا انہامہ،موبائل نمبر؛9906534724