تازہ ترین

کورونا سے اموات کا سلسلہ 6روز بعد پھر شروع| ایک فوت ،148متاثر

سرینگر 66مثبت افراد کیساتھ پھر سر فہرست

تاریخ    25 ستمبر 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //وادی میں کورونا وائرس سے جاں بحق ہونے والے افراد کا سلسلہ 6دنوں تک تھمنے کے بعد جمعہ کو پھر سے شروع ہوگیا ۔ جمعہ کو ڈی آر ڈی او اسپتال میں ایک شخص فوت ہوگیا اور اسطرح فوت ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد 4420ہوگئی ہے۔ اس دوران پچھلے 24گھنٹوں کے دوران52ہزار 149ٹیسٹ کئے گئے جن میں 19مسافروں سمیت 148افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ جموں و کشمیر میں متاثرین کی مجموعی تعداد 3لاکھ 28ہزار 738ہوگئی ہے۔ مثبت قرار دئے گئے 148افراد میں جموں میں 28جبکہ کشمیر میں  120افراد کو مثبت قرار دیا گیا ہے۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے 120افراد میں سے 10بیرون ریاستوں سے سفر کرکے کشمیر پہنچے جبکہ دیگر 110افراد مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ کشمیر کے 120متاثرین میں سب سے زیادہ سرینگر میں 66، بارہمولہ میں17، بڈگام میں 8 ،پلوامہ میں 5، کپوارہ میں 6 ،اننت ناگ میں 5، بانڈی پورہ میں 2، گاندربل میں 9، کولگام میں 1 جبکہ شوپیان میں ایک کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔ کشمیر میں متاثرین کی مجموعی تعداد 2لاکھ 5ہزار 129تک پہنچ گئی ہے۔ اس دوران کشمیر میں 6 دنوں کے بعد کورونا وائر سے ڈی آر ڈی او اسپتال کھمنو میں ایک شخص کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ہے۔ کشمیر میں متوفین کی مجموعی تعداد2248ہوگئی ہے۔ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران جموں صوبے کے 5اضلاع جن میںادھمپور، کٹھوعہ،سانبہ، کشتواڑ اور پونچھ میں کسی کی رپورٹ مثبت نہیں آئی ہے جبکہ دیگر 5اضلاع میں 9مسافروں سمیت 28افراد کی رپورٹیںقرار دی گئی۔ جموں صوبے کے 28متاثرین میں جموں میں 6،راجوری میں 6،ڈوڈہ میں 10،رام بن میں 2 جبکہ ریاسی میں 4افراد کی رپورٹیں مثبت قرار دی گئی ہیں۔ جموں صوبے میں متاثرین کی مجموعی تعداد 1لاکھ 23ہزار609ہوگئی ہے۔ جموں صوبے میں مسلسل تیسرے دن بھی وائرس سے کسی کی موت نہیں ہوئی ہے اور یہاں متوفین کی مجموعی تعداد 2172بنی ہوئی ہے۔  
 
 

جامع مسجد اور درگاہ حضرتبل 

جمعہ اجتماعات منعقد نہیں ہوسکے

بلال فرقانی
 
سرینگر// تاریخی جامع مسجد اور درگاہ حضر تبل کے منبر و محراب جمعہ کو ایک مرتبہ پھر خاموش رہے۔ جامع مسجد،درگاہ حضرت بل کے علاوہ خانیار، خواجہ نقشبند صاحب میں نماز جمعہ ادا نہیں کی گئی‘‘۔ امسال صرف6اگست کو ہی جامع مسجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی کی اجازت دی گئی۔ اس کے بعدجامع مسجد کو جمعہ اجتماعات کیلئے بند رکھا گیا۔جامع مسجد سے ملی اطلاع کے مطابق وہاں کے امام خطیب کو اطلاع دی گئی کہ حکام نے کورونا وائرس کے پیش نظر جامع مسجد کو ایک بار پھر بند کر دیا ہے‘‘۔ مقامی لوگوں کے مطابق مجموعی طور پر امسال اپریل میں کووڈ لہر میں اضافے کے بعد اب تک21ہفتوں تک اسے بند رکھا گیا اور نماز جمعہ کی ادئیگی نہیں ہوئی۔
 
 

لداخ میں 10دنوں میں 5گناہ اضافہ

نیوز ڈیسک
 
لیہہ // لداخ میں پچھلے  10 دنوں کے دوران کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد میں 5گنا اضافہ ہوا ہے۔ جمعہ کو مرکزی زیر انتظام لداخ میں 21افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اور اسطرح متاثرین کی مجموعی تعداد 20ہزار771ہوگئی ہے۔ 13ستمبر کو لداخ میں 30افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں 28لیہہ اور2کرگل سے تعلق رکھتے تھے جبکہ جمعرات کو سرگرم معاملات میں  164 تک پہنچ گئی جن میں 161لیہہ اور 3کرگل سے تعلق رکھتے ہیں۔ جمعہ کو مثبت قرار دئے گئے سبھی 21افراد لیہہ سے تعلق رکھتے ہیں۔ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران لداخ میں 1620،لیہہ میں 618 جبکہ کرگل میں 979افراد کی رپورٹیں منفی قرار دی گئی ہیں۔ مرکزی زیر انتظام لداخ میں متوفین کی مجموعی تعداد 207ہوگئی ہے جن میں  149لیہہ  اور 58کرگل سے تعلق رکھتے ہیں۔
 

 

تازہ ترین