تازہ ترین

غریب کا چولہاجلے تو کیسے؟

گیس کی قیمتوں میں رواں سال7 اور پچھلے سال 11مرتبہ اضافہ، 94روپے کی سبسڈی چند ماہ میں ختم ہوگی

تاریخ    15 ستمبر 2021 (00 : 01 AM)   


اشفاق سعید
سرینگر // تیل کمپنیوںنے گھریلو گیس سلنڈوں کی قیمتوں میں رواں سال7بار اضافہ کیا اور ہر ماہ اس کی قیمتوں میں قریب 25روپے کا اضافہ ہوتا رہا۔ اس تحاشہ اضافے نے غریب عوام کی چیخیں نکال دی ہیں ۔ یکم ستمبر 2021کو اس کی قیمت بڑھا کر 1005روپے مقرر کی گئی ہے اور بلیک میں مجبور لوگوں کو 12 سے 13سو روپے میں فروخت کیا جارہا ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ یکم مارچ 2014 تک گھریلو گیس  کی قیمت 410 روپے فی سلنڈرتھی اور گذشتہ 7برسوں کے دوران اس کی قیمتوں میں 700سے800روپے کا اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ۔ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ گذشتہ سال کے دوران7بار رسوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا اور ایک بار ہی اس کی قیمت میں صرف 10روپے کی کمی دیکھنے کو ملی ۔جبکہ گذشتہ سال 11مرتبہ اس کی قیمتوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ مئی 2020میں گھریلو رسوئی گیس سلینڈر 14کلو کی قیمت 633روپے تھی اور جون 2020میں اس قیمت کو بڑھا کر 699روپے کر دیا گیا پھر جولائی اور اگست 2020کو اس کی قیمت 707روپے مقرر کی گئی اور اس کے بعد کبھی بھی اس کی قیمتوں میں کوئی کمی دیکھنے کو نہیں ملی ۔ اس سال رسوئی گیس کی قیمت میں قریب 7بار اضافہ کیا گیا اور ایک بار اس کی قیمت میں کمی لائی گئی ۔ذرائع کے مطابق اس سال فروری میں اس کی قیمت میں 50روپے کا اضافہ کیا گیا۔پھر 25فروری کو اس کی قیمت میں مزید 25روپے کا اضافہ کیا گیا اور قیمت بڑھا کر 910روپے مقرر کی گئی ۔ذرائع  نے بتایا کہ یکم مارچ 2021کو اس میں صرف 10روپے کی کمی کی گئی اور قیمت 925 رہی ۔لیکن یکم جولائی 2021کو اس میں 25روپے کا اضافہ کیا گیا او ر اس کی قیمت 950مقرر کی گئی ۔گذشتہ ماہ یعنی 15اگست کو پھر اس میں 25روپے کا اضافہ کیا گیا ،اور قیمت 975روپے مقرر کی گئی اب یکم ستمبرکو اس میں مزید 25روپے کا اضافہ کر کے عام صارفین کی چیخیں نکال دی گئی ہیں۔پچھلے سال اگست سے لیکر امسال اگست تک 350روپے کا اضافہ کردیا گیا ہے اور پیٹرولم کمپنیوں کے عہدیداروں کے مطابق اس میں متواتر طور پر مزید اضافہ ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ فی الوقت سرکار کی جانب سے94 روپے سبسڈی دی جارہی ہے اور کچھ ماہ کے دوران سبسڈی کو ختم کیا جارہا ہے۔