تازہ ترین

نالہ کاجی ناگ کرناہ میں غرقآبی

۔ 10سالہ بچے کی لاش تیسرے روز بھی برآمد نہیں ہوئی

تاریخ    24 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


نمائندہ عظمیٰ
کرناہ //کرناہ میں نالہ کاجی ناگ میں بہہ کر غرقآب ہوئے کمسن بچے کی لاش تیسرے روز بھی نہیں مل سکی ہے جبکہ مقامی لوگوںکے ساتھ ساتھ پولیس اور ایس ڈی آر ایف کے اہلکاروں نے پورے نالے میں سرچ آپریشن جاری رکھا ہے ۔خدشہ کیا جارہا ہے کہ لاش سرحد کے اُس پار پہنچ چکی ہے اور مقامی آبادی نے پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ لاش کی تلاش کرنے میں ان کی مدد کی جائے۔   عیدالاضحی کے دن کرناہ کے اری ڈل چترکوٹ کا رہنے والا 10سالہ سید کامران ولد شبیر حسین نالہ قاضی ناگ کو عبور کرنے کے دوران  ڈوب گیا ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ جب بچہ نالہ میں ڈوب گیا تب بارش ہو رہی تھی اور پانی کا بہائو بھی کافی تیز تھا جس کے بعد بچے کی تلاش میں مقامی لوگوں کو کافی مشکلات پیش آئیں۔ عید کے دوسرے ہی روز بچے کو نالہ سے تلاش کرنے کیلئے ایس ڈی آر ایف کے اہلکاروں کی ایک ٹیم کرناہ پہنچی جنہوں نے پولیس اور مقامی لوگوں کے ساتھ مل کر بچے کی تلاش شروع کی لیکن لاش تیسرے روز بھی بازیاب نہیں ہو سکی ۔مقامی لوگوں کو خدشہ ہے کہ بچے کی لاش پاکستان کے زیر انتظام کشمیر چلی گئی ہے کیونکہ وہاں سے کنٹرول لائن صرف تین کلو میٹر کی دوری پر ہے اور نالہ قاضی ناگ ٹیٹوال سے کشن گنگا کے ساتھ مل جاتا ہے ۔اس دوران معلوم ہوا ہے کہ حکام نے بچے کے ڈوب جانے کی اطلاع ہاٹ لائن کے ذریعے سرحد کے اس پار بھی دی ہے اور وہاں کی فوج سے کہا گیا ہے کہ اگر بچہ مل جاتا ہے تو اس کو ٹیٹوال کراسنگ پوئنٹ کے زریعے یہاں روانہ کیا جائے ۔اس دوران معلوم ہوا ہے کہ بچے کے گھر میں ماحول سوگوار ہے اور پورے کرناہ میں معصوم کی موت سے ماحول سوگوار ہوا ہے ۔