نمائش گاہ کی رونق میں اضافہ

فنکاروں نے سامعین کو محظوظ کیا

تاریخ    19 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//رواں ماہ کی 10 تاریخ سے شروع ہوئے دستکاری میلے میں دن بہ دِن لوگوں کا رَش بڑھ رہا ہے۔ اتوار کی شام لوگوں کی بھاری تعداد نے نمائش گاہ کا رخ کیا۔ محکمہ اطلاعات کے فنکاروں بشمول اطہر بل پوری، غلام محمد انزولی ، محی الدین کھانڈے کے علاوہ صوفی مسٹکس گروپ کے نوجوان گلوکار وسیم خان نے صوفی کلام گا کر حاضرین پر وجد طاری کیا جبکہ گل جاوید نے روایتی کشمیری نغمے پیش کئے۔کشمیر ہاٹ میں کشمیری دستکاروں کے فن پارے جن میں قالین، پشمینہ و کانی شال، پیپر ماشی، چین سٹچ، مردو خواتین کے ملبوسات، ولووکر اور دیگر مصنوعات خریداروں کی توجہ کا مرکز بنی ہوئی ہیں۔ اس کے علاوہ نمائش گاہ کے اندر کھانے پینے کے مختلف سٹال، بچوں کی تفریح و کھیل کود کیلئے مختلف جھولے بھی لگائے گئے ہیں۔ڈائریکٹر ہینڈی کرافٹس و ہینڈلومز محمود احمد شال نے کہا کہ گزشتہ دو برسوں کے دوران کشمیری کاریگروں کی حالت بُری طرح متاثر ہوئی تھی اور نمائش کا مقصد یہ ہے کہ حالات میں بہتری کے ساتھ انہیں بھی استحکام دیا جائے تاکہ وہ اَپنے ہنر کو جاری رکھیں۔محکمہ اطلاعات کے شعبہ تمدن کی طرف سے روزانہ ہر شام موسیقی کے پروگراموں کا اہتمام کیا جاتا ہے جس میں محکمہ کے فنکاروں کے ساتھ ساتھ کشمیر کے نوجوان گلوکار بشمول فوک، قوالی، صوفی اور روایتی کشمیری نغمے پیش کرتے ہیں۔کلچرل آفیسر توحید میر نے کہا کہ حالات میں سدھار کے ساتھ تفریحی و تمدنی پروگرام کشمیر ہاٹ سے شروع ہوکر وادی کی مختلف جگہوں پر منعقد کئے جائیں گے اور نوجوان فنکاروں کو پلیٹ فارم مہیا کیا جائے گا۔پروگرام کوآرڈی نیٹر اور محکمہ اطلاعات کے اے ای سی او سید شکیل شان کے مطابق کلچرل وِنگ کی جانب سے کشمیر کے نوجوان و ابھرتے گلوکاروں، شاعروں، اداکاروں کو مختلف مقامات پر سٹیج پر لاکر اَپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے کا موقع فراہم کیا جائے گا تاکہ ان کی حوصلہ اَفزائی کے ساتھ ساتھ عوام کی تفریح کا بھی اہتمام ہو۔واضح رہے نمائش عید کے بعد بھی جاری رہے گی۔
 

تازہ ترین