تازہ ترین

مزید خبرں

تاریخ    17 جولائی 2021 (00 : 01 AM)   


باقی سب ٹھیک ہے مہنگائی مار گئی 

ادھمپور میں کانگریس کارکنان کا احتجاج

ادھم پور//ملک میں بڑھتی مہنگائی کے خلاف کانگریس کارکنان نے جمعہ کو ادھمپور میں احتجاج کیا اور مرکزی حکومت کے حلاف زور دار نعرے بازی کی۔احتجاج میں شامل لوگوں نے بتایا اگر اس حوالے سے کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا تو وہ اگلے احتجاج میںریل کو روک لیں گے ۔ جموں و کشمیر کے ضلع ادھمپور میں ملک میں بڑھتی مہنگائی کے خلاف کانگریس کے سینئر رہنما سمت مگوترا کی قیادت میں کانگریس کارکنان نے مرکزی حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔اس دوران کانگریس کارکنان نے ادھمپور قومی شاہراہ کو بند کرنے کی کوشش کی، لیکن موقع پر پہنچی انتطامیہ نے کانگریس کارکنان کو قومی شاہراہ پر جانے سے روک دیا، پولیس اور کانگریس کارکنان کے درمیان کچھ دیر دھکا مکی بھی ہوئی۔ویڈیواس ضمن میں سمت مگوترا نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ دو ماہ سے مرکزی حکومت کی جانب سے پٹرول، ڈیزل کے علاوہ اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ کیا جارہا ہے، جس سے مہنگائی آسمان چھورہی ہے، عام لوگوں کو اپنا گھر چلانا مشکل ہوگیا ہے۔ملک میں حکومت کے خلاف مسلسل احتجاج جاری ہے، لیکن حکومت کے کانوں میں جوں تک نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ آج ہم مہنگائی کے خلاف قومی شاہراہ بند کرنے جارہے تھے، تاہم پولیس نے ہمیں زبردستی روک لیا، لیکن میں حکومت کو بتا دینا چاہتا ہوں کہ مہنگائی میں جب تک کمی نہیں آتی، ہم اپنے کارکنوں کے ساتھ مرکزی حکومت کے خلاف مظاہرے کرتے رہیں گے۔
 

سلک پروڈکٹس محکمے کے ڈائریکٹر منظور قادری نے مارکیٹ دورہ کیا

کسانوں کو بہتر فائدہ ملنے کی امید ،ایک سال بعد ادھم پورہ میں کوکون بازار کو سجایا گیا 

ادھمپور //جموں کشمیر کے ضلع ادھم پور میں کوکون مارکیٹ چل رہی ہے۔ سلک پروڈکٹس ڈپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر منظور قادری نے آج مارکیٹ کا دورہ کیا۔کورونا وائرس کی وجہ سے گزشتہ سال یہاں یہ مارکٹ نہیں لگا تھا ۔سلک پروڈکٹس ڈپارٹمنٹ کے ڈائریکٹرمنظورقادری نےکوکون مارکیٹ کا دورہ کیالیکن اب صورتحال بہتر ہو رہی ہے۔ اس بار مارکیٹ بہت اچھی چل رہی ہے اور منافع بھی بہتر ہورہا ہے۔ضلع ادھم پور کا کوکون پورے جموں و کشمیر میں بہترین سمجھا جاتا ہے اور اس بار کسانوں کی ریشم کی پیداوار بھی اچھی ہوئی ہے۔اس بار ریشم کے شتکار مارکیٹ میں اچھی قیمت حاصل کر رہے ہیں۔اس بار جموں و کشمیر کے علاوہ کرناٹک اور مغربی بنگال کے تاجر بھی اس مارکیٹ میں آئے ہیں۔ڈائریکٹر نے کہا کہ جو مقامی کوکون فیکٹری میں کام کر رہے ہیں۔ حکومت کی جانب سے ان لوگوں کو مالی مدد بھی فراہم کی جائے گی۔ کیوں کہ کورونا کے دوران ان کا کام بھی متاثر ہوا تھا۔
 
 

سانبہ ، کٹھوعہ میں ڈرون اڑانوںکے بعد سیکورٹی مزید متحرک

 سید امجد شاہ
جموں//جموں خطے کے دو اضلاع میں کل رات کو ’مشکوک ڈرون‘ دیکھنے کے بعد سیکورٹی فورسز کو چوکس رکھا گیا ہے۔ایک دفاعی ذرائع نے بتایا ، "مقامی لوگوں نے پولیس اور دیگر ایجنسیوں کو اطلاع دی ہے کہ سانبہ کے نند پور، اور کٹھوعہ میں ہیرا نگر کے اوپر مشکوک ڈرونز اڑتے ہوئے پائے گئے ہیں"۔دفاعی ذرائع نے بتایا کہ انہوں نے ڈرونوں کا استعمال کرکے جموں کے ٹیکنیکل ایرپورٹ میں ہونے والے دھماکوں کے بعد فورسز کو پہلے ہی چوکس کردیا ہے۔ یہ گذشتہ رات بھی مشکوک سرگرمی تھی ، جس کی زیادہ تر نگران مقامی افراد نے بھی اطلاع دی تھی۔ایک سینئر پولیس افسر نے تصدیق کی کہ "گذشتہ رات 8 بجکر 15 منٹ کے لگ بھگ سانبہ کے نند پور علاقے پر ایک ڈرون نظر آیا اور فوج نے بھی اس پر 8 راو¿نڈ فائر کیے تھے۔ بعد میں ، یہ غائب ہو گیا، سفید روشنی ٹمٹمانے کی وجہ سے ڈرون کو دیکھا جاسکتا تھا“۔اس افسر نے مزیدکہا "سرحدی علاقوں اور دیہاتوں کو الرٹ کردیا گیا ہے اور و لیج ڈیفنس کمیٹیاں، پولیس اور دیگر ایجنسیوں کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہیں۔" انہوں نے کہا ، نند پور بین الاقوامی سرحد سے 8 سے 9 کلومیٹر دور ہے۔اسی طرح ایس سی کٹھوعہ آر سی کوتوال نے بتایا کہ"گذشتہ رات آسمان پر مقامی لوگوں نے ایک روشنی دیکھی۔ یہ ڈرون کی مشکوک سرگرمی ہوسکتی ہے“۔ایک مقامی ذرائع نے بتایا کہ ڈرون کی اس مشکوک سرگرمی کو وارڈ نمبر 12 میں جموں - پٹھان کوٹ شاہراہ کے قریب ایک مقامی نے اس وقت دیکھا جب ڈرون دیالہ چک اور پھر سرکار پلی ، ہیرانگر کی طرف اڑ رہا تھا تاہم پولیس نے اس کی تصدیق نہیں کی۔ادھر ، جموں پولیس کے ایک سینئر عہدیدار نے ضلع جموں کے دو علاقوں پر ڈرون طیارے کے اڑنے کے امکان کو مسترد کردیا ہے۔پولیس افسر نے کہا ، "جب سے ہمارے پاس کالیں آتی ہیں میں اس کی تصدیق نہیں کرسکتا ، اور ہمیں پہلے معلومات کی تصدیق کرنی ہوگی۔"
 
 

نجی تعلیمی اداروں کو سرکاری سکولوں میں ضم کرنے کی مانگ

 جموں//جموں مسلم فرنٹ (جے ایم ایف) نے آج نجی تعلیمی ادارے پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ مفت تعلیم کی آئینی گارنٹی کا مذاق اڑاتے ہوئے اپنے اداروں کو والدین سے پیسے اینٹھنے کا ذریعہ بنارہے ہیں۔جموں مسلم فرنٹ قیادت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں رہنماو¿ں نے کہا ہے کہ انہوں نے ہمیشہ نجی اسکولوں کو قومیانے اور حکومتی سکولوں کے ساتھ انضمام کے لئے وکالت کی ہے خاص طور پر اساتذہ کی کمی کے پیش نظر اسکول جو ہر قسم کے طلبا کو تعلیم فراہم کرسکتے ہیں۔ جے ایم ایف رہنماو¿ں نے کہا کہ حکومت نے ایسے تعلیمی اداروں کی اجازت دے کر مفت تعلیم کے لئے نہ صرف آئینی ضمانت کا مذاق اڑیاگیا ہے بلکہ گورنمنٹ اسکول پر بہت سارے فنڈز ضائع کردیئے ہیں۔جے ایم ایف کی قیادت کا مزید مطالبہ ہے کہ دونوں میں سے کسی ایک کو بند کیا جائے اور تجویز پیش کی کہ معیاری تعلیم کی فراہمی کے لئے سرکاری اسکولوں پر کڑی نگرانی کی جانی چاہئے۔اس سلسلے میں ، انہوں نے ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی سے ایک متحرک اپیل کی ہے کہ وہ تعلیم کی کاروباری حیثیت کو ختم کریں اور حکومت کی حوصلہ افزائی کریں۔ 
 
 

چندرکورٹ میں بارشوں کے پانی کاتیز بہاﺅ

 ایک قبرستان سمیت2مکانات کو جزوی نقصان

رام بن//جموں و کشمیر کے ضلع رام بن میں شدید بارشوں اور بادل پھٹنے سے رہائشی اور زیر تعمیر مکان کے علاوہ مقامی قبرستان کو بھی جزوی نقصان پہنچا۔ پہاڑی ضلع رام بن میں شدید بارش کے سبب چندر کوٹ علاقے میں ایک قبرستان سمیت2مکانات کو جزوی نقصان پہنچا ہے۔مقامی باشندوں کے مطابق تیز بارشوں اور بادل پھٹنے کے سبب پانی کے تیز بہاو¿ سے ایک رہائشی مکان کی دیوار اور ایک زیر تعمیر مکان کو نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے بتایا کہ دوران شب بادل پھٹنے کے سبب پانی کے تیز بہاو¿ میں زیر تعمیر مکان کا تعمیراتی مواد ڈھ گیا۔ اس کے علاوہ مقامی قبرستان کو بھی نقصان پہنچا ہے۔متاثرہ افراد نے حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی انتظامی افسر نے علاقے کا دورہ نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ مقامی سرپنچ محض دورہ کر کے چلے گئے۔انہوں نے اعلیٰ حکام سے متاثرین کی امداد اور بازآبادکاری کی اپیل کی ہے۔
 
 

رسوئی گیس کے اخراج سے آتشزدگی کا المناک واقعہ

دو کمسن بچے جھلس کر لقمہ اجل ،والدہ سمیت2شدید زخمی

 ایم ایم پرویز
رام بن//جمعہ کی صبح رام بن کے میترا علاقے میں ایل پی جی سلنڈر پھٹنے کے نتیجہ میں آگ لگنے سے دو بچے جاں بحق ہوگئے جبکہ ان کی والدہ سمیت دو شدید زخمی ہوئے ہیں۔پولیس نے بتایاکہ رام بن کے گڑھی گاﺅں کے رہائشی سی آر پی ایف اہلکار راجیش سنگھ کٹوچ ،جو فی الوقت میترا میںکرایہ پر رہائش پذیر ہے ،کے کرایہ کے مکان میں رسوئی گیس سلینڈر پھٹ جانے کے نتیجہ میں آگ نمودار ہوئی ۔جس نے مکان کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ گھر کے مقامی افراد نے موقع پر پہنچ کر تین بچوں اور ان کی والدہ کو زخمی حالت میں پایا۔انہیں فوری طور پر ڈسٹرکٹ ہسپتال رام بن پہنچایا گیا جہاں طبی امداد فراہم کرنے کے بعد ان سب کو خصوصی علاج کے لئے گورنمنٹ میڈیکل کالج اورہسپتال جموں منتقل کردیا گیا۔پولیس نے زخمیوں کی شناخت 25 سالہ ستیہ دیوی اور اس کے تین بچوںساحل کٹوچ (5)،جڑواں بھائی سوربھ کٹوچ اور گورو کٹوچ (3سال)کے بطور ہوئی ہے ۔ ایس ایچ او تھانہ رام بن پردیپ نے بتایا کہ گورو ادھم پور کے قریب ایک ایمبولینس میں دم توڑ گیا جبکہ ساحل گورنمنٹ میڈیکل کالج اورہسپتال جموں میں علاج کے دوران زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا جبکہ ان کی والدہ ستیہ اور نابالغ بھائی جی ایم سی جموں میں زیر علاج ہیں۔آگ بجھانے کے لئے مقامی لوگوں نے فائر ٹینڈر طلب کیے۔محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی رام بن کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ ایل پی جی گیس کے اخراج کے باعث کچن میں آگ لگی۔مقامی ہمسایوں نے خاتون ستیہ کو اپنے بچوں کا ناشتہ تیار کرنے کے لئے کمرے میں داخل ہونے کی اطلاع دی۔ اس نے گیس جلائی جس سے پہلے رسا ہوا تھا اور آگ لگ گئی جس کے نتیجے میں کمرے میں بھی آگ لگ گئی تھی ستیہ اور اس کے تین بچوں کو جلانے کے شدید زخم آئے تھے ۔بعد میں دو بچے دم توڑ گئے۔
 
 

پٹرولیم ڈیلروںکی پیٹرول میں ایتھنول ملاوٹ کی مخالفت 

جموں// آل جموں و کشمیر پیٹرولیم ڈیلرس ایسوسی ایشن نے جموںوکشمیر یوٹی میںپیٹرول میں ایتھنول کو ملانے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے لوگوں کو تکلیف پہنچ رہی ہے۔پریس کانفرنس کرتے ہوئے آل جموں و کشمیر پٹرولیم ڈیلرس ایسوسی ایشن کے صدر عنان شرما نے کہا کہ "پٹرول میں 10 فیصد ایتھنول ملایا جارہا ہے جس کی وجہ سے گاڑیوں میں خرابیاں پیدا ہوسکتی ہیں"۔شرما نے کہا "انڈین آئل ، پی پی سی ، اور ایچ پی سی جیسی تیل کمپنیوں نے لداخ یونین ٹریٹری کو چھوڑ کر جموں و کشمیر میں پٹرول میں 10 فیصد ایتھنول ملا دینا شروع کر دیا ہے"۔انہوں نے کہا کہ اگر ایتھنول ایک ماہ یا اس سے زیادہ عرصے تک گاڑی میں رہتا ہے تو یہ پانی میں بدل جاتا ہے جس کی وجہ سے گاڑی میں خرابی پیدا ہوسکتی ہے۔انہوںنے کہا”ہر پٹرول پمپ میں ہم 9 جولائی 2021 ءسے جموں و کشمیرمیں ایتھنول ملا ہوا پیٹرول حاصل کر رہے ہیں اور متنبہ کیا ہے کہ اگر پانی گاڑی کے ایندھن کے ٹینک میں آجاتا ہے اور پیٹرول میں مل جاتا ہے جس میں پہلے سے ایتھنول موجود ہوتا ہے تو یہ خود بخود پانی میں تبدیل ہوجائے گا اور گاڑی خراب ہوجائے گی“۔ انہوں نے یہ کہتے ہوئے کہا کہ لوگوں کو اس مسئلے سے آگاہ کرنا ضروری ہے کیونکہ پیٹرول ڈیلر ایتھنول ملا نہیں رہے ہیں۔ان کا کہناتھا”لوگوں کو آگاہ کرنا ضروری تھا کیونکہ انہیں لوگوں کی طرف سے شکایات موصول ہو رہی تھیں ۔ہمیں سری نگر میں بہت سی شکایات موصول ہوئی ہیں کیونکہ ان کی گاڑیوں میں پریشانی پیدا ہوئی ہے“۔
 

تازہ ترین