کوروناوائرس | متاثرین کی مجموعی تعداد3,00,000 | 24گھنٹوں میں مزید 23فوت ، 1440مثبت

تاریخ    7 جون 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر //جموں و کشمیر میں پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران مزید 17سفر کرنے والوں سمیت مزید 1440 افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں اور اسطرح جموں و کشمیر میں متاثرین کی تعداد 300000 کا ہندسہ پار کرکے 300490ہوگئی ہے جن میں 1لاکھ 69 ہزار 530 افراد پچھلے 2ماہ میں متاثر ہوئے ہیں ۔ ان میں جموں میں 61ہزار948جبکہ کشمیر میں 1لاکھ  7ہزار582افراد متاثر ہوئے ہیںجبکہ اس سے قبل  9 مارچ 2020سے 31مارچ 2021 تک جموں و کشمیر میں وائرس سے صرف 1لاکھ 30ہزار960افراد متاثر ہوئے تھے جن میں 52 ہزار 941 جموں جبکہ 78ہزار19کشمیر میں متاثر ہوئے ہیں۔ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران جموں و کشمیر میں مزید 23اموات ہوئی ہیں اور متوفین کی مجموعی تعداد 4074ہوگئی جن میں 2080افراد پچھلے 2ماہ کے دوران فوت ہوئے ہیں ۔ پچھلے 2ماہ کے دوران فوت ہونے والے افراد میں 1245جموں جبکہ 835کشمیر میں فوت ہوئے ہیں۔ اس سے قبل 12ماہ کے دوران جموں و کشمیر میں صرف 1994افراد فوت ہوئے تھے جن میں 736جموں جبکہ 1258 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران 50 ہزار 253 تشخیصی ٹیسٹ کئے گئے جن میں 1440 افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں 338جموں جبکہ 1102 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ کشمیر سے تعلق رکھنے والے 1102افراد میں 8سفر کرکے کشمیر پہنچے ہیں جبکہ 1094افراد مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ نئے 1102معاملات میں سرینگر میں 264، بارہمولہ میں136، بڈگام میں145، پلوامہ میں123، کپوارہ میں103، اننت ناگ میں86، بانڈی پورہ میں40، گاندربل میں45، کولگام میں140اور شوپیان میں20فراد متاثر ہوئے ہیں۔کشمیر صوبے میں متاثرین کی مجموعی تعداد185601ہوگئی ہے۔ اس دوران کشمیر صوبے میں مزید 15افراد وائرس سے فوت ہوئے ہیں۔کشمیر میں فوت ہونے والے 15افراد میں 2صدر اسپتال ، 2پی ایچ سی کاکہ پورہ پلوامہ،2سکمز صورہ ، ایک پی ایچ سی لتر، ایک ضلع اسپتال بانڈی پورہ، ایک ایس ڈی ایچ چاڈورہ، ایک ایس ڈی ایچ خانصاحب، ایک رعناواری اسپتال، ایک سی ایچ سی ٹنگڈار، ایک سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ اور ایک جی ایم سی اننت ناگ میں فوت ہوا ہے۔ مرنے والوں میں کھور پٹن کا 70سالہ، خواجہ باغ بارہمولہ کی 40سالہ خاتون،دونی واری بڈگام کی 40سالہ خاتون،خانصاحب کا 62سالہ شخص،چاڈورہ کا 80سالہ معمر شخص،نوسی پورہ شوپیان کا 65سالہ شخص،کھاورپورہ کپوارہ کی  45سالہ خاتون، ملہ پورہ عید گاہ کی 48سالہ خاتون،کائوڈارہ کی 71سالہ خاتون،ککر ناگ کی45سالہ خاتون،شانگس کی 50سالہ خاتون،گنڈ پورہ بانڈی پورہ  کا 70سالہ معمر شخص،کاکہ پورہ پلوامہ کا 76سالہ شخص،آری باغ پلوامہ کی 65سالہ خاتون اور لتر پلوامہ کی 80سالہ معمر خاتون شامل ہے۔ متوفین کی مجموعی تعداد 2093ہوگئی ہے۔ جموں میںاتوارکو338فراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں جن میں سے9بیرون ریاستوں سے جموں پہنچے جبکہ329فراد مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے کے338متاثرین میں جموں میں70، ادھمپور میں13، راجوری میں46، ڈوڈہ میں47، کٹھوعہ میں21، سانبہ میں16 کشتواڑ میں10، پونچھ میں70 رام بن میں27اور ریاسی میں18افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے میں متاثرین کی مجموعی تعداد114889ہوگئی ہے۔ اس دوران مزید8فراد جموں میں فوت ہوئے ہیں۔ مرنے والوں میں جی ایم سی جموں میں1،ایس ایس ایچ جموں میں 1،جی ایم سی راجوری میں 2،سی ایچ سی ادھمپور میں 1،اے کے جی اسپتال کٹھوعہ میں ایک، امن دیپ اسپتال جموں میں1، جبکہ ایک شخص گھر میں فوت ہوا ہے۔ جموں میں متوفین کی مجموعی تعداد1981ہوگئی ہے۔  
 
 
 
 
ملک میں ایک لاکھ 14ہزار کا اضافہ،2677ہلاکتیں
یو این آئی
نئی دہلی //ملک میں کورونا انفیکشن کی کی رفتار مسلسل سست پڑنے اور اس وبا کو شکست دینے والوں میں لگاتار اضافے سے سرگرم معاملوں کی شرح 5.13 فیصد رہ گئی ہے، وہیں صحتیاب ہونے والوںکی شرح بڑھ کر 93.67 فیصد ہوگئی ہے۔اس دوران سنیچر کو 33لاکھ 53ہزار 539افراد کو کورونا سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے گئے۔ ملک میں اب تک 23کروڑ 13 لاکھ 22 ہزار 417 افراد کوٹیکے لگائے جا چکے ہیں۔ہفتہ کی صبح وزارت صحت کی طرف سے جاری اعداد و شمار کے مطابق ، پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران 1,14,460 نئے کیسز کی آمد کے ساتھ ، متاثرہ افراد کی تعداد دو کروڑ 88 لاکھ 9ہزار 339ہوگئی۔ اس دوران ایک لاکھ 98ہزار 232مریض صحت مند بھی ہوئے ہیں ، جس سے کے ساتھ اب تک دو کروڑ 69لاکھ 84 ہزار 781 افراد ملک میں اس وبا کو شکست دے چکے ہیں۔ فعال معاملات 77ہزار 449کم ہو کر 14لاکھ 77ہزار 779 ہوگئے ہیں اور ان کی شرح 5.13 فیصد پر آگئی ہے۔گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 2677 مریض اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے اور اس بیماری کی وجہ سے مرنے والوں کی کل تعداد تین لاکھ 46ہزار 759ہوگئی ہے ، جس کی وجہ سے اموات کی شرح جزوی اضافے کے ساتھ 1.20 فیصد ہوگئی ہے۔
 

تازہ ترین